مہنگائی، جی ایس ٹی، بے روزگاری اور اگنی پتھ کے خلاف جمعہ کو راج بھون کاگھیراؤ

60

عوام کے سنگین مسائل کے موضوع پر مرکزی حکومت کے خلاف کانگریس کا ریاست گیر احتجاج. ریاستی کانگریس کے تمام اہم لیڈران وعہدیداران اس احتجاج میں حصہ لیں گے

ممبئی:ایک جانب جہاں مرکز ی حکومت کے آمرانہ فیصلوں کی وجہ سے مہنگائی آسمان کو چھو رہی ہے تو وہیں مودی حکومت زندگی کی ضروری اشیاء پر جی ایس ٹی لگا کر عام لوگوں کو دووقت کی روزی روٹی سے محتاج بنانے کی کوشش کررہی ہے۔ ملک میں بے روزگاری اپنے عروج پر ہے اور نوجوانوں کا مستقبل تاریک ہوچکا ہے۔ مرکزی حکومت کی غلط پالیسیوں کی وجہ سے مہنگائی، بے روزگاری اور گرتی ہوئی معیشت کا مسئلہ سنگین ہوتا جا رہا ہے۔بی جے پی کی اس آمرانہ طرزِ حکومت کے خلاف خلاف 5 اگست بروز جمعہ کو راج بھون کا گھیراؤ کرنے کے بعد جیل بھرو آندولن شروع کیا جائے گا۔یہ اعلان آج یہاں مہاراشٹرپردیش کانگریس کمیٹی کے صدرناناپٹولے نے کیا ہے۔

کانگریس کے ریاستی صدر نے کہا ہے کہ پٹرول، ڈیزل، ایل پی جی گیس، سی این جی، پی این جی کی قیمتیں دن بہ دن بڑھ رہی ہیں۔ جہاں لوگ پہلے ہی مہنگائی سے جوجھ رہے ہیں، وہیں مرکزی حکومت نے اب دودھ، دہی، پنیر، آٹا، تیل، گھی سمیت ضروری اشیاء پربھی جی ایس ٹی نافذ کر دیا ہے۔یہی نہیں بلکہ مودی حکومت نے اسکولی بچوں کو بھی جی ایس ٹی سے مستثنیٰ نہیں رکھا ہے۔ اسکول میں بچوں کے استعمال والی اشیاء کی سپلائی پر بھی جی ایس ٹی لگادیا گیا ہے۔ اس کے علاوہ ہسپتال میں مریضوں کو علاج پر بھی جی ایس ٹی ادا کرنا پڑے گا۔ نانا پٹولے نے کہا کہ بے روزگاری 45 سال کی بلند ترین سطح پر پہنچ گئی ہے۔ 2014 سے 2022 تک مختلف محکموں میں ملازمتوں کے لیے 22 کروڑ درخواستیں موصول ہوئیں لیکن صرف 7 لاکھ امیدواروں کو ہی نوکریاں دی گئیں۔ مرکزی حکومت نے خود لوک سبھا میں یہ جانکاری دی ہے۔ ایسی سنگین صورتحال میں اب بے روزگار نوجوانوں کے لیے’اگنی پتھ‘ نام کی اسکیم شروع کی گئی ہے۔ اس کے تحت وہ فوج میں صرف 4 سال خدمات انجام دینے کے بعد ریٹائر ہو جائیں گے۔ یہ ملک کے نوجوانوں کے مستقبل کے ساتھ کھلواڑ ہے۔ نوجوان اس اسکیم کی مخالفت کر رہے ہیں اور کانگریس ان کے ساتھ مضبوطی سے کھڑی ہے۔ کانگریس کا مطالبہ ہے کہ مرکزی حکومت فوری طور پر اس اسکیم کو واپس لے۔

نانا پٹولے نے کہا کہ ودربھ اور مراٹھواڑہ کے کسانوں اور عام لوگوں کو بھاری بارش سے بہت زیادہ نقصان ہوا ہے۔ ان متاثرین کو فوری ریلیف دیا جائے اور ریاست میں قحط سالی کا اعلان کیا جائے۔ انہوں نے مہاراشٹر کے گورنر بھگت سنگھ کوشیاری کے ذریعہ ممبئی اور مہاراشٹر کی توہین کا معاملہ بھی اٹھایا۔ پٹولے نے کہا کہ اس سے قبل گورنر، چھترپتی شیواجی مہاراج، مہاتما جیوتی با پھلے، ساوتری بائی پھلے کے بارے میں بات کرتے ہوئے کئی بار ہماری ریاست کی عظیم شخصیات کی توہین کر چکے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ کوشیاری نے گورنر کے عہدے کے وقار کو داغدار کیا ہے اور ان کی تقریریں ہمیشہ بی جے پی اور آر ایس ایس کی تعلیمات کی عکاسی کرتی ہیں۔

کانگریس کے ریاستی صدر نانا پٹولے کی قیادت میں جمعہ کو صبح 11 بجے ممبئی کے ہینگنگ گارڈن سے راج بھون تک مارچ نکالا جائے گا، اس کے بعد جیل بھرو آندولن ہوگا۔ اس مارچ میں ریاستی کانگریس کے اہم لیڈران، ایم ایل ایز، ایم پیز، عہدیداران اور کارکنان بڑی تعداد میں شرکت کریں گے۔ اس کے ساتھ ہی ریاست کے تمام ضلعی دفاتر کے سامنے بھی کانگریس کے لیڈران وکارکنان مرکزی حکومت کے خلاف آواز اٹھائیں گے۔