MPCC Urdu News 21 July 22

13

مودی حکومت کی آمریت کے خلاف آرپار کی لڑائی: ناناپٹولے

ملک کو درپیش سنگین مسائل سے توجہ ہٹانے کے لیے کانگریس کو نشانہ بنانے کی مودی حکومت کی کوشش: تھورات

ممبئی وناگپور میں ای ڈی کے دفاتر پر کانگریس کا مورچہ

سونیاگاندھی کے خلاف ظالمانہ کارروائی کی ریاست بھر میں کانگریس کی جانب سے مذمت

ممبئی:کانگریس صدر سونیا گاندھی کے خلاف ای ڈی کی تفتیش مرکز کی مودی حکومت کے اشارے پر کی جارہی ہے۔ 2015 میں مودی حکومت نے نیشنل ہیرالڈ کیس کو بند کر دیا کیونکہ اس میں کوئی صداقت نہیں تھی، لیکن ای ڈی کے ذریعے گاندھی خاندان کوہراساں کیا جا رہا ہے، کیونکہ کانگریس پارٹی کی سرکردہ رہنما سونیا گاندھی اور راہول گاندھی مہنگائی اور بیروزگاری جیسے اہم مسائل پر مسلسل مرکزی حکومت سے جواب طلب کررہے تھے۔ مہاراشٹر پردیش کانگریس کمیٹی کے صدر نانا پٹولے نے خبردارکرتے ہوئے کہا ہے کہ کانگریس پارٹی اس آمریت کے سامنے ہرگز نہیں جھکے گی اور اس کے خلاف آر پار کی طویل لڑائی لڑے گی۔

مرکزی حکومت کی جابرانہ پالیسیوں کے خلاف کانگریس کے ذریعے جمعرات کو ریاستی صدر نانا پٹولے، ممبئی کانگریس صدر بھائی جگتاپ اور سابق وزیر اعلی اشوک چوہان کی قیادت میں چھترپتی شیواجی مہاراج ٹرمینس سے ای ڈی آفس تک ایک بڑا مورچہ نکالا گیا۔اس مورچے میں سابق وزیر ڈاکٹر نتن راؤت، ورشا گائیکواڑ، اسلم شیخ، ریاستی ورکنگ صدر نسیم خان، چندرکانت ہنڈورے، مہیلا پردیش کانگریس صدر سندھیا تائی سوالاکھے، خزانچی ڈاکٹر امرجیت سنگھ منہاس، ایم ایل اے امر راجورکر، راجیش راٹھوڑ، سابق ایم پی سنجے نروپم، سابق ایم ایل اے مدھو چوہان، آل انڈیا کانگریس کمیٹی کے سکریٹری آشیش دعا، چیف ترجمان اتل لونڈھے، ریاستی جنرل سکریٹری پرمود مورے، دیوانند پوار، راجیش ورما، راجن بھوسلے، ڈاکٹر سید ذیشان احمد،جوجو تھامس، ممبئی کانگریس کے ورکنگ صدر چرنجیت سنگھ سپرا، ممبئی یوتھ کانگریس کے صدر ذیشان صدیقی، ترجمان سریش چندر راج ہنس سمیت فرنٹل و سیل کے عہدیداران اور کارکنان بڑی تعداد میں شرکت ہوئے۔

اس موقع پر میڈیا سے بات کرتے ہوئے نانا پٹولے نے کہا کہ مرکزی حکومت کے خلاف لوگوں میں شدید ناراضگی ہے۔ عوام مودی سرکار سے تنگ آچکے ہیں۔ مرکزی حکومت ای ڈی کے ذریعے اپوزیشن کو ہراساں کرنے کا کام کر رہی ہے۔ نیشنل ہیرالڈ اخبار نے تحریک آزادی میں انگریز حکومت کے خلاف تحریک کو آواز دی تھی لیکن جن کا تحریک آزادی سے کوئی تعلق نہیں وہ آج ملک بیچ کر ملک چلا رہے ہیں۔

ممبئی کانگریس کے صدر بھائی جگتاپ نے کہا کہ مہنگائی نے عام لوگوں کا جینا مشکل کر دیا ہے۔ بے روزگاری مسلسل بڑھ رہی ہے۔ ایسا لگتا ہے کہ پورے ملک کوایک کمپنی کو بیچ دیا گیا ہے۔کانگریس کی صدر سونیا گاندھی اور راہول گاندھی کانگریس پارٹی کی جانب سے مودی حکومت سے جواب مانگ رہے ہیں، لیکن ان کی آواز کو دبانے کے لیے کارروائی کی جارہی ہے۔ مودی حکومت اپنی ناکامیوں کو چھپانے اور عوام کی توجہ ہٹانے کے لیے مرکزی تفتیشی ایجنسی کے ذریعے کانگریس کو ڈرانے کی کوشش کر رہی ہے لیکن کانگریس اس آمرانہ رویہ کے سامنے ہرگزنہیں جھکے گی۔

ناسک میں میڈیا سے بات کرتے ہوئے سابق وزیرمحصول بالاصاحب تھورات نے کہا کہ ملک میں مہنگائی میں زبردست اضافہ ہوا ہے۔ مودی حکومت نے اناج، دودھ، دہی، پنیر، نمک اور آٹے پر جی ایس ٹی لگا کر عام لوگوں کا جینا مشکل کر دیا ہے۔ بے روزگاری نہایت تیزرفتاری سے بڑھ رہی ہے۔ معیشت بربادہو چکی ہے۔ چونکہ مودی حکومت کے پاس اس کا کوئی جواب نہیں ہے، اس لیے ملک کے سلگتے مسئلے سے لوگوں کی توجہ ہٹانے کے لیے جان بوجھ کر کانگریس کو نشانہ بنانے کی کوشش کی جا رہی ہے۔

پونے میں سابق وزیر اعلیٰ پرتھوی راج چوہان کی قیادت میں سابق وزیر ستیج پاٹل، وشواجیت کدم، پرنیتی شندے، ریاستی نائب صدر موہن جوشی اور مغربی مہاراشٹر کے تمام ضلعی صدور اور کارکنوں نے احتجاج میں حصہ لیا۔ سابق وزیر سنیل کیدار نے ہزاروں کارکنوں بشمول ایم ایل اے وکاس ٹھاکرے، راجندر ملک نے ناگپور میں ای ڈی کے دفتر کے سامنے مظاہرہ کیا۔امراؤتی میں یشومتی ٹھاکور،ڈاکٹر سنیل دیشمکھ اور شمالی مہاراشٹر ڈویژن میں سابق وزیر اور لیجسلیچر پارٹی کے لیڈر بالاصاحب تھورات اور ایم ایل اے سدھیر تامبے نے ایجی ٹیشن میں حصہ لیا۔ممبئی میں احتجاج کے دوران نانا پٹولے، بھائی جگتاپ سمیت سینکڑوں کارکنوں کو پولیس نے حراست میں لیا اور بعد میں رہا کر دیا۔