کانگریس کی ’کورونا مکت مہاراشٹر‘ مہم: 24X7 ہیلپ لائن، عوامی بیداری مہم اور خون کے عطیات کے کیمپ

ممبئی: ملک میں فی الوقت کورونا تباہی مچائے ہوئے ہے اور کل تک لاپتہ رہنے والے ملک کی تاریخ کے سب سے نااہل مرکزی وزیرصحت ڈاکٹر ہرش وردھن نے اچانک متحرک ہوتے ہوئے انتہائی نچلی سطح پر غیرمہذب و بے ہودہ زبان کا استعمال کرتے ہوئے مہاراشٹر کے 13کروڑ مراٹھی عوام کی توہین کی ہے۔ ڈاکٹر ہرش وردھن کو اپنے بیان پر مہاراشٹر کی عوام سے معافی مانگنی چاہیے۔ یہ مطالبہ آج یہاں مہاراشٹر پردیش کانگریس کمیٹی کے صدر نانا پٹولے نے کیا ہے۔ وہ یہاں ایک پریس کانفرنس سے خطاب کررہے تھے۔

انہوں نے کہا کہ مہاراشٹر کے بی جے پی لیڈران کو اگر عوام کی نہیں تو کم ازکم اپنی عقل کا تھوڑا لحاظ کرتے ہوئے مہاراشٹر دروہ کرنے سے بچنا چاہیے تھا لیکن بی جے پی کے لیڈران نے نہ صرف مہاراشٹر کے عوام کی توہین کی بلکہ مہاراشٹر پر غلط الزام عائد کرکے کورونا بحران کے دوران اپنی گندی سیاست کررہے ہیں۔ جبکہ ان بی جے پی لیڈران کو ریاست کی عوام کے لیے مرکز سے ضروری کورونا ویکسین، ریمڈیسیویر انجکشن، آکسیجن ودیگر ضروری ادویات طلب کرنا چاہیے تھا۔ پٹولے نے کہا کہ ایک سال قبل مرکزی حکومت نے کورونا کو قومی آفت قرار دیا تھا۔یقومی آفات سے بچاؤ کے قانون 2005کے تحت کسی آفت کے اعلان کا مطلب یہ ہوتا ہے کہ ڈیزاسٹر مینجمنٹ کی تمام تر ذمہ داری مرکزکی ہوتی ہے۔ لیکن بدقسمتی سے مرکزی حکومت اور مرکزی وزیرصحت ڈاکٹر ہرش وردھن اپنی ذمہ داری سے فرار اختیار کرتے ہوئے نہایت غلیظ سیاست کررہے ہیں اور غیرذمہ دارانہ بیان بازی کررہے ہیں۔ سینٹرل ڈیزاسٹر مینجمنٹ ایکٹ 2005 کے مطابق کورونا کی دوسری لہر کے لیے منصوبہ بنانا مرکزی حکومت اور مرکزی وزیرصحت کی ذمہ درای تھی لیکن اس ضمن میں کچھ نہ کرتے ہوئے اور ملک کی عوام کی کوئی فکر نہ کرتے ہوئے مرکزی حکومت نے صرف8کروڑ لوگوں کو ویکسین فراہم کیا۔ جبکہ پاکستان جیسے دشمن ممالک سمیت دیگر ممالک کو بڑے پیمانے پر مفت میں ویکسین فراہم کیا گیا۔ ویکسین کی فراہمی، ویکسین کی دستیابی، ریمیڈیسیور وآکسیجن کی خاطر خواہ فراہمی کا فیصلہ کرنے کے بجائے مرکزی حکومت اپنی روایت کے مطابق جھوٹے الزامات عائد کرکے ملک کو گمراہ کررہی ہے۔

’کورونا مکت مہاراشٹر‘ کے لیے کانگریس کی 24X7ہیلپ لائن

ناناپٹولے نے کہا کہ مہاویکاس اگھاڑی حکومت کورونا بحران کا مقابلہ بہترین منصوبہ بندی اور ذمہ داری کے ساتھ کررہی ہے اور کانگریس پارٹی ریاست پر آنے والی اس مصیبت کی گھڑی میں عوام کی مدد کے لیے سرگرم ہوگئی ہے۔ کانگریس ریاست میں ’کورونا مکت مہاراشٹر مہم‘ چلارہی ہے اور جلد ہی ریاست کے تمام اضلاع میں کانگریس کمیٹیوں کے دفاتر میں 24X7ہیلپ شروع کیا جارہا ہے۔ اس ہیلپ لائن کا صدر دفتر ممبئی میں پارٹی کا دفتر ہوگا۔ اس ہیلپ لائن کے ذریعے کورونا مریضوں کو ہرطرح کی مدد جیسے کہ مریضوں کے لیے اسپتالوں میں بیڈ کی فراہمی، علاج ومعالجے کا انجکشن ودیگر طبی خدمات فراہم کی جائے گی۔ کورونا مکت بوتھ، کورونا مکت وارڈ، کورونا مکت تعلقہ، کورونا مکت ضلع وکورونا مکت مہاراشٹر کے لیے کانگریس کے کارکنان ہرممکن کوشش کریں گے۔ ریاست میں خون کی قلت کو پیشِ نظر رکھتے ہوئے 14/اپریل کو ڈاکٹر باباصاحب امبیڈکر کی یومِ پیدائش کے موقع پر ریاست بھر میں خون کے عطیات کے کیمپ لگائے جائیں گے۔ اس مہم میں ریاستی کانگریس کے ۶ کارگزار صدور اپنے اپنے حلقوں میں جاکر کورونا کی صورت حال کا جائزہ لیں گے۔ ریاستی کارگزار صد شیواجی راؤ موگھے مراٹھواڑہ ڈیویژن میں، چندرکانت ہنڈورے ناگپور ڈیویژن میں، عارف نسیم خان کوکن ڈویژن میں، بسوراج پاٹل مغربی مہاراشٹر میں، ایم ایل اے پرینیتی شندے شمالی مہاراشٹر میں اور ایم ایل اے کنال پاٹل امراؤتی ڈیویژن میں اپنی ذمہ داری نبھائیں گے اورجہاں جہاں بھی ضرورت ہوگی وہاں مدد پہونچانے کی کوشش کریں گے۔ اس کام میں نگراں وزیر، کانگریس کے رابطہ وزیر بھی شامل ہونگے۔ اس مہم میں امداد وبازآبادکاری کے وزیر وجیئے ویڈیٹی وار و وزیرتعلیم امیت دیشمکھ کی مدد حاصل کی جائے گی۔

اس پریس کانفرنس میں امداد وبازآبادکاری کے وزیر وجیے ویڈیٹی وار، وزیرتعلیم امیت دیشمکھ، کارگزار صدر نسیم خان، چندرکانت ہنڈورے، ایم ایل اے کنال پاٹل، ایم ایل اے وجاہت مرزا، ایم ایل اے ابھیجیت ونجاری، ریاستی کانگریس کے ترجمان اتل لونڈھے، ڈاکٹر راجو واگھمارے، ڈاکٹر سنجئے لاکھے پاٹل اوردیوانند پوار وغیرہ موجودتھے۔