کانگریس کارکنان لوگوں کی زیادہ سے زیادہ مدد کریں: ایچ کے پاٹل

ریاست کے تمام اضلاع میں کانگریس کوویڈ امدادی مراکزکا قیام: نانا پٹولے

ممبئی:مرکزی حکومت کی غلط پالیسیوں اوراڑیل پن کی وجہ سے ملک میں کرونا بحران نے نہایت سنگین صورت اختیار کرلی ہے۔اسپتالوں میں جگہ نہ ملنے، آکسیجن وریمڈیسیور انجکشن قلت اور دیگر طبی سہولیات کے فقدان کی وجہ سے بڑی تعداد میں لوگوں کی جانیں جارہی ہیں۔ مرکزی حکومت کورونا بحران سے نمٹنے میں مکمل طور پر ناکام ہوچکی ہے اور ملک میں ایک ہنگامی صورتحال پیدا ہوچکی ہے۔کورونا پر قابو پانے کے لیے ویکسینیشن کے علاوہ کوئی دوسرا متبادل نہیں ہے، مگر مرکزی حکومت نے سب کے مفت ویکسینیشن کی ذمہ داری سے ہاتھ اٹھالیا ہے۔ لیکن ریاستی حکومت کو سب کو مفت ویکسین فراہم کرنا چاہیے۔ نیز کورونا بحران کے اس دورمیں کانگریس کارکنوں کو زیادہ سے زیادہ لوگوں کی مدد کرنی چاہئے۔یہ اپیل آج یہاں مہاراشٹر پردیش کانگریس کمیٹی انچارج ایچ کے پاٹل نے کی ہے۔

مہاراشٹرا پردیش کانگریس کمیٹی کے صدر نانا پٹولے کی صدارت اور مہاراشٹر کانگریس کے انچارج ایچ کے پاٹل و وزیر برائے محصول بالاصاحب تھورات کی موجودگی میں مہاراشٹر کانگریس کمیٹی کے تمام ورکنگ صدور، ممبئی کانگریس کے صدر اور آل انڈیا کانگریس کمیٹی کے ورکنگ صدور کی ایک آن لائن میٹنگ ہوئی۔ اس میٹنگ میں امداد وبازآبادکاری کے وزیر وجے وڈیٹی وار، میڈیکل ایجوکیشن کے وزیر امیت دیش مکھ، آل انڈیا کانگریس کمیٹی کے سکریٹری اور مہاراشٹر کے ڈپٹی انچارج وامشی چند ریڈی، سمپت کمار، بی ایم سندپ، آشیش دووا، سونل پٹیل، ریاستی کانگریس کے کارگزار صدر شیواجی راؤ موگھے، نسیم خان، چندرکانت ہنڈورے، بسوراج پاٹل، ایم ایل اے پرینیتی شندے، ایم ایل اے کنال پاٹل، ممبئی کانگریس کے صدر بھائی جگتاپ، وکارگزار صدر چرن سنگھ سپرا، ڈاکٹر سنجئے لاکھے وغیرہ موجود تھے۔

اس موقع پر ایچ کے پاٹل نے مہاراشٹر پردیش کانگریس کمیٹی کی ہیلپ لائن اور کورونا ریلیف اینڈ سپورٹ سنٹر کے ذریعہ شروع کئے گئے امدادی کاموں اور کانگریس پارٹی کے ذریعہ ریاست بھر میں شروع ہونے والے بلڈڈونیشن کیمپوں کا جائزہ لیا۔ اس مہم کے تحت ضلع لاتور میں 2500 بوتل خون جمع کیا گیا، جس کے لیے ایچ کے پاٹل نے لاتور کے نگراں وزیر امت دیشمکھ اور لاتور کے کانگریس عہدیداروں کو خصوصی طور پر مبارکباد پیش کی۔ اس موقع پر خطاب کرتے ہوئے ایچ کے پاٹل نے کہا کہ مرکزی حکومت کی غلط پالیسیوں اور اڑیل پن کی وجہ سے ملک میں کورونا کی حالت تشویشناک ہوگئی ہے۔ کورونا کی وجہ سے ملک میں روزانہ ہزاروں افراد کی موت ہورہی ہے مگر وزیر اعظم نریندر مودی اور ان کے وزرا کے لئے عوام کی زندگیوں سے زیادہ انتخابات زیادہ اہم ہیں، لہذا وہ انتخابی مہم میں مصروف ہیں۔ انہیں لوگوں کی زندگیوں سے کوئی لینا دینا نہیں ہے۔ کانگریس کے صدرمحترمہ سونیا گاندھی اور راہل گاندھی کی اپیل کے مطابق مصیبت کے اس دور میں پارٹی کے لیڈران، عہدیداران ور کارکنان کو عوام کی بھرپورمدد کرنی چاہئے۔

اس موقع پر کانگریس کے ریاستی صدر نانا پٹولے نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ملک میں سب سے زیادہ کورونا مریض مہاراشٹر میں ہونے کے باوجود مہاراشٹرا کو اتنی مدد نہیں مل رہی ہے جتنی ملنی چاہیے۔ کانگریس کی صدرمحترمہ سونیا گاندھی اور راہل گاندھی کی ہدایت کے مطابق کانگریس پارٹی مسلسل لوگوں کی مدد کر رہی ہے۔ریاست بھر میں کانگریس کے تمام ضلعی دفاتر میں کوویڈ ہیلپ سینٹر اور ہیلپ لائن شروع کردیاگیا ہے جہاں سے ہر روز ہزاروں افراد کوہر طرح کی مدد فراہم کی جارہی ہے۔کانگریس کی لیڈیز ونگ، یوتھ کانگریس، این ایس یو آئی کے کارکنان بڑی تعداد میں لوگوں کی مدد کر رہے ہیں۔ اس مشکل حالات میں ریاستی حکومت لوگوں کی بھرپور دیکھ بھال کر رہی ہے۔ کانگریس پارٹی بھی اپنے طور پر لوگوں کی مدد میں جٹی ہوئی ہے۔

وزیر محصول بالاصاحب تھورات نے کہا کہ مرکز کی مدد کے بغیر، ریاستی حکومت پوری طاقت کے ساتھ کورونا کے خلاف جنگ لڑ رہی ہے۔ آکسیجن اور ریمیڈیسیور انجیکشن ودیگر طبی ساز وسامان کی فراہمی پر مرکز کا کنٹرول ہے، لیکن مرکزی حکومت مہاراشٹر کو مدد دینے کے معاملے میں جانبداری برت رہی ہے جس کی وجہ سے مشکلات میں اضافہ ہورہا ہے مگر ریاستی حکومت ان مشکلات پر قابو پاتے ہوئے طبی خدمات فراہم کررہی ہے۔اس موقع پر ممبئی کانگریس کے صدر ایم ایل اے بھائی جگتاپ نے ممبئی کانگریس کے ذریعہ شروع کیے گئے امدادی کاموں کے بارے میں معلومات دی جبکہ ریاستی کارگزار صدر ایم ایل اے پرینیتی شندے اور کنال پاٹل نے کانگریس پارٹی کی جانب سے ریاست بھر میں جاری لوگوں کے امدادی کاموں کے بارے میں معلومات دی۔