مہنگائی کم کیجئے یا پھراقتدار چھوڑدیجئے: ناناپٹولے

زندگی کومشکل بنادینے والی بی جے پی کو اقتدار میں رہنے کا حق نہیں ہے: بالاصاحب تھورات

مرکزی حکومت کی مہنگائی کے خلاف کانگریس کا بھونس کالج سے اگست کرانتی میدان تک مہامورچہ

ممبئی:مرکز میں نریندر مودی کی قیادت والی ظالم حکومت کے خلاف کانگریس مسلسل لڑ رہی ہے۔ مرکزی حکومت ہر روز مہنگائی بڑھا کر عام آدمی کے منہ سے نوالہ چھین رہی ہے۔ پٹرول، ڈیزل، گیس، خوردنی تیل ودیگر اشیائے ضروریہ کی قیمتیں عام آدمی کی پہنچ سے باہر ہو گئی ہیں اور مرکزی حکومت قیمتوں میں اضافہ کر کے عوام کو لوٹ رہی ہے۔اس مہنگائی کو روکئے وگرنہ لوٹ مارکرنے والی علی بابااور40چوروں کی بی جے پی سرکار کو اقتدار سے بے دخل کردیا جائے گا۔مرکزی حکومت کو یہ انتباہ آج یہاں مہاراشٹر پردیش کانگریس کمیٹی کے صدر نانا پٹولے نے دیا ہے۔مہنگائی سے پاک بھارت مہم کے تحت31مارچ سے 7؍اپریل تک ریاست بھر میں جاری رہنے والی اس تحریک کا اختتام ناناپٹولے کی قیادت میں بھونس کالج سے اگست کرانتی میدان تک مہامورچہ نکال کر کیا گیا۔ناناپٹولے اس موقع پر خطاب کررہے تھے۔

اگست کرانتی میدان میں کارکنوں سے خطاب کرتے ہوئے نانا پٹولے نے کہا کہ مرکز کی علی بابا 40 چوروں کی حکومت کے لیے آج کا یہ مظاہرہ ایک وارننگ ہے۔ اسی اگست کرانتی میدان سے مہاتما گاندھی نے جابر برطانوی حکومت کے خلاف’چلے جاؤ‘ کانعرہ دیا تھا جس کے بعد پورے ملک میں آگ بھڑک اٹھی تھی اور آخر کار انگریزوں کو ہندوستان چھوڑکر جانا پڑا۔آج اسی اگست کرانتی میدان سے مہنگائی کے خلاف اٹھنے والی عوام کی آوازدہلی کی حکومت کے کانوں کے پردے پھاڑے بغیر نہیں رہے گی۔ مہنگائی کم کرو وگرنہ عوام تم کو سبق سکھادے گی۔

اس ریلی سے خطاب کرتے ہوئے کانگریس لیجسلیٹیو پارٹی کے لیڈر اور وزیرمحصول بالاصاحب تھورات نے کہا کہ مرکز کی بی جے پی حکومت گزشتہ سات سالوں سے مہنگائی بڑھا تے جارہی ہے اور اب یہ اپنے عروج پر پہنچ چکی ہے۔ اقتدار میں آنے سے پہلے بی جے پی نے ضروریاتِ زندگی کو سستا کرنے کا وعدہ کیا تھا، لیکن جب سے وہ اقتدار میں آئی، اپنے وعدے کے خلاف کام کررہی ہے۔انہوں نے کہا کہ اپوزیشن میں رہتے ہوئے مہنگائی کے مسئلہ پر سڑکوں پراترنے والے بی جے پی لیڈران اب غائب ہو چکے ہیں۔ پٹرول و ڈیزل مہنگے ہونے سے دیگر تمام اشیاء مہنگی ہوجاتی ہیں، اس کے باوجود اس بارے میں بی جے پی کا ایک بھی لیڈر بات نہیں کرتا۔تھورات نے کہا کہ دہلی کی سرحدوں پر کسان سال بھر تک احتجاج کرتے رہے لیکن ان سے بھی بات کرنے کے لئے بی جے پی کے کسی لیڈرکے پاس وقت نہیں تھا۔ اس کے برخلاف بی جے پی لیڈر کے بیٹے نے کسانوں پراپنی گاڑی چڑھادی اور انہیں روند کر مارڈالا۔ انہوں نے کہا کہ مرکزی حکومت کے ذریعے مہنگائی میں اضافہ کی وجہ سے عام آدمی کا جینا مشکل ہوگیا ہے، ایسی حکومت کو اقتدار میں رہنے کا کوئی حق نہیں ہے۔اب یہ عوام ہی اس ظالم حکومت کو اقتدار سے بے دخل کئے بغیر نہیں رہے گی۔

اس احتجاجی مظاہرے میں کانگریس لیجسلیٹیو پارٹی کے لیڈر اور وزیرمحصول بالاصاحب تھورات، وزیر توانائی ڈاکٹر نتن راؤت، پردیش کانگریس کے ورکنگ صدر نسیم خان، چندرکانت ہنڈورے،ایم ایل اے کنال پاٹل، اے آئی سی سی کے سکریٹری اور نائب انچارج سمپت کمار، ریاستی نائب صدر موہن جوشی، حسین دلوائی، چارولتا ٹوکس، سبھاش کناڈے، جنرل سکریٹری اور چیف ترجمان اتل لونڈھے، ریاستی جنرل سکریٹری پرمود مورے، دیوانند پوار، راجیش شرما، مناف حکیم، ڈاکٹر سیدذیشان احمد،وشواجیت ہاپے، گجانن دیسائی، ترجمان بھرت سنگھ، نظام الدین راعین، سریش چندر راج ہنس کے ساتھ کانگرسی کے دیگر عہدیداران اور کارکنان کثیر تعداد میں شریک تھے۔اس مظاہرے میں مودی حکومت اور مہنگائی کے خلاف جم کر نعرے بازی کی گئی۔