اسلام ایک مکمل نظامِ حیات، قیامت تک کےلئے ہیں اصولِ قرآن: سید محمد اشرف

0 6

دیواس:30 ستمبر(راست) آل انڈیا علماءو مشائخ بورڈ کے بانی و صدراور ورلڈ صوفی فورم کے چیئرمین حضرت سید محمد اشرف کچھوچھوی نے مدھیہ پردیش کے دیواس میں ایک جلسے سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ”اسلام ایک مکمل نظامِ حیات ہے، قیامت تک کے لیے ہیں اصول قرآن ”انہوں نے یہ بات سپریم کورٹ آف انڈیا کی طرف سے تعزیرات ہند کی دفعہ 497 کو ختم کئے جانے کے تعلق سے کہی۔انہوں نے کہا کہ اس قانون کے رہنے یا نہ رہنے کا مسلمانوں پر کوئی فرق نہیں پڑتا کیونکہ قرآن میں زنا حرام ہے اور تاقیامت حرام ہی رہے گا، اس میں کوئی تبدیلی نہیں کی جا سکتی لٰہذا اس قانون کے ہونے یا نہ ہونے سے قرآن پر ایمان رکھنے والوں پر کوئی فرق نہیں پڑتا انہیں ہر اس کام سے دور رہنا ہے جسے اللہ اور اس کے رسول نے حرام قرار دیا۔حضرت کچھوچھوی نے یہ بھی کہا کہ اسلام ایک مکمل نظام حیات ہے اس میں ہر چیز کو بہت تفصیل سے بیان کیا گیا ہے اور ہر برے کام کے لئے سزائیں پہلے سے ہی طے ہےں۔لیکن ہم جہاں رہتے ہیں اس ملک کے ہر اس قانون کو ماننا ہماری ذمہ داری ہے جس سے ہمارے دین میں فرق نہ پڑتا ہو۔حضرت نے کہا کہ ہندوستان کی اپنی ایک تہذیب ہے، اس پر اس طرح کے قوانین کے ختم ہونے کا اچھا اثر نہیں پڑے گا کیونکہ معاشرے میں اگر قانون کا خوف ختم ہوگا تو لوگ گناہ کی طرف آسانی سے اپنی طرف متوجہ ہوں گے، حکومت اور عدالت کو اس جانب بھی غور کرنا ہونا چاہئے۔مسلمان قرآن پر ایمان رکھنے والے اور عمل کرنے والے ہیں تو انہیں بخوبی سمجھ لینا چاہئے کہ دنیا کے بنائے قانون وقت کے ساتھ بدلتے رہتے ہیں لیکن اللہ کا قانون نہیںبدل سکتا لہٰذا بری باتوں سے دور رہیے اور نیک عمل رکھئے اسی میں ہماری اور آپ کی نجات ہے۔