ممبئی: پٹرول وڈیژل کی قیمتیں ریکارڈ اونچائی پر پہونچ چکی ہیں لیکن نریندرمودی حکومت لوگوں کو راحت دینے کی کوئی کوشش کرتی نظر نہیں آرہی ہے۔ مودی نے اقتدار کی پچ پر عوام کی جیب پر حملہ

کرتے ہوئے پٹرول کی سنچری مکمل کرلی ہے۔ اس میں عوام کی ہار ہوئی ہے اورمودی کے سرمایہ کاردوست جیت گئے ہیں۔ مودی کو عوام کی پریشانیاں اوران کا دکھ درد نظر نہیں آرہا ہے۔ اس لیے پٹرول پمپوں پر مودی کی منہ ڈھکی ہوئی تصویر کے ساتھ ہی ان کی آنکھوں پر پٹی بندھی ہوئی تصویر بھی لگائی جائے۔ یہ باتیں آج یہاں مہاراشٹرپردیش کانگریس کمیٹی کے جنرل سکریٹری وترجمان سچن ساونت نے کہی ہیں۔

انہوں نے کہا ہے کہ پٹرول، ڈیژل وکوکنگ گیس سیلنڈر کی قیمتوں میں بے تحاشہ اضافے کی وجہ سے عوام سخت دشواریوں میں ہیں اور ان کا جینا دوبھر ہورہا ہے۔ لیکن اس صورت حال میں مودی حکومت عوام کو راحت دینے کا کوئی اقدام کرنے کے بجائے اپنے ہاتھ اٹھادیے ہیں۔ مودی حکومت نے ملک میں بڑھتی ہوئی مہنگائی سے مکمل طور پر اپنی آنکھیں موند لی ہیں۔ مودی کی اس کیفیت کا عوام بھی مشاہدہ کرسکیں اس لیے ان کی آنکھوں پر پٹی بندھی ہوئی تصویر پٹرول پمپوں پر لگائی جانی چاہئے۔

ساونت نے کہا کہ پٹرول وڈیژل کے ایکسائز ڈیوٹی کے ذریعے مودی سرکار نے عوام کو لوٹتے ہوئے اگر ایک جانب تقریباً 20 لاکھ کروڑروپئے سے زائد منافع کمایا ہے تو دوسری جانب مودی نے اپنے سرمایہ داروں کے تقریباً 8.50لاکھ کروڑ روپئے رائٹ آف کردیا ہے۔ وجیے مالیا، نیرومودی جیسے بینکوں کے لٹیرے بیرونِ ممالک موج کررہے ہیں اور بینکوں میں بدعنوانی بڑھتی جارہی ہے۔ اس جانب مودی حکومت کی کوئی توجہ نہیں ہے البتہ عوام کی لوٹ کھسوٹ بڑی ایمانداری سے جاری ہے۔ ایسی صورت میں عوام کو بھی معلوم ہونا چاہیے کہ مودی جی ان کے لیے کتنے پریشان ہیں، اس کے لیے اب ان کی آنکھوں پرپٹی بندھی ہوئی تصویر بھی پٹرول پمپوں ودیگر عوامی مقامات پر لگائی جانی چاہئے۔

کیا بی جے پی میں ’سنگھ جہاد‘ شروع ہے؟: سچن ساونت

ممبئی: بی جے پی کے کچھ عہدیدار گایوں کی اسمگلنگ کرتے ہوئے پکڑے گئے ہیں تو کچھ پاکستان کی آئی ایس آئی کے ایجنٹ بھی نکلے ہیں۔ اب بی جے پی ترقی کرتے ہوئے اس سے بھی آگے نکل چکی ہے۔ اس کا ثبوت یہ ہے کہ شمال ممبئی بی جے پی کے اقلیتی سیل کا صدر خالص بنگلہ دیشی نکلا ہے۔ اس سے یہ سوال پیدا ہوتا ہے کہ کیا بی جے پی میں ’سنگھ جہاد‘ شروع ہوا ہے؟ کیا سی اے اے قانون میں بی جے پی کے لیے علاحدہ کوئی شق رکھی گئی ہے؟ اس کا جواب شمال ممبئی بی جے پی کو دینا چاہیے۔ یہ مطالبہ آج یہاں کانگریس کے ترجمان سچن ساونت نے کیا ہے۔

سچن ساونت نے کہا کہ بی جے پی کی جانب سے ممبئی میں دراندازی کرنے والے بنگلہ دیشی شہری روبیل شیخ کو عہدہ دیا جاتا ہے تو دوسری جانب سی اے اے قانون کی دھمکی بھی دی جاتی ہے۔ بی جے پی کے اس طریقہ کار سے ایسا لگتا ہے کہ اس کے لیے کوئی علاحدہ قانون ہے اور عوام کے لیے علاحدہ۔ کیا یہ بی جے پی کا ’سنگھ جہاد‘ ہے جو بی جے پی نے شروع کیا ہے؟ کیونکہ سنگھ کی تاریخ ہی اسی طرح کی ہے۔ بی جے پی کو اس کا جواب دینا چاہیے۔