• 425
    Shares

انت گیتے کی حالت ’ کہا نہیں جائے اور سہا نہیں جائے‘ کی ہوگئی ہے: سنیل تٹکرے

ممبئی:شیوسینا لیڈر اننت گیتے کے حالیہ بیان پر تنقید کرتے ہوئے این سی پی کے قومی جنرل سکریٹری سنیل تٹکرے نے کہا ہے کہ ان کی حالت ’نہ کہا جائے نہ سہاجائے‘ کی ہوگئی ہے جس کی وجہ سے وہ نہایت مایوسی کی عالم میں کچھ بھی اول فول بکنے لگے ہیں۔ سنیل تٹکرے یہاں این سی پی کے صدردفتر میں میڈیا کے نمائندوں سے خطاب کررہے تھے۔

انہوں نے کہا کہ اننت گیتے کی بولنے سے کچھ فرق نہیں پڑتا ہے لیکن اپنے بیان سے انہوں نے سورج پر تھوکنے کی کوشش کی ہے۔ شردپوار صاحب ملکی سطح کے لیڈر اورریاست کی مہاوکاس اگھاڑی حکومت کے بانی ہیں۔ وزیر اعلیٰ ادھو ٹھاکرے ریاست کا کام کاج نہایت شفافیت سے چلارہے ہیں۔ اس بات کی تعریف ہورہی ہے کہ وزیر اعلی ادھو ٹھاکرے کی قیادت میں مہاراشٹر کوویڈپر نہایت کامیابی سے قابوپارہا ہے۔ لیکن حاشیے پر پہنچے ہوئے لیڈران کو اس کا ذرا بھی احساس نہیں ہے۔

سنیل تتکرے نے یہ بھی واضح کیا کہ این سی پی ریاست کی شاہو، پھلے اور امبیڈکر کے نظریات پر یقین رکھنے والی پارٹی ہے۔ ملکی سطح پر پوار صاحب کی قیادت پر کسی کے کچھ بھی بولنے سے کوئی فرق نہیں پڑتاہے۔ یہ معلوم نہیں ہے کہ اننت گیتے پچھلے دو سال سے کہاں گوشہ نشین تھے لیکن جب مہاوکاس اگھاڑی کے لیڈر کی حیثیت سے جب وزیر اعلیٰ ادھو ٹھاکرے کا انتخاب ہورہا تھا تو وہ باندرہ علاقے کے ایک ہوٹل میں تشریف لائے تھے۔ اس وقت انہوں نے نہایت احترام کے ساتھ پوار صاحب کے پیرچھولیے تھے اور اگھاڑی کی تشکیل پر انہیں مبارکبادپیش کی تھی۔ اس واقعے کا میں شاہد ہوں۔

تٹکرے نے کہا کہ شیوسینا کے لوگوں کو توقع تھی کہ اننت گیتے بی جے پی کے ریاستی صدر کے بیان پراپناردعمل ظاہر کریں گے لیکن انہوں نے 2014 اور 2019 کے انتخابات سے مغلوب اننت گیتے کی خود اعتمادی اس وقت گر گئی جب ان کی پارٹی قیادت کے بارے میں اس طرح کے بیانات دیئے گئے۔اس پریس کانفرنس میں ریاستی جنرل سکریٹری شیواجی راؤ گرجے اور ریاستی ترجمان سنجے تٹکرے بھی موجود تھے۔

ورق تازہ نیوز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں  https://t.me/waraquetazaonlineاور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔