Waraqu E Taza Online
Nanded Urdu News Portal - ناندیڑ اردو نیوز پورٹل

مودی سرکار نے ایندھن کی قیمتوں میں اضافہ سے لوگوں کی جیبوں پر ڈاکہ ڈالا: کانگریس

IMG_20190630_195052.JPG

کانگریس کے ریاست گیر احتجاج میں ہزاروں افراد شریک،قیمت میں اضافہ واپس لینے کا مطالبہ

ممبئی: پٹرول وڈیژل کی قیمتوں میں اضافے کے خلاف آج ریاستی کانگریس نے ریاست گیر احتجاج کیا جس میں ہزاروں افراد شریک ہوئے۔ یہ احتجاج ریاست کے تمام اضلاع کے ہیڈکوارٹر کے سامنے 10بجے سے 12بجے کے درمیان کیاگیا۔ کانگریس کے ریاستی صدربالاصاحب تھورات نے پونے میں الکاٹاکیز چوک میں ہوئے احتجاج میں شریک ہوئے جہاں انہوں نے خطاب بھی کیا۔

انہوں نے کہاکہ ایسی صورت میں جب ملک کورونا کی مصیبت سے جوجھ رہا ہے، غریبوں، مزدوروں، اوسط طبقے وچھوٹے کاروباریوں کا جینا محال ہے، حکومت کو انہیں سہارا دینا چاہئے تھا اور ان کی مصیبتیں کم کرنی چاہئے تھیں۔ لیکن حکومت کے رویے سے ایسا محسوس ہوتا ہے کہ انہیں ان طبقات کی ذرہ برابر بھی فکر نہیں ہے۔ تھورات نے کہا کہ راہل گاندھی نے جو نیائے اسکیم پیش کی تھی، اسے روبہ عمل لاکر لوگوں کو مدد کرنے کا یہی وقت تھا، مگر مودی حکومت ایندھن کی قیمتوں میں روزآنہ اضافہ کے ذریعے عوام کی جیبوں پر ڈاکہ ڈال رہی ہے۔

بالاصاحب تھورات نے مزیدکہا کہ ڈاکٹر منموہن سنگھ کی قیادت والی یوپی اے حکومت کے دور میں بین الاقوامی بازار میں خام تیل کی قیمت 125ڈالر فی بیرل ہونے کے باوجود ملک میں ایندھن کی قیمتوں کو قابو میں تھیں، لیکن فی الوقت خام تیل کی قیمت فی بیرل 25ڈالرتک نیچے آچکا ہے اس کے باوجود پٹرول وڈیژل کی قیمتیں 90روپئے فی لیٹر تک پہونچ گئی ہیں۔ انہوں نے کہا کہ مودی حکومت ایندھن کی قیمتوں میں اضافے کے ذریعے نفع خوری کررہی ہے۔ یہ عوام کی جیبوں ڈاکہ ڈالنا ہے۔ پہلے سے ہی مہنگائی کی وجہ سے غریبوں وعام لوگوں کی زندگی دوبھر بنی ہوئی ہے، اس مہنگائی سے اوسط طبقے کے لوگوں کی کمر بھی دوہری ہورہی ہے، چھوٹے کاروباری بھی بری طرح اس مصیبت کوجھیل رہے ہیں، ایسے میں ایندھن کی قیمتوں میں اضافہ انہیں مزید مشکلات میں ڈھکیلنے جیسا ہے۔ ہمارا مطالبہ ہے کہ ایندھن کی قیمتوں میں یہ اضافہ حکومت فوری طور پر واپس لے۔

پونے میں ہونے والے احتجاج میں تھورات کے ساتھ پونے شہرکانگریس کمیٹی کے چیئرمین اور سابق وزیر رمیش باگوے، مہاراشٹر پردیش کانگریس کمیٹی کے جنرل سکریٹری سابق ایم ایل اے موہن جوشی، سابق وزیر بالاصاحب شیورکر، سابق ایم ایل اے اور پردیش کانگریس کے ترجمان الہاس دادا پوار، سابق ایم ایل اے دیپتی چودھری، ابھئے جھاجیڈ، کملتائی ویوہارے، گوپال تیواری اور کثیرتعداد میں پارٹی کے عہدیداران وکارکنان موجود تھے۔

اس ریاست گیر احتجاج کے دوران مودی سرکار کے خلاف برہمی کا اظہار کیا گیا۔ احتجاج کے بعد صدرجمہوریہ کے نام کلکٹر کو میمورنڈم دے کر ایندھن کی قیمتوں میں اضافے کو واپس لینے کا مطالبہ کیا گیا۔

اس احتجاج کے ساتھ ہی سوشل میڈیا کے ذریعہ#SpeakUpForFuelHike نامی آن لائن مہم بھی شروع کی گئی جس میں عوام نے بھرپورحصہ لیا۔ نوجوان طبقہ نے اس مہم واحتجاج میں اپنا بھرپور تعاون دیا۔ دوسرے مرحلے کا احتجاج آج یعنی کہ 30 جون سے ریاست کے تمام تعلقہ سطح پر شروع ہوگا۔ کانگریس کے ریاستی صدر کے مطابق مرکزی حکومت جب تک ایندھن کی قیمتوں میں اضافے کو واپس نہیں لیتی، یہ احتجاجی تحریک جاری رہے گی۔