NANDED NIA RAID : ناندیڑ کے نوجوانوں کو این آئی اے نے پوچھ گچھ کیلئے آخر گرفتار کیوں کیا تھا؟

2,340

ناندیڑ (ورق تازہ نیوز) شہر میں آج دن بھر ہلچل رہی۔ وجہ تھی این آئی اے کا چھاپہ۔ قومی تحقیقاتی ایجنسی ناندیڑ میں داخل ہوئی۔ اس سے بحث شروع ہوئی کہ اصل میں کیا ہوا۔ قومی تحقیقاتی ایجنسی کی ایک ٹیم نے ناندیڑ شہر میں راست چھاپے مارے۔ واٹس ایپ گروپ پر اردو میں کوئی مسیج بھیجنے کے بعد ان کو حراست میں لے لیا گیا۔ اس کے بعد ان سے پوچھ گچھ کی گئی۔ تینوں کو آج علی الصبح حراست میں لے لیا گیا تھا تینوں سے تقریباً 12 گھنٹے تک پوچھ گچھ کی گئی۔ لیکن، ان تینوں کو رہا کردیا گیا

کیا ہے پورا معاملہ ؟

مراٹھی نیوز چینل ٹی وی 9 کے مطابق ناندیڑ کے رہنے والے نوجوانوں نے واٹس ایپ گروپ پر چیٹنگ کررہے تھے۔ اس میں کچھ عربی جملوں کے معنی اردو میں بیان کیے گئے۔ اسی گروپ میں دیگر کچھ مشتبہ افراد بھی تھے۔ جس کی بنیاد پر ناندیڑ کے نوجوانوں سے پوچھ گچھ کی گئی۔ تاہم بتایا جاتا ہے کہ تحقیقات سے کچھ نہیں نکلا۔ چنانچہ ان تینوں کو رہا کر دیا گیا۔

این آئی اے نے ناندیڑ شہر کے اتوارا علاقے سے ایک شخص اور دیگلور ناکہ قدوائی نگر سے دو افراد کو گرفتار کیا ہے۔ این آئی اے کو شبہ تھا کہ مذکورہ لوگ اس واٹس ایپ گروپ کے ذریعے غیر قانونی کاروائیوں میں ملوث ہیں۔ دیگلور ناکہ علاقہ کے قدوائی نگر کے دو نوجوانوں کو بھی حراست میں لیا گیا ہے۔ بتایا جاتا ہے کہ وہ موبائل فون چور ہیں۔

اس دوران دو موبائل چور اتوارہ سے گرفتار کئے گئے شخص سے واٹس ایپ گروپ کے ذریعے رابطے میں تھے۔ اسی مناسبت سے این آئی اے نے صبح ناندیڑ شہر کے مختلف علاقوں سے تین افراد کو حراست میں لیا تھا۔ ایک اور کو سہ پہر تین بجے حراست میں لیا گیا اور اب مشتبہ افراد کی تعداد چار ہو گئی ہے۔ دریں اثنا، ان کو صبح 7 بجے ناندیڑ میں اے ٹی ایس کے دفتر میں سروں پر سیاہ کپڑوں کے ساتھ لایا گیا تھا۔

تینوں سے تفتیش کی گئی

قومی تحقیقاتی ایجنسی کی ایک ٹیم آج صبح ناندیڑ پہنچی۔ اس کے بعد اس نے واٹس ایپ پر چیٹنگ کے بارے میں دریافت کیا۔ اس میں عربی زبان کے بعض جملوں کے معنی بیان کیے گئے تھے۔ اس کا کیا مطلب ہے؟ اسے واٹس ایپ پر کیوں شیئر کیا؟ قومی تحقیقاتی ایجنسی نے اس کے دور رس نتائج کی چھان بین کی۔ تاہم اس بارے میں ایجنسی نے میڈیا میں اب تک کوئی سرکاری بیان جاری نہیں کیا ہے۔

تینوں کو رہا کر دیا گیا

این آئی اے کی ٹیم کو ناندیڑ سے تینوں پر شبہ تھا۔ ان تینوں نے یہ پیغام کیوں بھیجا؟ انہیں اس تفتیش میں کچھ نہیں ملا چنانچہ تینوں کو واپس گھر بھیج دیا گیا واضح رہے کہ یہ تفتیش 12 گھنٹے تک جاری رہی۔