ایندھن کی قیمتوں میں اضافے کے خلاف احتجاج کے دوران نسیم خان گرفتار ورہا

تھانے میں مودی حکومت کے خلاف جم کر نعرے بازی، فوری طور پر قیمتیں کم کرنے کا مطالبہ

تھانے: مرکزی حکومت کے ذریعے پٹرول، ڈیژل وگیس کی بڑھتی قیمتوں کے خلاف مہاراشٹر پردیش کانگریس کی جانب سے ریاست گیر احتجاج کے دوران تھانے میں ریاستی کانگریس کے کارگزار صدر وسابق وزیر نسیم خان کی قیادت میں زبردست احتجاج کیا گیا اور مرکزی حکومت سے ایندھن کی قیمتوں کو فوری طور پر کم کرنے کا مطالبہ کیا۔

اس موقع پرنسیم خان نے کہا کہ کانگریس کی حکومت کے دوران گزشتہ 70سالوں میں پٹرول وڈیژل کی قیمتوں کے معاملے میں عام آدمی کی سہولت کو پیشِ نظر رکھا گیا جبکہ مرکزکی مودی حکومت نے گزشتہ ۷ سالوں کے دوران قیمتوں کو آسمان پر پہنچادیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ ڈاکٹر منموہن سنگھ کی قیادت میں یوپی اے کی حکومت میں جبکہ بین الاقوامی بازار میں خام تیل کی قیمت فی بیرل100 ڈالر سے زیادہ تھی، لیکن اس کے باوجود گھریلو قیمتوں پر اس کا اثر نہیں ہونے دیا گیا تھا۔ڈاکٹر منموہن سنگھ کے پیشِ نظر ملک کے عام لوگوں کو راحت پہنچاناتھا۔آج صورت حال یہ ہے کہ بین الاقوامی بازار میں خام تیل کی قیمتوں میں 64 ڈالر فی بیرل تک کمی واقع ہوچکی ہے، اس کے باوجود ملک کی ایندھن کی قیمتیں آسمان چھورہی ہیں۔ نسیم خان نے کہا کہ مودی حکومت پٹرول وڈیژل پر 32-33روپئے کا ٹیکس لگارہی ہے جو عام آدمی کے استعمال کی روزمرہ کی اشیاء کو بری طرح متاثر کررہی ہے۔ آج صور ت حال یہ ہے کہ عام آدمی کی بنیادی ضروریات کی اشیاء کی قیمتیں بھی ایندھن کی قیمتوں میں اضافے کی وجہ سے بڑھ چکی ہیں۔ نسیم خان نے کہا کہ کورونا بحران کے دوران بیروزگاری اور معاشی مندی نے پہلے ہی لوگوں کی کمرتوڑدی ہے، اوپر سے مودی حکومت پٹرول وڈیژل پر بھاری ٹیکس لگاکر لوگوں کی زندگی کو محال بنارہی ہے۔ نسیم خان نے مطالبہ کیا کہ مودی حکومت فوری طور پر ایندھن کی بڑھتی قیمتوں کو واپس لے وگرنہ یہ احتجاج پورے ملک میں پھلتے دیر نہیں لگے گی کیونکہ یہ عام آدمی کی زندگی سے جڑا ہوا ہے معاملہ ہے۔

دریں اثناء دوران احتجاج پولیس نے نسیم خان اور دیگر لوگوں کو گرفتار بھی کیا مگر احتجاج کرنے والوں کے جوش وخروش کو دیکھتے ہوئے رہا بھی کردیا۔نسیم خان کی قیادت میں ہونے والے اس احتجاج میں تھانے ضلع کانگریس کمیٹی کے صدر وکرانت چوہان، منوج شندے، انیش قریشی، راجیش جادھو، طارق فاروقی، شلپا سوناونے سمیت ضلع کانگریس کے بیشتر سینئر لیڈران وبڑی تعداد میں کارکنان موجود تھے۔