راہل گاندھی کی قیادت میں ’بھارت جوڑو یاترا‘ اب’جن یاترا‘ بن چکی ہے

بھارت جوڑو یاترا کا تجربہ ناقابلِ فراموش: اشوک چوہان

385

ناندیڑ: راہل گاندھی کی قیادت میں شروع ہوئی پد یاترا کو عوام کی ہر روز زبردست پذیرائی مل رہی ہے۔ یہ پد یاترا صرف کانگریس پارٹی کی نہیں ہے بلکہ ہراس شخص کی ہے جو یہ محسوس کرتا ہے کہ جمہوریت اور آئین کا تحفظ ہونا چاہئے۔ کیرل، تامل ناڈو، کرناٹک، آندھراپردیش، تلنگانہ کے بعد مہاراشٹرمیں عوام کے ذریعے اس یاترا کو ملنے والی زبردست پذیرائی سے یہ بھارت جوڑو یاترا اب عوامی یاترا بن چکی ہے۔ یہ باتیں آج یہاں مہاراشٹر پردیش کانگریس کمیٹی کے صدر ناناپٹولے نے کہی ہیں۔

ناندیڑ میں میڈیا سے بات کرتے ہوئے ناناپٹولے نے کہا کہ مہنگائی، بیروزگاری، ایندھن کی قیمتوں میں زبردست اضافہ، جی ایس ٹی اور ہماری سرحدوں کے اندر چین کی دراندازی جیسے سنگین مسائل پر مرکز کی مودی حکومت خاموشی اختیارکیے ہوئے ہے۔اس حکومت کی توجہ عوام کو درپیش مسائل کے حل پر نہیں بلکہ دیگر غیرضروری باتوں کو اچھالنے پر ہے۔ بی جے پی حکومت کی اس نااہلی پر عوام میں شدیدناراضگی ہے اور اپنی اس ناراضگی کو لوگ بھارت جوڑو یاترا میں شریک ہوکر راہل گاندھی کے سامنے ظاہر کررہے ہیں۔ اس پد یاترا سے اندازہ ہوتا ہے کہ عوام بی جے پی حکومت سے کس قدر ناراض ہیں۔عوام کی یہ شدید ناراضگی ہی اب بی جے پی حکومت کو اقتدار سے باہر کرے گی۔

بھارت جوڑو یاترا کے آغاز کے بعد سے ہی بی جے پی لیڈر تنقیدیں کر رہے ہیں، لیکن عوام اس پد یاترا کو اپنی زبردست پذیرائی کے ذریعے بی جے پی کو جواب دے رہے ہیں۔ کانگریس کو بی جے پی کی تنقیدوں کی کوئی پرواہ نہیں ہے، ان کی تنقید کا پدایاترا پر کوئی اثر نہیں ہے، اس کے برخلاف بی جے پی کی تنقیدوں کی وجہ سے لوگوں کی حمایت میں روز بروز اضافہ ہورہا ہے اور لوگ بڑی تعداد میں بھارت جوڑویاترا میں شریک ہورہے ہیں۔پارلیمنٹ کی سابق اسپیکر سمترامہاجن نے بھی راہل گاندھی کی پدیاترا کی حمایت کی ہے لیکن بی جے پی کے کچھ لوگ بھارت جوڑو یاترا کی زبردست کامیابی اور زبردست عوامی حمایت کی وجہ سے بوکھلاہٹ کے شکار ہورہے ہیں۔

اس موقع پر بات کرتے ہوئے سابق وزیر اعلیٰ اشوک چوہان نے کہا کہ ناندیڑ ضلع کانگریس کمیٹی نے ریاستی کانگریس کے ساتھ مل کر ضلع میں بھارت جوڑو یاترا کو کامیابی کے ساتھ مکمل کیا۔ ہم نے پہلے بھی کانگریس پارٹی کے لیے مختلف پروگرام منعقد کیے ہیں لیکن بھارت جوڑو یاترا کا تجربہ مختلف رہا۔ اتنی طویل یاترا اوراس کو ملنے والی بڑے پیمانے پرعوامی حمایت ہماری توقع سے کہیں زیادہ تھی۔ راہل گاندھی کی قیادت میں یہ پدیاترا مجھ سمیت بہتوں کے لیے ناقابلِ فراموش ہے۔

اس پریس کانفرنس میں کانگریس کے ریاستی صدر نانا پٹولے، سابق وزیر اعلیٰ اشوک چوہان، سابق ایم پی بھاسکر راؤ پاٹل کھتگاؤنکر، اے آئی سی سی میڈیا ڈیپارٹمنٹ کی سربراہ مہیما سنگھ، ریاستی کانگریس کے چیف ترجمان اتل لونڈھے اورریاستی سوشل میڈیا شعبے کے سربراہ وشال متیموار موجود تھے۔