ریاست میں کانگریس کی لیڈیز ونگ کو بوتھ سطح تک مضبوط بنائیں: نانا پٹولے

کورونا بحران کے امدادی کاموں میں کانگریس کی شعبہ خواتین فعال شرکت

ممبئی: کورونا بحران کے دوران عوام کی مدد کے لئے کانگریس کے کارکنان سرگرم عمل ہیں۔ مدد کے اس کام میں کانگریس کی شعبہ خواتین بھی کسی طور پیچھے نہ رہتے ہوئے عوام کی مدد کے لیے دوڑ رہی ہیں۔کسی کا انتظار کیے بغیر جو وسائل میسر ہیں، ان کے ساتھ عوام کی مدد کے لیے جاری رکھیے۔ پارٹی وحکومت آپ کے ساتھ ہے۔ ویکسینیشن کے لیے اپنے پڑوس کے غریب لوگوں کو اپناتے ہوئے ان کے ویکسینیشن کا خرچ شعبہ خواتین کی کارکنان اپنے طور پر اٹھاتے ہوئے وہ رقم وزیراعلیٰ ریلیف فنڈ میں جمع کرائیں۔ مہاراشٹر پردیش کانگریس کمیٹی کے صدرناناپٹولے نے آج یہاں یہ اپیل کرتے ہوئے کہا ہے کہ ریاست میں کانگریس کی خواتین ونگ کو بوتھ کی سطح تک مضبوط کیا جانا چاہیے۔

مہاراشٹرپردیش کانگریس کمیٹی کے صدر ناناپٹولے کی صدارت اور خواتین واطفال کی بہبود کی وزیر یشومتی ٹھاکر کی موجودگی میں مہاراشٹر پردیش خواتین ونگ کی جائزہ میٹنگ منعقد ہوئی۔ اس میٹنگ میں تنظیمی جائزہ کے ساتھ کورونا بحران کے دوران خواتین کانگریس کے امدادی کاموں کا بھی جائزہ لیا گیا۔ اس میٹنگ میں ریاستی کانگریس کی کارگزار صدر نیز خواتین کانگریس کی انچارج ایم ایل اے پرینیتی شندے، خواتین کانگریس کی صدر سندھیا تائی سوالاکھے نے بھی شرکت کی۔

اس موقع پر خطاب کرتے ہوئے نانا پٹولے نے کہا کہ سابق وزیر اعظم ڈاکٹر منموہن سنگھ، کانگریس کی صدر محترمہ سونیا گاندھی و راہل گاندھی نے کورونا پر قابوپانے کی ضمن میں بار بار مودی حکومت کے سامنے تجاوزیر پیش کیں، مگر ان کی تجاوزیر کو نظر انداز کیا گیا۔بی جے پی اس بحران کے دور میں بھی سیاست کررہی ہے۔ اس کا اصل چہرہ عوام کے سامنے لانے کے لیے خواتین کانگریس کو پہل کرنا چاہیے۔ انہوں نے کہا کہ کورونا کے اس مصیبت کے دور میں لوگوں کی مدد میں کسی طور پر پیچھے نہ رہیں۔ ریاستی سطح پر بی جے پی کا مقابلہ کرنے کے لیے ہمیشہ تیار رہنا چاہیے۔ آپ کے کاموں کا بخوبی خیال رکھا جائے گا۔ ضلعی کمیٹیوں سے لے کر ریاستی سطح تک خواتین کو مناسب نمائندگی دی جائے گی۔

اس موقع پر خواتین واطفال کے بہبود کی وزیر یشومتی ٹھاکر نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ کورونا کی وجہ سے فوت ہونے والے والدین کے یتم بچوں کو گود لینے کی آڑ میں کچھ لوگ غلط فائدہ حاصل کرنے کی کوشش کررہے ہیں۔ ایسے یتیموں کے بارے میں معلومات ملتے ہیں، اس کی رپورٹ ضلع کلکٹر کے پاس کیا جائے۔ایسے یتیموں کو محفوظ جائے پناہ دینے کی ہماری تیاری ہے اور 21سال سے کم عمر کے یتیموں کو رہنے کا محفوظ انتظام کیا گیا ہے۔اس کے علاوہ کورونا کے دوران گھریلو تشدد کے واقعات بھی سامنے آرہے ہیں۔ گھریلوتشدد کی شکار خواتین کی مدد کے لیے خواتین کانگریس کے ذریعے ضلعی سطح پر آزاد سیل قائم کیجیے۔ اس سیل کے ذریعے مظلوم بہنوں کی مدد کے لیے اگر قانونی ماہرین کی تقرری کی جائے تو اس کا خاطر خواہ فائدہ ہوگا۔اس جانب خواتین کانگریس کو توجہ دینی چاہیے۔خواتین کانگریس کی انچارج ایم ایل اے پرینیتی شندے نے کہا کہ خواتین کانگریس کی عہدیداروں کو سوشل میڈیا پر سرگرم رہنا چاہئے۔ ٹویٹر، فیس بک، واٹس ایپ پر اکاؤنٹ کھول کر فعال رہنا چاہیے۔اس آن لائن میٹنگ میں تمام ضلعی اور شہری خواتین صدور نے شرکت کی اورکوویڈ بحران کے دوران ان کے اپنے اپنے علاقے میں کس طرح سے امدادی کام کیے جارہے ہیں، اس کی معلومات دی اور مشکلات سے بھی آگاہ کیا۔ کانگریس کے ریاستی صدر ناناپٹولے نے اس موقع پر تجاویزات اورمشکلات کو غور سے سننے کے بعد انہیں جلد ازجلد حل کرنے کی یقین دہانی کرائی۔