اب اخلاق کے قاتلوں کو نوئیڈا سے الیکشن لڑانے کی تیاری

0 1

میرٹھ ، 23 ستمبر. (پی ایس آئی) اترپردیش نونرمان سینا کے صدر امت جانی نے ایک بار پھر ایک متنازعہ بیان دیا ہے. راجستھان کے راجسمد میں ایک مسلمان کو قتل کرنے کے ملزم شمبھولال رےگر کو آگرہ لوک سبھا سے اپنی پارٹی کا 2019 انتخابات لڑانے کا اعلان کرنے والے جانی نے مرکزی وزیر مہیش شرما کے سامنے دادری کے اخلاق قتل کے ملزم کو گوتمبددھنگر-خورجہ لوک سبھا سیٹ سے امیدوار بنانے کا اعلان کیا ہے. اس کے لئے پیر کو بساہڑا میں ایک پنچایت سبھا کرنے کا اعلان کیا گیا ہے، جس میں امیدوار کے اعلان کے نام کا اعلان کرنے کی بات کہی گئی ہے. وہیں مظفرنگر فسادات سے پہلے ہوئے کوال اسکینڈل مردہ سچن اور گورو کے والد کو مظفر نگر سیٹ سے ایم پی سنجیو بالیان کے خلاف الیکشن لڑنے کی تجویز دی گئی ہے. اس کے علاوہ متھرا سے خود امت جانی کو پارٹی کا امیدوار بنانے کا فیصلہ ہے. نو نرمان سینا کے صدر امت جانی نے اتوار کو اکنامک ٹائمز سے بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ پارٹی نے 2019 کے لوک سبھا انتخابات میں کئی سیٹوں پر اپنے امیدوار اتارنے کا فیصلہ کیا ہے. اس فیصلے کے لئے صرف آگرہ سے شمبھولال رےگر اور گوتم بدھنگر سے بساہڑا قتل کے کسی ملزم کو اتارنے کا فیصلہ کیا گیا ہے. جانی نے کہا کہ اس قتل کے کل 18 ملزم تھے، ان میں سے 1 کی موت ہو گئی، جبکہ باقی 17 سے پارٹی نے خود رابطہ کر بات چیت کی ہے. گوتم بدھ نگر کی سیٹ سے امیدوار کا اعلان بساہڑا کی ایک پنچایت میں پیر کو کر دیا جائے گا. ذرائع کے مطابق گوتم بدھ نگر-خورجہ سیٹ سے پارٹی نے رپےندر رانا کو امیدوار بنانے کا فیصلہ کیا ہے. انہوں نے کہا کہ مظفر نگر سیٹ سے پارٹی نے 2013 فسادات کے پہلے ہلاک سچن اور گورو کے والد رویندر ملک کو الیکشن لڑنے کی تجویز دی ہے، لیکن اب تک اس پر حتمی فیصلہ نہیں ہو سکا ہے. اس کے ساتھ ہی علی گڑھ سیٹ سے گلوکار وکاس کمار کو امیدوار بنانے کا اعلان کیا گیا ہے. متنازعہ لوگوں کو ہی امیدوار بنائے جانے کے پیچھے حکمت عملی کے بارے میں پوچھنے پر جانی نے کہا کہ ہم ملک میں ہندو حکومت چاہتے ہیں اور اس وجہ سے ہندو چہروں کو آگے کیا جارہا ہے. انہوں نے الزام لگاتے ہوئے کہا کہ بی جے پی ہندو ازم کے نام پر اقتدار میں آئی لیکن ہندووادی حکومت نہیں بنائی جا سکی. وہیں مودی رام للا کے درشن نہ کرکے مسجد کی زیارت کرنے پہنچ گئے. جانی نے کہا کہ آئندہ لوک سبھا انتخابات کے دوران ملک میں ہندو حکومت بنانے کے لئے 14 اکتوبر کو متھرا میں ہندو ریلی کا اہتمام ہو گا اور اس کے بعد نومبر میں مذہب پارلیمنٹ بھی منعقد کی جائے گی.