• 425
    Shares

ممبئی: وقف بورڈ میں رجسٹرڈ ممبرا میں کوسہ جامع مسجد ٹرسٹ کی جگہ کو حکومت نے اضافی شرح لیز پردینے کو منظوری دیدی ہے جس سے ٹرسٹ کی آمدنی میں خاطر خواہ اضافہ ہوگا۔ یہ اطلاع آج یہاں اقلیتی امور کے وزیر نواب ملک نے دی ہے۔ انہوں نے کہا کہ اس اضافی شرح کرائے سے ٹرسٹ کو جو آمدنی ہوگی وہ مسلمانوں کے تعلیمی ترقیاتی پرگرام کو فائدہ ہوگا۔

واضح ہو کہ کوسہ جامع مسجد ٹرسٹ، ممبراضلع تھانہ کے پاس 221 گونٹھا جگہ ہے۔اس جگہ کو کرائے پر دینے کے لیے ٹرسٹ نے ٹینڈر کا عمل شروع کیا تھا۔ وقف قوانین کے مطابق کرائے پر دی جانے والی جگہ ریڈی ریکنر شرح سے کم ازکم ایک فیصد سالانہ کرایہ ملنا چاہیے۔ یہ رقم 14؍لاکھ روپئے ہوتی تھی۔ اس کے باوجود یہ جگہ کرائے پر حاصل کرنے کے لیے کھڈولی ایجوکیشن سوسائٹی نے ٹینڈر میں سب سے زیادہ کرایہ پیش کیا۔ اس لیے اس کے ٹینڈر کو قبول کرلیا گیا تھا۔ اس لین دین کو وقف بوڈر نے منظوری دیدی تھی جسے آج حکومت نے بھی منظوری دیدی ہے۔ اس کے مطابق اس کرائے کے معاہدے سے کوسہ جامع مسجد ٹرسٹ کو سالانہ 29لاکھ 11؍ہزار111؍روپئے اضافی رقم حاصل ہوگی۔ یہ وقف بورڈ کے قانون کے مطابق طئے شدہ رقم سے تقریباً دوگنی ہے۔ اس سے ٹرسٹ کو اچھی آمدنی ہوگی۔نواب ملک کے مطابق ریاستی وقف بورڈ میں رجسٹرڈ دیگر ٹرسٹ وادارے بھی اسی طرح اپنی آمدنی میں اضافہ کرسکتے ہیں اور اس اضافی آمدنی سے تعلیمی ترقی کے پروگرام چلاسکتے ہیں۔ انہوں نے کہا ہے کہ وقف بورڈ میں رجسٹرڈ اگر کسی ادارے یا ٹرسٹ کی جانب سے اس طرح کی تجویز آتی ہے تو اسے منظوری دی جائے گی۔

ورق تازہ نیوز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں  https://t.me/waraquetazaonlineاور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔