• 425
    Shares

بی جے پی احتجاج کے پردے میں اپنے گناہوں کو نہیں چھپاسکتی: ناناپٹولے

مودی وفڈنویس ہی اوبی سی ریزوریشن کے قاتل ہیں، اگر ہمت ہو تو ان کے خلاف احتجاج کیجئے

ممبئی: اوبی سی کے سیاسی ریزرویشن کے مسئلے پر ریاست میں بی جے پی کی جانب سے کیا جانے والا احتجاج ایک ڈرامے کے سوا کچھ نہیں ہے۔ مرکزی حکومت کی جانب سے ذات کی بنیاد پر مردم شماری کے اعداد و شمار نہ دیئے جانے کے باوجود ریاست کی اس وقت کے وزیراعلی دیوندرفڑنویس نے سرکیولر نکال کر ضلع پریشد کے انتخابات کو ملتوی کردیئے تھے جس سے صرف مہاراشٹر ہی نہیں بلکہ پورے ملک میں اوبی سی طبقے کے سیاسی ریزرویشن کے لیے خطرہ پیداہوگیا۔احتجاج کا ڈرامہ کرکے انہیں اپنے گناہوں پر پردہ نہیں ڈال سکتے۔ اگر ہمت ہو تو وہ نریندرمودی کے خلاف احتجاج کریں۔ یہ باتیں آج یہاں مہاراشٹرپردیش کانگریس کمیٹی کے صدرناناپٹولے نے کہی ہیں۔

اوبی سی ریزرویشن کے مسئلے پر بی جے پی کے احتجاج پر سخت تنقید کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ مرکزی حکومت کے پاس ذات کی بنیاد پر مردم شماری کے اعدادوشمار موجود ہونے کے باوجود وہ ریاستوں کو یہ معلومات نہیں فراہم کررہی ہے۔ سپریم کورٹ نے بھی او بی سی ریزرویشن کی سماعت کے دوران او بی سی کا ایمریکل ڈیٹا طلب کیا تھا لیکن مرکزی حکومت نے جان بوجھ کر اسے فراہم کرنے سے گریز کیا۔ریاست میں جب دیوندرفڑنویس وزیراعلیٰ تھے تو انہوں نے مرکزی سماجی انصاف کے وزیر تھاورگہلوت سے ایک مکتوب لکھ کر اوبی سی کا ایمپریکل مانگا تھا لیکن مرکزی حکومت نے وہ ڈیٹا نہیں دیا۔ اسی بنیاد پر ہی سپریم کورٹ میں اوبی سی کاسیاسی ریزرویشن منسوخ ہوا۔ اس معاملے میں فڈنویس حکومت اتنی ہی ذمہ دار ہے جتنی مودی حکومت۔ فڈنویس نے 2017 میں ناگپور ضلع پریشد انتخابات کو ملتوی کرنے کے لیے سرکیولر جاری کیا۔ بعد ازاں دیگر ضلع پریشد بھی عدالت میں گئے جس سے تنازعہ بڑھا اور نتیجے میں ریزرویشن کو خطرہ لاحق ہوا۔

ناناپٹولے نے کہا کہ آر ایس ایس کے اشارے پر چلنے والی بی جے پی کی سوچ ہی ریزرویشن مخالف ہے۔ یہ بی جے پی کی اوبی سی کے سیاسی ریزرویشن کو ختم کرکے اوبی سی طبقے کو اقتدار سے محروم رکھنے کی سازش ہے۔ بی جے پی کی اسی سوچ کی وجہ سے آج ریزرویشن کے معاملے میں پیچیدگی پیدا ہوئی ہے لیکن اس کا ٹھیکرا ریاست کی مہاوکاس اگھاڑی حکومت کے سرپرپھوڑنے کے لیے احتجاج کا یہ ڈرامہ وہ کررہی ہے۔ بی جے پی کی اس ڈرامے بازی سے عوام خاص طور سے بہوجن طبقے کے لوگ بخوبی واقف ہیں۔ بی جے پی کا یہ احتجاج صرف اورصرف ایک دھوکہ ہے اس احتجاج کے پردے میں وہ اپنے گناہوں کوچھپانے کی کوشش کررہی ہے۔

انہوں نے کہا کہ بی جے پی کی غیر ذمہ داری کی وجہ سے او بی سی کا سیاسی ریزرویشن بحران میں ہے اور بلدیاتی انتخابات میں تقریبا 55 سے 56ہزار نشستیں خالی کرنی پڑیں گی۔ بی جے پی نے او بی سی کمیونٹی میں قیادت ختم کرنے کا گناہ کیا ہے۔ فڈنویس اپنے پانچ سالہ دورِ اقتدار میں سورہے تھے اور اب او بی سی کمیونٹی کو احتجاج کے ذریعے گمراہ کررہے ہیں۔ اگر بی جے پی کو او بی سی کمیونٹی کے تئیں ذرا بھی ہمدردی ہوتی تو یہ نوبت ہی نہیں آتی۔ چونکہ ان کی سازش اوبی سی طبقے کے سامنے بے نقاب ہوچکی ہے اس لیے وہ احتجاج کے ذریعے یہ بتانے کی ناکام کوشش کررہے ہیں کہ وہ اور ان کی پارٹی ہی اوبی سی طبقے کی سب سے بڑی ہمدرد ہے۔

ورق تازہ نیوز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں  https://t.me/waraquetazaonlineاور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔