• 425
    Shares

ریاست بھر میں مہاوکاس اگھاڑی کا بند کا زبردست کامیاب

کسانوں کے انصاف کی لڑائی میں ساتھ دینے والے عوام وبیوپاریوں کا شکریہ!

کانگریس کے لیڈران کا راج بون کے سامنے ’مون ورت‘ احتجاج، کسانوں کو انصاف ملنے تک جدوجہدجاری رکھنے کا عہد

ممبئی: اترپردیش کے لکھیم پورکھیری میں کسانوں کے قتل کی مذمت وانہیں انصاف دیئے جانے کے مطالبے کے لئے مہاوکاس اگھاڑی حکومت کی جانب سے ریاست گیر بند کی اپیل پرریاست کی عوام نے لبیک کہتے ہوئے زبردست تعاون دیا۔ ریاست بھر کے تمام اضلاع میں بند کا زبردست اثر رہا۔ کسانوں کے ساتھ انصاف کی لڑائی میں عوام کے زبردست تعاون پر ریاستی کانگریس کے صدرناناپٹولے نے شکریہ ادا کیا ہے اور اعلان کیا ہے کہ جب تک کسانوں کے ساتھ انصاف نہیں کیا جاتا اس وقت ہماری جدوجہد جاری رہے گی۔

کانگریس کے ریاستی صدرناناپٹولے کی قیادت میں کانگریس کے لیڈران نے راج بھون کے سامنے ’مون برت‘ احتجاج کیا۔ اس احتجاج میں وزیرمحصول بالاصاحب تھورات، پی ڈبلیوڈی وزیر اشوک چوہان، خواتین واطفال کے بہبود کی وزیر یشومتی ٹھاکور، وزیرماہی گیری اسلم شیخ، آل انڈیا کانگریس کمیٹی کے سکریٹری آشیش دووا، ریاستی کانگریس کے کارگزارصدر نسیم خان، نائب صدرحسین دلوائی، چارولتا ٹوکس، سابق ایم پی بھال چندرمنگیکر، ممبئی کانگریس کے صدر ایم ایل اے بھائی جگتاپ، ممبئی کانگریس کے کارگزار صدر چرن سنگھ سپرا، ایم ایل اے امین پٹیل، کانگریس کی شعبہ خواتین کی ریاستی صدر سندھیا سوالاکھے، ممبئی یوتھ کانگریس کے صدر ایم ایل اے ذیشان صدیقی، ممبئی کانگریس کے خزانچی بھوشن پاٹل، ریاستی جنرل سکریٹری وترجمان سچن ساونت، ریاستی جنرل سکریٹری دیوانند پوار، ریاستی جنرل سکریٹری راجیش شرما، بھاونا جین، جوجوتھامس، ریاستی سکریٹری راجارام دیشمکھ، ڈاکٹرسید ذیشان احمد، گنیش یادو سمیت کانگریس کے کارکنان بڑی تعداد میں موجود تھے۔ ’مون ورت‘ احتجاج کے بعد کانگریس کے وفد نے راج بھون میں میمورنڈم بھی دیا۔

اس موقع پر میڈیا سے بات کرتے ہوئے ناناپٹولے نے کہا کہ آج کا بند مکمل طور پر کامیاب ہوا ہے۔ ریاست کے تمام اضلاع میں لوگوں نے بند کی سختی سے پابندی کرتے ہوئے کسانوں کی قاتل بی جے پی کو زبردست جھٹکا دیا ہے۔ بند کی مخالفت کرتے ہوئے بی جے پی نے اپنا اصل کسان مخالف چہرہ دکھادیا ہے۔ ان کے وزیر کا بیٹا اپنی گاڑی کے نیچے کسانوں کو روند کر ماردیتا ہے اس کے باوجود وزیراعظم مودی ووزیراعلیٰ یوگی آدتیہ ناتھ کا دل نہیں پسیجا۔ اس دلدوز سانحے میں شامل لوگوں کو بچانے کے لئے بی جے پی ٹال مٹول سے کام لے رہی ہے۔ کانگریس کی جنرل سکریٹری پرینکاگاندھی وراہل گاندھی کی شروع کی گئی جدوجہد سے گھبرا کربادل نخواستہ ۶ دن بعد ملزمین کو گرفتار کیا گیا ہے۔ اترپردیش میں رام راجیہ کے نام پر ہٹلرراج چل رہا ہے اور صنعتکاروں کے مفاد کے لئے کسانوں کی بلی دی جارہی ہے۔

مہاراشٹر بند پر تنقید کرنے والی بی جے پی کی خبر لیتے ہوئے پٹولے نے کہا کہ دیوندرفڈنویس وبی جے پی کو کسانوں کے بارے میں بولنے کا ذرا بھی حق نہیں ہے۔ ان کی منافقت عوام کے سامنے آچکی ہے۔ بی جے پی کی کسان مخالف پالیسیوں کی وجہ سے ہی آج ملک کا کسان تباہ ہورہا ہے۔ مہاراشٹرمیں گزشتہ دوسالوں میں مسلسل آنے والی قدرتی آفات کی وجہ سے کسانوں کا زبردست نقصان ہوا ہے لیکن بی جے پی مہاراشٹر کے کسانوں کے ساتھ دوہرا رویہ اختیار کررہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ فڈنویس وریاست کے بی جے پی لیڈران کو اگر کسانوں سے واقعی ہمدردی ہے تو انہیں مودی سے ملاقات کرکے ریاست کے کسانوں کو مدد دلانی چاہئے۔ اس بندمیں کسانوں،کاروباریوں وعوام نے بھرپور تعاون دیتے ہوئے کسانوں کے ساتھ بھرپور طاقت کے ساتھ کھڑے ہونے کا اعلان کردیا ہے۔ بند کو کامیاب کرنے کے لئے ریاستی صدر ناناپٹولے نے مہاوکاس اگھاڑی کے لیڈران، عہدیداران وکارکنان کی جانب سے عوام کا شکریہ ادا کیا۔

nivedan.pdf

ورق تازہ نیوز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں  https://t.me/waraquetazaonlineاور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔