اوبی سی کے حقوق کے لئے کانگریس کا ریاست گیر احتجاج

ممبئی: سپریم کورٹ میں اوبی سی طبقے کے ریزرویشن کی منسوخی کی تمام تر ذمہ دارمرکز کی مودی حکومت اورریاست کی سابقہ فڈنویس حکومت ہے۔ جب سپریم کورٹ نے اس ریزرویشن کے لئے اعدادوشمارطلب کیا تو مرکزی حکومت نے اسے فراہم نہیں کیا۔ مرکزوریاست میں بی جے پی حکومت کے باوجود قصداً عدالت کو اعدادوشمار نہیں دیا گیا، جس کی بنا پر اوبی سی کا سیاسی ریزرویشن منسوخ ہوگیا۔ یہ الزام آج یہاں مہاراشٹر پردیش کانگریس کمیٹی کے کارگزار صدر چندرکانت ہنڈورے نے عائد کیا ہے۔

چندرکانت ہنڈورے کی قیادت میں ریاستی کانگریس نے آج منترالیہ کے پاس مہاتماگاندھی کے مجسمہ کے سامنے مودی حکومت کے خلاف احتجاج کیا۔ اس موقع پر جنرل سکریٹری وترجمان راجیش شرما، ریاستی جنرل سکریٹری راجن بھوسلے، پرکاش سوناؤنے، میونسپل کارپوریٹر سنگیتا ہنڈورے، راجیش سوناؤنے، ششی کانت بنسوڈے، لکشمن کوٹھاری سمیت بڑی تعداد میں کارکنان موجود تھے۔

اس موقع پر خطاب کرتے ہوئے چندرکانت ہنڈورے نے کہا کہ بی جے پی وآر ایس ایس ریزرویشن کے مخالف ہیں۔ ان کی غیرذمہ داری کے مظاہرے کی وجہ سے اوبی سی کا ریزرویشن منسوخ ہوا ہے۔ اوبی سی طبقے کی قیادت کو ختم کرنے کی یہ بی جے پی کی سازش ہے۔ انہوں نے کہا کہ بی جے پی کا یہ اعلان مضحکہ خیز ہے کہ اگر انہیں ریاست کا اقتدار حاصل ہوجائے تو وہ چار مہینے میں اوبی سی ریزرویشن دوبارہ دلا دیں گے۔ اس سے قبل پانچ سال تک بی جے پی کی ریاست میں حکومت تھی، اس وقت جو ضروری تھا وہ نہیں کئے اور اب چار مہینے میں دوبارہ ریزرویشن دینے کی بات کہہ کر لوگوں کو ورغلایا جارہا ہے۔بی جے پی کی جانب سے جھوٹی باتیں پھیلاکر اوبی سی برادری کو گمراہ کیا جارہا ہے۔ اگر بی جے پی کو اوبی سی طبقے کی واقعتا کوئی فکر ہوتی تو یہ وقت ہی نہیں آیا ہوتا۔ اب جبکہ ملک کے سامنے اوبی سی کی سازش بے نقاب ہوچکی ہے تو وہ اوبی سی ریزرویشن کے لئے احتجاج کا دکھاوا کررہی ہے اورجیل بھرو آندولن کررہی ہے، مگر اوبی سی برادری بی جے پی کی چالوں کو خوب اچھی طرح سمجھ چکی ہے۔ بی جے پی کا جیل بھروآندولن گویا چوری اور سینہ زوری ہے۔ لیکن جب تک اوبی سی برادری کا ریزرویشن دوبارہ بحال نہیں ہوجاتا، کانگریس کا احتجاج اور جدوجہد جاری رہے گا۔

واضح رہے کہ اوبی سی طبقے کا ریزرویشن منسوخ کئے جانے کے خلاف مہاراشٹر پردیش کانگریس کمیٹی کی جانب سے ریاست گیر احتجاج کیا گیا جسے عوام کی بھرپور تائیدوحمایت حاصل رہی۔ ناندیڑ میں ریاست کے عوامی تعمیرات کے وزیر اشوک راؤچوہان کی قیادت میں زبردست احتجاج کیا گیا جبکہ پونے میں ریاستی نائب صدر موہن جوشی، رمیش باگوے کی قیادت میں، دھولیہ میں ریاستی کارگزار صدر ایم ایل اے کنال پاٹل کی قیادت میں، سانگلی میں شہر صدر پرتھوی راج پاٹل کی قیادت میں بڑے پیمانے پر احتجاج کیاگیا۔ اس کے علاوہ اورنگ آباد، احمد نگر، کولہاپور، ناسک، شولاپور، اکولہ، چندرپور،امراؤتی، نئی ممبئی سمیت ریاست کے تمام اضلاع میں احتجاج کرتے ہوئے بی جے پی حکومت کے خلاف زبردست نعرے بازی کی گئی۔