ملکی سطح پر بی جے پی کو للکارنے والے واحد لیڈر راہل گاندھی ہیں

ممبئی:کانگریس پارٹی اور راہل گاندھی گزشتہ 7 سالوں سے مرکز کی بی جے پی حکومت کے خلاف کھڑے ہوکر اپوزیشن کا کردار ادا کررہے ہیں۔ اب جبکہ بی جے پی جیسی علیحدگی پسند طاقتوں کے خلاف لڑنا وقت کی اہم ضرورت ہے توکچھ لوگ ایسا موقف اختیار کر رہے ہیں جس سے بی جے پی کو مددپہنچے۔ 2019 کے انتخابات میں بھی اسی طرح کی کوششیں کی گئی تھیں جس کا فائدہ بی جے پی کو ہوا تھا۔ یہ باتیں آج یہاں مہاراشٹر پردیش کانگریس کمیٹی کے صدر ناناپٹولے نے کہی ہیں۔

میڈیا کے نمائندوں سے بات کرتے ہوئے پٹولے نے کہا ہے کہ بی جے پی کے دور حکومت میں ملک، جمہوریت اور آئین کو خطرہ لاحق ہے۔ سی بی آئی، ای ڈی، انکم ٹیکس جیسی تمام سرکاری ایجنسیوں کے ذریعے اپوزیشن کو ڈرایا جا رہا ہے،لیکن کانگریس ایسے کسی بھی جبر کو خاطر میں نہیں لاتی ہے۔ راہل گاندھی اور پرینکا گاندھی مرکزی حکومت کے ظلم کے خلاف مسلسل جارحانہ انداز میں لڑ رہے ہیں۔ کسان، مزدور، دلت ودیگر محرومین کے ساتھ وہ مضبوطی سے کھڑے ہیں۔ کچھ سیاسی پارٹیاں ای ڈی اور سی بی آئی کی کارروائی کے خوف سے بی جے پی کے خلاف موقف اختیار کر رہی ہیں۔لیکن کانگریس پارٹی سڑکوں پراترکر مرکزی حکومت کے خلاف جدوجہد کررہی ہے۔پٹولے نے کہا کہ اہنکار او رغرور میں مبتلا حکومتوں کو بھی عوامی طاقت کے سامنے گھٹنے ٹیکنے پڑتے ہیں اور یہ بات کسانوں کے آندولن نے دکھا دیا ہے۔ کسانوں کو تباہ کرنے والے تینوں سیاہ زرعی قوانین محض 12 منٹوں میں منسوخ کرنے پڑے۔

مہنگائی، کسانوں، مزدوروں اور عوام کے مسئلہ پر کانگریس کی جدوجہد جاری ہے اور جاری رہے گی۔ عوام کو کانگریس پارٹی پر بھروسہ ہے اور اس بھروسے میں دن بہ دن اضافہ ہوتا جارہا ہے۔ کانگریس پارٹی کو کسی کے بھی سرٹیفکیٹ کی ضرورت نہیں ہے۔ کانگریس پارٹی بی جے پی کے خلاف مضبوطی سے کھڑی ہے نیز دیگر پارٹیاں کس کے ساتھ ہیں؟ یہ ملک کی عوام کو معلوم ہونا چاہئے۔ کانگریس کو علاحدہ رکھ کر کئی اتحاد بنانے کی کوششیں کی گئیں لیکن اس کا فائدہ کس کو ہوتا ہے؟ اس سے ملک کی عوام بخوبی واقف ہے۔ محترمہ سونیاگاندھی اور راہل گاندھی کی قیادت میں کانگریس پارٹی آئندہ بھی بی جے پی کا مقابلہ کرنے کے لئے کافی ہے۔