راجیہ سبھا انتخابات میں مہاوکاس اگھاڑی کے تمام امیدوار کامیاب ہونگے: نانا پٹولے عمران پرتاپ گڑھی نے راجیہ سبھا کے لیے کاغزات نامزدگی جمع کی

0 2

ممبئی:مہاراشٹر میں راجیہ سبھا انتخابات بلامقابلہ کرانے کی روایت ہے لیکن اپوزیشن پارٹی نے اس روایت کو بالائے طاق رکھ دیا ہے۔راجیہ سبھا کے لئے کھلی ووٹنگ ہوتی ہے اورچونکہ مہاوکاس اگھاڑی کے پاس اکثریت ہے اس لئے مہاوکاس اگھاڑی کے تمام امیدوار منتخب ہونگے۔ اس یقین کا اظہار آج یہاں مہاراشٹر پردیش کانگریس کمیٹی کے صدر ناناپٹولے نے کیا ہے۔

مہاراشٹر سے راجیہ سبھا کے لئے کانگریس امیدوار عمران پرتاپ گڑھی نے آج اپنا پرچہٴ نامزدگی داخل کی۔ انہوں نے اس موقع پر مراٹھی میں حلف لیا۔ پرچہٴ نامزدگی داخل کرتےوقت ریاستی صدر نانا پٹولے، قانون ساز کانگریس پارٹی کے لیڈر اور وزیر محصول بالا صاحب تھورات، ریلیف اور بازآبادکاری کے وزیر وجے وڈیٹی وار، طبی تعلیم کے وزیر امیت دیشمکھ، ماہی پروری کے وزیر اسلم شیخ، آل انڈیا کانگریس کمیٹی کے سکریٹری اور معاون انچارج آشیش دووا، ایم ایل اے امین پٹیل، ایم ایل اے ذیشان صدیقی، ایم ایل اے وجاہت مرزا، ریاستی نائب صدر سنیل دیشمکھ، جنرل سکریٹری دیوآنند پوار وغیرہ موجود تھے۔

پرچہٴ نامزدگی کے داخلے کے بعد میڈیا سے بات کرتے ہوئے کانگریس کے ریاستی صدر نانا پٹولے نے کہا کہ ہمارے امیدوار عمران پرتاپ گڑھی نے فارم بھرتے وقت مراٹھی میں حلف لیا۔ ایسے امیدوار دینے کے لیے ہم محترمہ سونیاگاندھی اور راہل گاندھی کا تہہ دل سے شکریہ اداکرتے ہیں جو جو ملک کی وحدت پر یقین رکھتا ہو، سیکولرازم کے نظریات پر یقین رکھتا ہو اور جو زبانوں کی اہمیت پر یقین رکھتا ہو۔ انہوں نے کہا کہ کانگریس پارٹی ایک نظریاتی پارٹی ہے، یہ ایک جمہوری پارٹی ہے اور پرتاپ گڑھی کی امیدواری کا فیصلہ پارٹی لیڈروں نے کیا ہے۔ ایک نوجوان اور پرجوش کارکن کی امیدواری نے کانگریس کو ایک نیا حوصلہ دیا ہے۔ ہائی کمان کی طرف سے راجیہ سبھا کی امیدواری پر جو فیصلہ لیا گیا ہے اس کا سبھی نے خیر مقدم کیا ہے۔ ان کی امیدواری سے شروع ہونے والی بحث فضول ہے۔ بی جے پی میں جمہوریت نہیں ہے، انہیں اس معاملے میں بولنےتک کا حق نہیں ہے ۔ اس لیے ہم ان کی تنقید کو زیادہ سنجیدگی سے نہیں لیتے ہیں۔