ناندیڑ کے محمد مسرور احمد سوداگر بادیدہ نم سپرد لحد

0 2

ناندیڑ: 19ستمبر ( نامہ نگار) ریٹائرڈ ڈی ایم ( ایری گیشن ڈپارٹمنٹ) جناب محمد مسرور احمد سوداگر ( رحمت نگر) ناندیڑ کو سینکڑوں سوگواروں کی موجودگی میں آج شب ساڑھے نو بجے مسجد قریشیہ سے متصل قبرستان میں بادیدہ¿ نم سپرد لحد کردیا گیا۔ اس موقع پر عزیز و اقارب کے علاوہ شے گاﺅں، احمدپور، لاتور، اردھاپور، تامسہ، عمرکھیڑ، قندہار و دیگر مقامات سے آئے ہوئے رشتہ داروں کے ساتھ ہی دوست احباب کی ایک کثیر تعداد موجود تھی۔ واضح رہے گزشتہ 6 ماہ کی علالت کے بعد بعمر 74 برس جناب محمد مسرور احمد سوداگر نے چہارشنبہ کی دوپہر دیڑھ بجے آخری سانس لی۔ وہ انتہائی خلیق، ملنسار، صوم و صلوٰة کے پابند تھے۔ انہیں قرآنی علوم سے کافی دلچسپی تھی۔ مسلم مرد و خواتین اور دوشیزاﺅں کی ایک بڑی تعداد ان سے درسِ قرآن کا فیض حاصل کرچکی ہیں۔ ان سے استفادہ کرنے والوں کا حلقہ کافی وسیع رہا ہے۔ بہترین دینی صلاحیتوں کے حامل جناب محمد مسرور احمد سوداگر کے انتقال سے سوداگر فیملی ایک بزرگ شخصیت کے سایہ سے محروم ہوگئی ہے۔ وہ محمد اسمٰعیل عرف شارق کے والد بزرگوار و روزنامہ تہلکہ ٹائمز کے مدیر اعلیٰ محمد طاہر سوداگر کے بڑے بھائی تھے۔ پسماندگان میں بیوہ کے علاوہ پانچ فرزندان، دو دختران، پوتے، پوتیاں، نواسے، نواسیاں شامل ہیں۔ چہارشنبہ کو بعد نماز عشاءرحمت نگر سے محمد مسرور احمد سوداگر کے جلوس جنازہ کا آغاز ہوا۔ یہ جلوس مسجد قریشیہ پہنچا جہاں نماز جنازہ ادا کی گئی اور بادیدہ¿ نم ان کے جسد خاکی کو سپرد لحد کردیا گیا۔ اللہ تعالیٰ سے دعا ہے کہ وہ مرحوم کی کروٹ کروٹ مغفرت فرمائے۔ اعلیٰ علین میں جگہ عطا فرمائے۔ اور پسماندگان کو صبر جمیل عطا فرمائے، آمین۔