اساتذہ حقوق کے ساتھ فرائض کو بھی مدنظر رکھیں

0 18

آئیٹا لاتور کے اساتذہ کے تربیتی اجلاس سے مہمانان خصوصی کا خطاب

IMG-20180924-WA0019

لاتور(محمدمسلم کبیر)آئیٹا تنظیم جدید ٹکنالاجی,عصری تعلیمی وسائل کے ساتھ اساتذہ کو فرض شناس اور معمار بنانے کے لئے کوشاں ہے.نصابی اور غیرنصابی مطالعے اور تجربات کے ذریعےطلباء میں تعلیمی جستجو پیدا کرنے کا کام اساتذہ ہی کرسکتے ہیں اسلئے اساتذہ کو چاہيے کہ اپنے مضامین کی خوب تیاری کرکے طلباء میں تعلیم سے رغبت کو برقرار رکھیں. یہ بات آئیٹا مہاراشٹر کے صدر جناب عبدالرحیم (جالنہ) نے لاتور میں کہی.آئیٹا ضلع لاتور کے زیر اہتمام ضلع کے اردو اداروں میں جماعت پنجم تا دہم کے لئے جغرافیہ اور سائینس کی درس و تدریس کرنے والے اساتذہ کو حسب نصاب جدید ٹکنالاجی اور موثر و دلچسپ تدریس کے تجربات کو 24/ ستمبر 2018 بروز پیرحضرت سورت شاہ اردو ہائی اسکول پاپناس روڑ نزد بس اسٹانڈ نمبر 2 لاتور میں ماہرین مضمون یکروزہ تربیت کا انعقاد عمل میں آیا.اس موقع پر آئیٹا مہاراشٹر کے سیکریٹری جناب محمد شریف (ممبئی) نے بھی اپنے خیالات کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ اساتذہ کی دیگر  تنظیمیں اپنے حقوق کے لئے اپنی آواز بلند کرتی ہیں تاہم آئیٹا اساتذہ کو ایک صحیح معمار قوم اور ماہر و تجربہ کار اساتذہ بنانے اور اپنے فرائض پر عمل آوری کے لئے قائم کی گئی ہے.
ورکشاپ اور تربیت کے پہلے مرحلے میں صبح 10تا 1:30 بجے تک افتتاحی تقریب میں حضرت سورت شاہ اردو ایجوکیشن سوسائٹی کے معتمد ایڈوکیٹ فاروق شیخ اور صدرمدرس سید عنایت علی سر نے بھی اپنے خیالات کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ اساتذہ کی تنظیموں میں آئیٹا واحد تنظیم ہے جس کی جانب سے اساتذہ کےےلئے ورکشاپ اور ماہرین تعلیم کے توسط سے تربیت کا نظم کیا ہے جو قابل تعریف ہے.  افتتاحی تقریب میں مولانا انعام الحق قاسمی نے تلاوت کلام پاک پیش کیا اور جناب یافعی احمد نے نعت شریف سنائی.  افتتاحیہ اجلاس کے فوری بعد  ماہر مضمون جناب ریاض الخالق صاحب جغرافیہ مضمون کی درس و تدریس و نصاب کے متعلق رہنمائی کی اور دوسرے مرحلے  2:30 تا 5/ بجے تک  ماہر مضمون جناب محمد عتیق شیخ عبدل صاحب سائنس اور ٹکنالاجی مضمون کی درس و تدریس اور نصاب پر رہنمائی کی.اس تربیتی کیمپ میں 100 سے زائد متعلقہ مضامین کے اساتذہ نے شرکت کی.ھدیہ تشکر جناب سید مصطفی علی  نے پیش کیا.آئیٹا لاتور کے جناب انعام بن منظور,سید عبدالواجد, شیخ غوث االدین, سید مصطفی علی, فیروز سر اور ان کے تمام رفقائے کار نے تربیتی کیمپ کو کامیاب بنایا.