کامن مینمم پروگرام کواب لاگو کیا جائے

ریاستی کانگریس کے صدرناناپٹولے کا وزیراعلیٰ کو مکتوب

ممبرانِ اسمبلی کی ناراضگی کی خبربے بنیاد، بی جے پی نے افواہ پھیلائی ہے، مہاوکاس اگھاڑی حکومت مستحکم

ممبئی:کانگریس، این سی پی اور شیو سینا ریاست میں مہاوکاس اگھاڑی حکومت کی تشکیل کے لیے کم از کم مشترکہ پروگرام (سی ایم پی) کی بنیاد پر اکٹھے ہوئے تھے۔ مہاراشٹر پردیش کانگریس کمیٹی کے صدر نانا پٹولے نے وزیراعلیٰ ادھوٹھاکرے کو ایک مکتوب لکھ کر اس سی ایم پی کو لاگو کرنے کا مطالبہ کیا ہے۔

ناناپٹولے نے اپنے مکتوب میں کہاہے کہ اب جبکہ کورونا بحران بڑی حد تک ختم ہو چکا ہے، حکومت کوسی ایم پی کے تحت طے شدہ منصوبوں پر عمل درآمد پرزور دینا چاہئے۔ پٹولے نے کہا کہ کورونا بحران کی وجہ سے گزشتہ دو سالوں میں سی ایم پی کے نفاذ میں رکاوٹ پیدا ہوگئی تھی، لیکن اب اسے مکمل کروانا کانگریس کی اولین ترجیح ہے۔ اپنے مکتوب میں نانا پٹولے نے مزید کہا ہے کہ تینوں پارٹیاں 2019 میں حکومت بنانے کے لیے ایک ساتھ آئیں تھیں جس کا مقصد فرقہ پرست طاقتوں کو اقتدار میں آنے سے روکنا اور سماج کے تمام طبقات کی مجموعی ترقی تھا۔ آل انڈیا کانگریس کمیٹی کی صدر سونیا گاندھی نے کم سے کم مشترکہ پروگرام کے تحت حکومت کی تشکیل کو ہری جھنڈی دی تھی۔ ایسے میں مہاوکاس اگھاڑی کی حکومت اسی پروگرام کی بنیاد پر چلے گی۔

پٹولے نے کہا ہے کہ کانگریس پارٹی ریاست میں سماج کے تمام طبقات کو انصاف دلانے کے لیے پرعزم ہے۔ اس سے قبل سونیا گاندھی نے وزیر اعلیٰ کو ایک خط لکھ کر حکومت سے دلتوں، او بی سی اور اقلیتوں کی فلاح و بہبود کی اسکیموں پر کام کرنے کے لئے کہا تھا۔کورونا نے ریاستی حکومت کے لیے مشکلات کھڑی کی ہیں لیکن اس کے باوجود وزیر اعلیٰ ادھو ٹھاکرے کی قیادت میں مہاوکاس اگھاڑی حکومت نے اچھا کام کیا ہے۔ اب ریاست میں تمام کام کاج آسانی سے چل رہے ہیں اور معیشت پٹری پر ہے۔ ایسے میں اب سی ایم پی کے تحت دلت،او بی سی واقلیتی طبقے کی فلاحی اسکیموں کو جلد از جلد لاگو کیا جانا چاہیے۔

نامہ نگاروں کے سوال کا جواب دیتے ہوئے نانا پٹولے نے کہا کہ مہاوکاس اگھاڑی حکومت مستحکم ہے اور اسے کوئی خطرہ نہیں ہے۔ انہوں نے کہا کہ کانگریس کے ممبران اسمبلی کی ناراضگی کی خبروں میں کوئی صداقت نہیں ہے۔ پٹولے نے کہا کہ اگر پارٹی کے ممبرانِ اسمبلی اپنے کچھ مسائل پر کسی سینئر لیڈر سے ملاقات کرنا چاہتے ہیں تو اس میں کوئی حرج نہیں ہے۔ انہوں نے کہا کہ بی جے پی یہ افواہیں پھیلا رہی ہے کہ کانگریس ایم ایل ایز ناراض ہیں لیکن یہ باتیں بالکل بے بنیاد ہیں۔