• 425
    Shares

مہاتماگاندھی کے نظریات نے ملک کو ہی نہیں بلکہ دنیا کو بھی ایک سمت دی ہے: ناناپٹولے

تلک بھون میں مہاتماگاندھی ولال بہادرشاستری کو ریاستی کانگریس کی جانب سے خراجِ عقیدت

ممبئی: بابائے قوم مہاتما گاندھی نے تحریک آزادی میں ملک کی تمام طبقوں و مذاہب کے لوگوں کو متحد کیا۔جدوجہد آزادی میں انہوں نے سچائی، عدم تشدد اور ستیہ گرہ کے ذریعے سبھی کو ایک مقصد کے تحت ایک پلیٹ فارم پرلائے۔ باپو کی ایک آواز پر پورا ملک لبیک کہتا تھا۔انہوں نے ناقابلِ تسخیر سمجھے جانے والے برطانوی اقتدار کو عدم تشدد کے ذریعے ملک چھوڑنے پر مجبورکردیا۔ مہاتماگاندھی کے نظریات نے ملک کو ہی نہیں بلکہ پوری دنیا کو ایک سمت دی ہے۔یہ باپوکے نظریے کی ہی طاقت ہے کہ جس نظریے کے تحت باپوکا قتل کیا گیا آج اسی نظریے کے حاملین باپو کے پیغام کو عام لوگوں تک پہنونچارہے ہیں۔ یہ باتیں آج یہاں مہاراشٹر پردیش کانگریس کمیٹی کے صدرناناپٹولے نے کہیں۔ وہ کانگریس کے دفتر تلک بھون میں مہاتماگاندھی وبھارت رتن لال بہادر شاستری کی سالگرہ کے موقع پر انہیں خراجِ عقیدت کے لئے منعقدہ پروگرام سے خطاب کررہے تھے۔

ناناپٹولے نے کہا کہ مہاتما گاندھی نے سب کو ساتھ لے کر آزادی کی جنگ لڑی اور ہندوستان کو انگریزوں کے ظالمانہ اقتدار سے آزاد کرایا۔لیکن افسوس کی بات یہ ہے کہ آزادی کی اس جدوجہد میں جن کا ذرہ برابر بھی حصہ نہیں تھا وہ آج ملک میں جمہوری نظام کو ختم کررہے ہیں۔ جس نظریے کو ماننے والوں نے مہاتماگاندھی کا قتل کیا آج وہی لوگ گاندھی جینتی کے موقع پر مختلف پروگرام کے ذریعے گاندھی کے نظریات عام لوگوں تک پہونچانے کی بات کررہے ہیں۔ اس کی وجہ یہ ہے کہ ان کے پاس بتانے کے لیے کوئی ماڈل نہیں ہے۔اس لئے وہ کبھی سردارپٹیل تو کبھی مہاتماگاندھی کا سہارالے رہے ہیں۔ لیکن ملک کی عوام ان کی مکاریوں اورمنافقت کو بہت اچھی طرح سمجھتی ہے۔ یہ لوگ مہاتماگاندھی کے کتنا ہی پیار کا ڈھونگ رچائیں ملک کی عوام ان کی اصلیت کو پہنچانتی ہے۔پٹولے نے کہا کہ باپو کے قتل کے بعدمٹھائیں تقسیم کرنے والوں کو آج مہاتماگاندھی کا ہی سہارا لینا پڑرہا ہے جو باپو کے نظریات کی پائیداری وطاقت کامظہر ہے۔ لیکن باپو کے بتائے ہوئے راستے پر چلنا ان کے بس کی بات نہیں ہے۔ سابق وزیراعظم لال بہادرشاستری نے ’جئے جوا، جئے کسان‘ کا نعرہ دیا لیکن آج بی جے پی حکومت کی غلط پالیسیوں کی وجہ سے جوانوں کو سرحد پراپنے جانوں کی قربانیاں دینی پڑرہی ہیں۔چین کی دراندازی کو روکنے میں مودی حکومت مکمل طور پر ناکام ثابت ہوچکی ہے جبکہ کسانوں کو تباہ وبرباد کرنے کا علانیہ کھیل کھیلا جارہا ہے۔

خراجِ عقیدت کے اس پروگرام میں ریاستی صدر کے علاوہ ریاستی کانگریس کے نائب صدر حسین دلوائی، جنرل سکریٹری دیوانند پوار، راجیش شرما، مناف حکیم، ڈاکٹر سید ذیشان احمد، بھاونا جین، برج کشور دت، راجارام دیشمکھ، وشوجیت ہاپے، ڈاکٹر گجانن دیسائی، پرمود مورے وغیرہ موجود تھے۔

ورق تازہ نیوز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں  https://t.me/waraquetazaonlineاور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔