MPCC Urdu News 4 April 22

بی جے پی کے ذریعے کولہاپور کے ووٹروں کو ای ڈی کی براہ راست دھمکی: نانا پٹولے

کولہاپور میں شکست سامنے نظر آنے پر بی جے پی ای ڈی کی پناہ میں

ممبئی: بار بار دیکھا جا رہا ہے کہ بی جے پی اپوزیشن کی آواز کو دبانے کے لیے مرکزی تفتیشی ایجنسیوں کوغلط استعمال کررہی ہے۔ وہیں انفورسمنٹ ڈائریکٹوریٹ (ای ڈی) اس طرح کام کررہی ہے گویا وہ بی جے پی کی کوئی کیڈر بن گئی ہو۔ بی جے پی اور ای ڈی پر یہ سخت تنقید ریاستی کانگریس صدر نانا پٹولے نے کی ہے۔

انہوں نے کہا کہ عالم یہ ہے کہ اب بی جے پی لیڈر کولہاپور کے ووٹروں کو ای ڈی کے نام پر دھمکیاں دے رہے ہیں۔ پٹولے نے کہا کہ کولہاپور میں اپنی ممکنہ شکست کو دیکھ کر بی جے پی لیڈر مایوسی میں اس طرح کے بیانات دے رہے ہیں۔بی جے پی کو آڑے ہاتھوں لیتے ہوئے نانا پٹولے نے کہا کہ یہ نہایت افسوسناک ہے کہ بی جے پی کے ریاستی صدر چندرکانت پاٹل نے کولہاپور کے ووٹروں کو دھمکی دی ہے کہ آپ کی ای ڈی تحقیقات کرے گی۔ انہوں نے کہا کہ ریاست میں بی جے پی کا عوامی بنیاد پوری طرح سے ختم ہوگیا ہے۔ مہاراشٹر کے لوگوں نے بلدیاتی انتخابات میں بی جے پی کو اس کی حیثیت بتا دی ہے۔ کولہاپور اسمبلی کے ضمنی انتخاب میں بھی کانگریس پارٹی کی جیت طے ہے۔

ناناپٹولے نے کہا کہ کولہاپور میں بی جے پی کی ممکنہ شکست کو دیکھتے ہوئے اب چندرکانت پاٹل نے مایوسی کے عالم میں رائے دہندگان کو براہ راست دھمکیاں دینا شروع کر دی ہیں لیکن ان کی یہ بھی پینترا کام نہیں آنے والا ہے۔چندرکانت پاٹل نے ایک بیان میں کہا ہے کہ کچھ لوگ Paytm کے ذریعے رقم منتقل کر رہے ہیں اور اگر آپ رقم لیتے ہیں تو ای ڈی تحقیقات کر سکتی ہے۔ پٹولے نے سوال کیا کہ کیا ای ڈی اب پانچ سو ہزار روپے کی منتقلی کی بھی تحقیقات کرنے جا رہی ہے اور کیا یہ جانچ بی جے پی کے کہنے پر ہوگی؟

نانا پٹولے نے کہا کہ پچھلے سات سالوں میں غیر بی جے پی ریاستوں میں ای ڈی، انکم ٹیکس اور سی بی آئی کا غلط استعمال بڑھ رہا ہے۔ مہاراشٹر میں بی جے پی کو اقتدار نہ ملنے سے ان کا ذہنی توازن بگڑ گیا ہے اور مایوسی میں وہ مرکزی تفتیشی ایجنسیوں کا خوف دکھا کر لوگوں میں خوف کا ماحول پیدا کر رہی ہے۔ چندرکانت پاٹل بھی ایسے بیانات دے رہے ہیں، گویا ان کا ذہنی توازن بھی بگڑ گیا ہے۔ پٹولے نے کہا کہ کولہاپور کے خوددار لوگ اس ضمنی انتخاب میں چندرکانت پاٹل اور بی جے پی کو ایسا سبق سکھائیں گے کہ وہ کہیں بھی کھڑے نہیں ہو سکیں گے۔