راہل گاندھی ملک کی آواز ہیں، ان کے خلاف انتقامی کارروائی ہرگزبرداشت نہیں کی جائے گی: ناناپٹولے

سونیاگاندھی وراہل گاندھی مودی حکومت کے جبر پر بھاری پڑیں گے: اشوک چوہان

راہل گاندھی سے ای ڈی کی تفتیش کے خلاف راج بھون پر کانگریس کا زبردست مورچہ

کانگریس کے ریاستی صدر، عہدیدارن کو پولیس نے حراست میں لیا

ممبئی: مرکز کی بی جے پی حکومت سرکاری ایجنسیوں کے ذیعے کانگریس کی قیادت کو کو خوفزدہ کرنے کی کوشش کررہی ہے لیکن ہم اس طرح کے کسی بھی دباؤ یا دہشت کو ذرا بھی خاطر میں نہیں لاتے۔ ملک کے عوام کے مسائل اٹھاہوئے مودی حکومت کو مسلسل آئینہ دکھانے والے راہل گاندھی آج ملک کی آواز بن چکے ہیں۔ ان کے خلاف مودی حکومت کی انتقامی کارروائی سے کانگریس کے کارکنان بھڑک اٹھے ہیں۔ یہ کارروائی ہم ہرگز برداشت نہیں کریں گے اور مرکزی حکومت کے خلاف ہماری جدوجہد جاری رہے گی۔ یہ انتباہ آج یہاں مہاراشٹر پردیش کانگریس کمیٹی کے صدر ناناپٹولے نے دیا ہے۔

راہل گاندھی کے خلاف مرکزی حکومت کی جانب سے شروع کی گئی ای ڈی کی تفتیش کے خلاف کانگرسی کے ریاستی صدر ناناپٹولے کی قیادت میں آج راج بھون پر زبردست مورچہ نکالا گیا۔ اس مورچے میں قانون ساز پارٹی کے لیڈر اور وزیرمحصول بالاصاحب تھورات، تعمیرات عامہ کے وزیر اشوک چوہان، وزیر توانائی ڈاکٹر نتن راؤت، ماہی پروری کے وزیر اسلم شیخ، خواتین اور بچوں کی بہبود کی وزیر یشومتی ٹھاکر، اسکولی تعلیم کی وزیر ورشا گائیکواڑ، طبی تعلیم کے وزیر امیت دیشمکھ، وزیر مملکت برائے زراعت وشواجیت کدم، ممبئی کانگریس کے صدر بھائی جگتاپ، ایم ایل اے امر راجورکر، ریاستی ورکنگ صدر نسیم خان، شیواجی راؤ موگھے، چندرکانت ہنڈورے، بسوراج پاٹل، نائب صدر موہن جوشی، ریاستی کانگریس کے چیف ترجمان اتل لوندھے، ترجمان ارون ساونت، سریش چندر راج ہنس، نظام الدین راعین، جنرل سکریٹری دیوآنند پوار، پرمود مورے، برج کشوردت، ابھیجت سپکال، سکریٹری سید ذیشان احمد، ممبئی کانگریس کے ورکنگ صدر چرنجیت سنگھ سپرا، ممبئی یوتھ کانگریس کے صدر ایایم ایل ذیشان صدیقی، راجیش شرما، راجا رام دیشمکھ سمیت سینکڑوں کارکنان موجود تھے۔

اس موقع پر میڈیا سے بات کرتے ہوئے ریاستی صدر نے مزید کہا کہ سیاسی تعصب کی بنیاد پر بی جے پی حکومت کانگریس کے قائدین کے خلاف جو کارروائی کررہی ہے اس کے خلاف کانگریس سڑکوں پر اتری ہوئی ہے اوراس کے خلاف پولیس فورس کا استعمال کرتے ہوئے وزرا، ممبران پارلیمنٹ، ممبران اسمبلی وخواتین کارکنان کو زدکوب کیا جارہا ہے۔ ملک میں آج زبردست انارکی پھیلی ہوئی ہے جس کے خلاف بڑے پیمانے پر عدم اطمینان پایا جارہا ہے۔ مرکزی کی گونگی وبہری حکومت تک عدم اطمینان وناراضگی کی یہ آواز پہنچانے کے لیے راج بھون پر زبردست مورچہ نکالاگیا ہے۔ مرکزی حکومت کے خلاف ہماری یہ جدوجہد جاری رہے گی۔

وزیرمحصول بالاصاحب تھورات نے اس موقع پر کہا کہ سونیاگاندھی اور راہل گاندھی کو نوٹس بھیج کرناحق پریشان کیا جارہا ہے۔ تفتیش کے نام پر گزشتہ تین دنوں سے راہل گاندھی کو پریشان کیا جارہا ہے۔ کانگریس کے کارکنان مرکزی حکومت کا یہ جبرہرگز برداشت نہیں کرینگے اور یہی وجہ ہے کہ ہرکانگریسی آج اٹھ کھڑا ہوا ہے۔ اس مورچہ کے ذریعے ہم مودی حکومت تک اس عدم اطمینان کو پہنچانے کی کوشش کر رہے ہیں۔ ملک کے لیے سب کچھ قربان کرنے والے خاندان کو ہراساں کرنا قابل مذمت ہے۔ سونیا اور راہل گاندھی مودی حکومت کے اس جبرپر بھاری پڑیں گے۔ ہمارے یہ لیڈران مودی حکومت کے سامنے ہرگز نہیں جھکیں گے۔ہم گورنر سے یہ توقع کرتے ہیں کہ وہ ہمارے جذبات کو مرکزی حکومت تک پہنچائیں۔

تعمیرات عامہ کے وزیر اشوک چوہان نے کہا کہ ہماری قیادت کو جھوٹے مقدمات میں پھنسا کربدنام کیا جارہا ہے لیکن ہم اسے ہرگزبرداشت نہیں کریں گے۔ ہم نے اس مورچے کے ذریعے اپنے شدید جذبات کا اظہار کیا ہے۔ گورنر کو ہمارے جذبات کو مرکزی حکومت تک پہنچانا چاہیے۔ ہنگنگ گارڈن سے نکلنے والے اس مورچے کو پولیس نے راج بھون کے سامنے روک دیا اورلیڈران کو آزاد میدان پولیس اسٹیشن لے جایا گیا۔