کانگریس کسی پر بھی کوئی نظریہ تھوپنے کی کسی کوشش کو ہرگزبرداشت نہیں کرے گی: اتل لونڈھے

ممبئی:اداکار کرن مانے نے سوشل میڈیا پر اپنے خیالات کا اظہار کرتے ہوئے کوئی جرم نہیں کیا۔ ملک کا آئین انہیں اپنے خیالات کے اظہار کا حق دیتا ہے۔ کیا کوئی اداکار اگر بی جے پی حکومت کے خلاف اپنی رائے کا اظہار کرتا ہے تو اسے سیریز سے ہٹا دیا جائے گا؟ یہ سخت سوال ریاستی کانگریس کمیٹی کے جنرل سکریٹری اور چیف ترجمان اتل لونڈے نے کیا ہے۔ انہوں نے کہا ہے کہ مہاراشٹر کے عوام اس طرح کی آمریت کو کبھی برداشت نہیں کریں گے۔

میڈیا سے بات کرتے ہوئے اتل لونڈھے نے مزید کہا کہ اداکار کرن مانے کے ساتھ جو کچھ ہوا اسے روکا جانا چاہیے۔ مہاراشٹر میں اس طرح کے جبر کی اجازت ہرگز نہیں دی جاسکتی۔ ہر ایک کو آزادی رائے اور اظہار رائے کا حق حاصل ہے۔ اگر مہاراشٹر میں کوئی نظریہ مسلط کرنے کی کوشش کی گئی تو کانگریس پارٹی اسے کبھی برداشت نہیں کرے گی۔اتل لونڈھے نے کہا کہ کانگریس پارٹی کرن مانے کے ساتھ مضبوطی سے کھڑی ہے۔

انہوں نے کہا کہ ترقی پسند مہاراشٹر کی ایک بھرپور سیاسی، سماجی اور ثقافتی روایت ہے۔ اس سے قبل بھی مختلف اداکاروں نے سیاسی بیانات دیے اور حکومت کے خلاف موقف اختیار کیا لیکن اب تک ان میں سے کسی کو بھی کسی فلم یا سیریل سے نہیں ہٹایا گیا۔ اگر آپ کرن مانے کے خیالات سے متفق نہیں ہیں تو کیا آپ ان کی روزی روٹی چھیننے کی کوشش کریں گے؟ لونڈھے نے کہا کہ مہاراشٹر میں آر ایس

ایس کے نظرے کے ذریعے لوگوں کا استحصال نہیں چلے گا۔ پھولے، ساہو اور امبیڈکر کے لیے مہاراشٹر میں اس طرح کے تفرقہ انگیز خیالات کے لیے کوئی جگہ نہیں ہے۔انہوں نے کہا کہ یہ انتہائی قابل مذمت ہے کہ کرن مانے کو سوشل میڈیا پر بی جے پی حکومت کے خلاف اپنے خیالات کا اظہار کرنے پر نجی چینل ’اسٹار پرواہ‘ کے سیریل ’مُلگی جھالی ہو‘ سے ہٹا دیا گیا ہے۔ لونڈھے نے کہا کہ اسٹار پرواہ چینل کو اس غلطی پر عوامی طور پر معافی مانگنی چاہیے.

ورق تازہ نیوز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں  https://t.me/waraquetazaonlineاور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔ 


اپنی رائے یہاں لکھیں