MPCC Urdu News 30 Sep 21

3

کسانوں کی بڑے پیمانے پر مدد کے لیے ریاستی بی جے پی لیڈران مودی سے ملاقات کریں: ناناپٹولے

ریاستی حکومت سیلاب وشدید بارش سے متاثرہ کسانوں کو فوری مدد فراہم کرے

ممبئی:مراٹھواڑہ سمت ریاست کے دیگر حصوں میں کسان شدید بارشوں اور سیلاب سے بری طرح متاثر ہوئے ہیں۔ قدرتی آفات نے انہیں زبردست مشکلات میں مبتلاکردیا ہے۔ کسانوں کو اس شدید بحران سے نکالنے کے لیے ان کی بڑے پیمانے پرمددکی ضرورت ہے۔ ریاستی حکومت ان کسانوں کو فوری طور پر مدد فراہم کرے جبکہ مرکزی حکومت کی جانب سے کسانوں کی بڑے پیمانے پر مدد کے لئے ریاستی بی جے پی لیڈران مودی سے ملاقات کریں۔ یہ اپیل آج یہاں مہاراشٹر پردیش کانگریس کمیٹی کے صدر نانا پٹولے نے کی ہے۔

گاندھی بھون میں نامہ نگاروں سے بات کرتے ہوئے پٹولے نے کہا کہ مئی میں کوکن کے سواحلی علاقوں کے ساتھ گجرات میں بھی توکتے طوفان سے زبردست نقصان ہوا تھا۔ کوکن میں اس طوفان نے بہت زیادہ نقصان پہونچایا تھا۔لیکن وزیر اعظم نریندر مودی نے صرف گجرات کا دورہ کیا اورگجرات کے لوگوں کی مدد کے لیے ایک ہزار کروڑ روپے کی امداد کا اعلان بھی کیا۔ جبکہ گجرات کی پڑوس ریاست مہاراشٹر میں توکتے طوفان سے گجرات سے زیادہ نقصان ہوا تھا لیکن ملک کے وزیر اعظم نے اس کا نوٹس بھی نہیں لیا۔مہاراشٹر کے ساتھ وزیراعظم نے دوہرا رویہ اختیار کیا۔ اس کے باوجودبھی مہاراشٹر نے مرکز سے مدد طلب کی لیکن مہارشٹر کے کسانوں کی مدد کے لیے مرکزی حکومت نے ڈکار تک نہیں لیا۔ اس کے برعکس ریاستی بی جے پی لیڈران مسلسل مطالبہ کررہے ہیں کہ ریاست کے کسانوں کی فوری طور مدد کی جائے لیکن اگر یہی لیڈر ان مرکزی حکومت کے پاس جائیں اور ریاست میں کسانوں کو خاطر خواہ مدد پہنچانے کا مطالبہ کریں تو کسانوں کو بہت راحت ملے گی۔اس لئے بی جے پی لیڈران سے میری اپیل ہے کہ وہ مودی سے ملاقات کریں اور ریاست کے کسانوں کو بھرپور مدد دینے کا مطالبہ کریں۔

ممبئی کے سابق پولیس کمشنر کے بیرونِ ملک فرار ہوجانے کے خدشے پر پوچھے گئے ایک سوال کے جواب میں ناناپٹولے نے کہا کہ پرمویر سنگھ کو اگر اسی وقت گرفتار کرلیاگیا ہوتا کئی ان سلجھے سوالوں کے جواب مل سکتے تھے لیکن بدقسمتی سے ایسا نہیں کیا گیا۔ اب خبریہ آرہی ہے کہ تفتیشی ایجنسیوں کو شک ہے کہ وہ بیرونِ ملک فرارہوچکے ہیں تو سوال یہ پیداہوتا ہے کہ پرمویر سنگھ کو ملک کے باہر بھیجنے کا انتظام کیا مرکزی حکومت نے کیا ہے؟ کیا مرکزی حکومت کی مدد سے وہ بیرونِ ملک فرارہوئے ہیں؟ ان سوالوں کا جواب ملنا ضروری ہے۔