اورنگ آباد (شہاب مہدی کبیر) شہر اورنگ آباد کے معروف سینئر صحافی رفیع الدین رفیق،حرکت قلب بند ہونے کے باعث رحلت کرگئے ،ان کی عمر 52 سال تھی۔ابتدا میں انھیں اورنگ آباد کے سہارا اسپتال میں شریک کیا گیا تھا بعد میں گھاٹی ہسپتال منتقل کیا گیا دوران علاج جمعرات کی شام 6:30 بجے رفیع الدین رفیق نے داعی اجل کو لبیک کہا۔ان کا شمار

ریاست مہاراشٹر کے نامور صحافیوں میں ہوتا ہے وہ پچھلے 35 سالوں سے شعبہ صحافت سے وابستہ تھے۔وہ روزنامھ اردو ٹائمر کی نمائندگی کے بعد روزنامھ ممبئی اردو نیوز سے وابستہ ہو گئے۔ رفیع الدین رفیق نے اردو ٹائمز ممبئی سے ہی اپنی عملی صحافت کا آغاز کیا اور ساری زندگی ایک ہی ادارے سے وابستہ رہے لیکن جب اردو ٹائمز منقسم ہوا تو رفیع الدین رفیق ممبئی اردو نیوز سے وابستہ ہو گئے۔مرحوم رفیع الدین رفیق نے صحافت کی دنیا میں انمٹ نقوش

چھوڑے ہیں،وہ بے باک صحافی، بہترین مقرر اور تجربہ کار صحافی تھے۔تحقیقی خبروں کو ترجیح دیتے تھے۔مرحوم رفیع الدین رفیق کا شمار خلد آباد کے حضرت خواجہ زین الدین شیرازی کے خادمین میں ہوتا ہے اس لحاظ سے انھیں بزرگان دین اور ان کی تعلیمات سے قلبی لگاؤ تھا۔اولیاء اللہ کے مشن اور پیام انسانیت کو عام کرنے، وہ ساری زندگی پورے اخلاص کے ساتھ کار بند رہے ۔وہ ملنسار ،ہمدرد اور مخلص انسان تھے نئے صحافیوں کی رہنمائی کرتے،صحافت کے ساتھ تعلیمی میدان میں بھی وہ عملی طور پر

سرگرم تھے۔ ادارہ یونیک فاونڈیشن کے تحت ہزاروں غریب اور ضرورت مند طلبا کے اعلیٰ تعلیم میں داخلے کے لیے وہ ہمیشہ کوشاں رہے،آج ان کی خدمات سے مستفید ہزاروں طلباء برسر روزگار ہیں۔مرحوم کی نماز جنازہ خلد آباد کے درگاه حضرت برہان الدین غریب اولیاء میں ادا کی گئی اور تد فین رات دیر گئے درگاہ حضرت زین الدین شیرازی سے متصل قبرستان میں

عمل میں آئی۔پسماندگان میں بیوہ کے علاوہ تین فرزند اور ایک دختر شامل ہیں۔اس وقت انک خیرخواہ، صحافی ،رشتےدار موجود تھے۔دعا ہے کہ اللہ تعالی مرحوم کی مغفرت فرمائے اور متعلقین کو صبر جمیل عطا کرے ۔ادارہ اُن کے لواحقین و خاندان کے غم میں برابر کا شریک ہے ۔