شردپوار کے گھرحملہ ایک منصوبہ بند سازش کا حصہ، سیکوریٹی میں اضافہ کیا جائے: مہیش تپاسے

یہ حملہ ریاستی حکومت کو غیرمستحکم کرنے کے لئے کیا گیا ہے تو این سی پی کے کارکنان خاموش نہیں رہیں گے

ممبئی: کیا پوار صاحب کے گھرپر ہوا حملہ ریاستی کو غیر مستحکم کرنے کی کوشش کے طور پر کیا گیا تھا؟کیونکہ یہ حملہ ایک منصوبہ بند سازش کا حصہ ہے۔اس لئے پوارصاحب کی سیکوریٹی میں اضافہ کیا جائے۔ یہ مطالبہ آج یہاں این سی پی کے ریاستی ترجمان مہیش تپاسے نے کیا ہے۔

این سی پی کے دفتر میں پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے مہیش تپاسے نے کہا کہ ہمارے قومی سربراہ کے گھر پر ہونے والے حملے کا این سی پی کے کارکنان نے سخت نوٹس لیا ہے۔ اگر یہ حملہ سیاست سے آلودہ اور ریاست کو غیرمستحکم کرنے کے طورپر کیاگیا ہے تو این سی پی کے کارکنان خاموش نہیں رہیں گے۔انہوں نے کہا کہ پوار صاحب کی رہائش گاہ پر یہ جوبزدلانہ حملہ ہواہے، اس کے ملزمین کو گرفتار کیا گیا ہے لیکن اصل مسئلہ پوار صاحب کے گھر پر حملہ کے ذریعے سیاسی عدم استحکام پیدا کرنے کی کوشش ہے۔پوار صاحب نے کل ہی اپنا موقف واضح کردیا تھا۔انہوں نے ایس ٹی ملازمین کے ساتھ اپنے تعلقات کی بھی وضاحت کی ہے۔لیکن آج جو لوگ ایس ٹی ملازمین کی قیادت کررہے ہیں وہی ان کے اندر زہر بونے کی کوشش کررہے ہیں۔

تپاسے نے کہا کہ اگر کوئی ہم پر پتھر پھینکتا ہے تو ہم مہاتماگاندھی کی تعلیمات کے مطابق ستیہ گرہ کا راستہ اختیار کرنے کی بات ریاستی صدرجینت پاٹل نے کہی تھی۔ اسی کے تحت آج ریاست بھر میں این سی پی کے کارکنان نے مہاتماگاندھی کے مجسمے کے پاس سیاہ پٹیاں باندھ کر پرامن احتجاج کیا ہے۔ مہیش تپاسے نے کہا کہ اس حملے کا مقصد ریاست کو غیر مستحکم کرنا تھا۔ آزاد میدان میں ایس ٹی کارکنوں نے ایک دوسرے کا استقبال کیا۔ مٹھائیاں تقسیم کرکے خوشی کا اظہار کیا۔عدالتی فیصلے کا بھی استقبال کیا۔ اس لئے یہ سوال پیدا ہوتا ہے کہ پھر بھلاوہ کیوں پتھر اٹھائیں گے؟تپاسے نے اطلاع دی کہ بارش اور تیز ہواؤں کی وجہ سے پوارصاحب کا آج کا ستاراکادورہ منسوخ کر دیا گیا ہے۔لیکن کل وہ ناگپور کے دورے پرجائیں گے۔

انہوں نے کہا کہ بی جے پی کے انیل بونڈے متنازعہ بیانات دے رہے ہیں۔ انیل بونڈے مسلسل لوگوں کو بھڑکا رہے ہیں۔ انہوں نے کل کے واقعہ پربیان دیا تھاجس کی وجہ سے شک ہوتا ہے کہ کیا انل بونڈے کو کل کے حملے کا قبل ازوقت علم تھا؟اس کی جانچ کی جانی چاہئے۔انہوں نے کہا کہ ریاست میں سیاسی انتشار پیدا کرنے کی کوشش کی جارہی ہے۔ لیکن وزارت داخلہ اس پر نظر رکھے ہوئے ہے۔ ہمیں مہاراشٹر کو محفوظ اورپرامن رکھنا ہے۔ مہیش تاپسے نے ہاتھ جوڑ کر اشتعال انگیز تقریریں کرکے مہاراشٹر کو غیر مستحکم نہ کرنے کی درخواست کی۔تپاسے نے کہا کہ این سی پی کے منشور میں محکمہ ایس ٹی کے انضمام کی کوئی بات نہیں کی گی تھی، البتہ ایس ٹی کی جدیدکاری کی بات ضرور کی گئی تھی۔پڈلکرکو ٹھیک سے مراٹھی نہیں پڑھ پارہے ہیں اس لئے انہیں ہم انہیں دوبارہ این سی پی کا منشور روانہ کررہے ہیں۔ اس پریس کانفرنس میں ریاستی ترجمان مہیش چوان اور او بی سی سیل کے نائب صدر راج راجا پورکرموجود تھے۔