زنا جرم کے دائرے سے باہر’جج کے ذہنی چیک اپ کی ضرورت: کانگریس لیڈر 

0 10

کننور ،30ستمبر(پی ایس آئی)زنا کو جرم کے دائرے سے باہر کرنے کے سپریم کورٹ کے فیصلے پر سینئر کانگریس لیڈر کے. سدھاکرن نے متنازعہ تبصرہ کیا ہے. سدھاکرن نے زنا کو جرم ٹھہرانے والے آئی پی سی کے سیکشن 497 کو ہٹانے کے فیصلے پر کہا کہ جج کی دماغی صحت کی جانچ کئے جانے کی ضرورت ہے. کننور میں ایک جلسے سے خطاب کرتے ہوئے کہا، ‘ذہنی طور پر بیما جج کو اپنے فیصلے پر دوبارہ سوچنا چاہیے. یہ ملک کے خاندانی اقدار کے خلاف ہے. ‘ عدالت کی توہین کرنے والا یہ بیان انہوں نے ایسے وقت میں دیا، جب کانگریس کے تمام کارکن بھی وہاں موجود تھے. اب تک کانگریس لیڈر کے خلاف کوئی کیس نہیں درج کیا گیا ہے. صوبہ کیرالہ کانگریس کے صدر سدھاکرن نے کہا کہ یہ خاندانی اقدار کے خلاف ہے. بھارت ہمیشہ سے اپنے خاندان اور ثقافتی اقدار پر فخر کرنے والا ملک رہا ہے. فیصلے کا ذکر کرتے ہوئے سدھاکرن نے کہا کہ اس جج نے یہ دکھایا ہے کہ انہیں بھارت کے خاندانی اقدار کے بارے میں کوئی معلومات نہیں ہے. انہوں نے کہا کہ جج کو اپنے فیصلے پر ایک بار پھر سوچنا چاہئے. کیرل کانگریس صدر نے کہا، ‘شوہر بیوی کے لئے ذمہ دار نہیں ہے، بیوی شوہر کے جوابدہ نہیں ہے. جج کے ساتھ کچھ غلط ہے؟ کیا وہ ذہنی طور پر مستحکم ہیں؟ ہم ہندوستانی لوگ اپنے خاندانی اقدار کو دنیا کے سامنے فخر کے ساتھ پیش کرتے رہے ہیں. ہمارے خاندان قیمت ہمارے لئے فخر کا موضوع ہیں. اب شوہر کسی مختلف راستے پر جائے گا اور بیوی کسی اور راستے میں. جج کا دماغی چیک اپ کئے جانے کی ضرورت ہے. ‘