مذہب کے نام پر ملک کو توڑنے کی کوشش ہرگز کامیاب نہیں ہوگی: ناناپٹولے
مہاراشٹر پردیش کانگریس کمیٹی کی جانب سے روزہ افطار کا اہتمام، تمام مذاہب کے لوگوں کی بھرپور شرکت
ممبئی:
ملک میں گزشتہ کچھ سالوں سے مذہب کے نام تفرقہ پھیلا کر ملک کو توڑنے کی کوشش کی جارہی ہے۔ یہ ملک ہندو، مسلم، سکھ عیسائی سمیت تمام مذاہب کے لوگوں کا ہے۔ جو طاقتیں مذہب کے نام پر لوگوں کو تقسیم کرکے ملک کوتوڑنے کی کوشش کررہی ہیں وہ اپنی کوشش میں ہرگز کامیاب نہیں ہو سکتیں۔ یہ باتیں آج یہاں مہاراشٹر پردیش کانگریس کمیٹی کی جانب سے منعقدہ روزہ افطار کے موقع پر ریاستی صدر ناناپٹولے نے کہی ہیں۔
اسلام جیمخانہ مرین لائن میں منعقدہ اس افطار کے پروگرام میں تمام مذاہب کے سرکردہ افراد، مذہبی رہنماؤں کے علاوہ ایران ، افغانستان ویمن کے سفیر حضرات خاص طور پر شریک تھے۔ ان کے علاوہ کانگریس پارٹی کے لیڈر و وزیر محصول بالا صاحب تصورات، کانگریس کے ریاستی کارگزار صدر عارف نسیم خان، چندر کانت ہنڈورس، ایم ایل اے پرینتی شندے، ماہی گیری کے وزیر اسلم شیخ، طبی تعلیم کے وزیر اسلم شیخ، خواتین واطفال کے بہبود کی وزیر یشومتی ٹھاکور، وزیر توانائی ڈاکٹر نِتن راؤت، سابق وزیر اعلیٰ سوشیل کمار شندے، پرتھوی راج چوہان، ایم ایل اے امین پٹیل، وجاہت مرزا، ممبئی کانگریس کے صدر بھائی جگتاپ، ممبئی کانگریس کے سابق صدر سنجے نروپم، ریاستی کانگریس کے نائب صدر حسین دلوائی، ایم ایل اے ذیشان صدیقی، سکریٹری ڈاکٹر سید ذیشان احمد، سابق ایم ایل اے بابا صدیقی، سکریڑی نظام الدین راعین کے علاوہ کانگریس پارٹی کے دیگر عہدیداران وکارکنان بڑی تعداد میں موجود تھے۔
اس موقع پر خطاب کرتے ہوئے کہا کہ آج ملک میں مذہبی ماحول کو بگاڑنے کی کوشش ہورہی ہے، ایسے میں یہ افطار پارٹی جس میں تمام مذاہب کے لوگ خصوصی طور پر شریک ہیں، ملک میں بھائی چارہ وسرودھرم سنبھاؤ کا پیغام دینے والا ہے۔ مذاہب کے درمیان پھوٹ ڈالنے کی کوشش کرنے والوں کے لئے آج کی یہ افطار پارٹی صحیح معنوں میں اصل بھارت کی نمائندگی کرنے والی ہے۔ انہوں نے کہا کہ یہ ملک تمام لوگوں کی قربانیوں سے آزاد ہوا ہے۔ ملک میں تمام مذاہب کے لوگ رہتے ہیں لیکن کچھ لوگ و پارٹیاں تقسیم پیدا کرنے کی کوشش کررہی ہیں، ایسے لوگوں وایسی پارٹیوں کو سبق سکھائے بغیر نہیں رہیں گے۔ ریاستی صدر نے اس موقع پر تمام شرکاء کا خصوصی طور سے شکریہ ادا کیا اور عید کی پیشگی مبارکباد دی۔