بڑھتی ہوئی مہنگائی کے خلاف کانگریس 14سے29نومبر کے درمیان ریاست گیر ’جیل بھرو‘تحریک چلائے گی: ناناپٹولے

سونیاوراہل گاندھی کے ہاتھوں کو مضبوط کرنے کے لئے پارٹی کے تنظیمی ڈھانچے کو مضبوط کرنے کی ہدایت

ممبئی: مرکز کی بی جے پی حکومت نے ملک کی معیشت کو تباہی کی غار میں دھکیل دیا ہے، جس سے لاکھوں افراد بے روزگار ہو گئے ہیں۔ مہنگائی نے عام لوگوں کے لیے اپنے تہووار منانا مشکل بنا دیا ہے۔ کانگریس نے بار بار مہنگائی کے خلاف تحریک چلائی ہے لیکن مودی حکومت نہیں جاگی۔ اب 14 سے 29 نومبر تک عوامی بیداری مہم کے ذریعے سوئی ہوئی مودی حکومت کو ایک بار پھر بیدار کرنے کے لیے ریاست بھر میں جیل بھرو تحریک چلائی جائے گی۔ یہ اعلان آج یہاں مہاراشٹرپردیش کانگریس کمیٹی کے صدر ناناپٹولے نے کیا ہے۔

کانگریس کے دفتر تلک بھون میں کانگریس کے عہدیداران کی منعقدہ میٹنگ کے بعد میڈیا نمائندوں سے بات کرتے ہوئے پٹولے نے کہا کہ اس میٹنگ میں پارٹی کے تنظیمی ڈھانچے کو مضبوط بنانے پر غور کیا گیا۔ مہاراشٹر میں عوام کا ایک بڑا طبقہ ہے جو کانگریس پارٹی کے نظریات کے ساتھ وابستگی رکھتا ہے۔ ملک اور ریاست میں بی جے پی کی حکومت پر لوگوں میں شدید غصہ اور ناراضگی ہے۔ بی جے پی لوگوں کو ذاتوں اور مذاہب کی بنیاد پر تقسیم کرکے اپنے سیاسی مفاد کو حاصل کرنا چاہتی ہے جبکہ کانگریس ایک ایسی پارٹی ہے جو سماج کے تمام طبقات کو ساتھ لے کر چلتی ہے۔پٹولے نے کہا کہ ریاست میں کانگریس کو ایک بار پھر عوام کا بھرپور تعاون حاصل ہورہا ہے اور یہی وجہ ہے کہ بلدیاتی انتخابات میں چوتھے نمبر پر رہنے والی کانگریس ایک بار پھر پہلے نمبر پر آگئی ہے۔ انہوں نے پارٹی کے تمام کارکنوں اور عہدیداروں سے اپیل کی کہ وہ پارٹی کے تنظیمی ڈھانچے کو مضبوط کرنے کے لیے سخت محنت کریں تاکہ اس کام کو تسلسل دیا جائے اور پارٹی کو طاقت دی جائے اور سونیا جی اور راہل گاندھی کے ہاتھ مضبوط ہوں۔

این سی بی کی کارروائیوں کے بارے میں پوچھے گئے ایک سوال کا جواب دیتے ہوئے ناناپٹولے نے کہا کہ کوئی بھی قانون سے بالاتر نہیں ہے،جو قانون کی خلاف ورزی کریں انہیں اس کی سزا ملنی چاہیے۔ لیکن سوال یہ پیدا ہوتا ہے کہ گجرات میں اڈانی کے مندرا بندرگاہ سے ملنے والی 3 ہزار کلو منشیات کا کیا ہوا؟ اس کے خلاف کوئی کارروائی کیوں نہیں کی جاتی؟۔اپنے صنعتکار دوستوں کو بچانے اور اڈانی مندرا بندرگاہ پر پائی جانے والی منشیات کے بڑے ذخیرے سے توجہ ہٹانے کے لیے ممبئی میں کارروائیوں کا ڈرامہ کیا جارہا ہے۔ ممبئی میں این سی بی کی کارروائیوں کا مطلب یہ ہے کہ ’دال میں کچھ کالا ہے‘۔پٹولے نے یہ بھی کہا کہ بی جے پی شاہ رخ خان کے بیٹے کی گرفتاری کو ہندو مسلم کے رنگ دینے کی ناپاک کوشش کر رہی ہے۔

اس میٹنگ میں آل انڈیا کانگریس کمیٹی کے سیکرٹری اور ریاستی انچارج سونل پٹیل، آشیش دووا، ورکنگ صدر شیواجی راؤ موگھے، چندرکانت ہندورے، ایم ایل اے کنال پاٹل، نائب صدر حسین دلوائی، موہن جوشی،ایم ایل اے شیریش چودھری، چارولتا ٹوکس، سنجے راٹھوڈ، بھائی نگرالے، کسان کانگریس کے قومی نائب صدر شیام پانڈے، جنرل سکریٹری اور چیف ترجمان اتل لونڈھے، ریاستی جنرل سکریٹری ایم ایل اے دھیرج دیشمکھ، ایم ایل اے راجیش راٹھوڈ،ایم ایل اے ابھیجت ونجاری،ڈاکٹر سیدذیشان احمد، دیوانند پوار، پرمود مورے اور ڈاکٹر اراجو واگھمارے سمیت دیگر عہدیداران موجود تھے۔

ورق تازہ نیوز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں  https://t.me/waraquetazaonlineاور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔