ایشیا کپ 2018 : ان چار پاکستانی کھلاڑیوں سے ٹیم انڈیا کومحتاط رہنا ہوگا

0 3

پاکستان ایک ایسی ٹیم ہے جس کے بارے میں پہلے سے کچھ بھی اندازہ نہیں لگایا جاسکتا ہے اور یہی بات اس کو ٹیمسب سے خطرناک بھی بناتی ہے۔ ہندوستان اور پاکستان کے درمیان ہونے والے میچ اکثر ہی دلچسپ ہوتے ہیں۔ دونوں ہی ٹیموں کے مداح ایک دوسرے کے خلاف شکست بالکل بھی پسند نہیں کرتے ہیں۔ ساتھ ہی ساتھ جب دونوں ٹیمیں ا?منے سامنے ہوتی ہیں ، تو ہر کھلاڑی ہر حال میں اپنی سب اچھی کارکردگی کا مظاہرہ کرنے کی کوشش کرتا ہے۔ویسے گزشتہ ایک دہائی سے ٹیم انڈیا نے پاکستان کے خلاف یک روزہ کرکٹ میں دبدبہ بناکر رکھا ہے۔ ٹیم انڈیا نے گزشتہ 12 میچوں میں سے سات میں جیت درج کی ہے۔ ایشیا کپ کے ساتھ ٹیم انڈیا اپنے جیت کے سلسلہ کو مزید ا?گے بڑھانا چاہے گی اور ساتھ ہی ساتھ ان کے دماغ چمپئنز ٹرافی کی ہار کا بدلہ لینا بھی ہوگا۔ تاہم غور کرنے والی بات یہ ہے کہ گزشتہ کچھ عرصہ میں پاکستانی ٹیم نے اپنے کھیل میں زبردست اصلاح کیا ہے اور ایسے میں ایشیا کپ میں ٹیم انڈیا کو ان کے چار کھلاڑیوں سے سنبھل کر رہنے کی ضرورت ہے۔
فخر زمان:فخر زمان نے گزشتہ کچھ وقت سے ورلڈ کرکٹ میں اپنی بلے بازی سے تہلکہ مچا رکھا ہے۔ چمپئنز ٹرافی میں ان کی سنچری کو کون بھول سکتا ہے ، جس نے ہندوستانی ٹیم سے خطاب چھیننے میں اہم رول ادا کیا تھا۔ فخر نے حال ہی میں زمبابوے اور ا?سٹریلیا کے خلاف سیریز میں بھی طوفانی بلے بازی کرتے ہوئے دنیا بھر کے گیند بازوں کے کان کھڑے کردئے ہیں۔ ایسے میں ایشیا کپ میں ٹیم انڈیا کو فخر زمان کے خلاف ایک منصوبہ کے تحت اترنے کی ضرورت ہوگی۔
حسن علی:حسن علی پاکستان کی سب سے بہترین تلاش ثابت ہوئے ہیں۔ وہ وکٹ جھٹکنے میں کافی ا?گے بڑھتے نظر ا?رہے ہیں۔ خاص طور پر ا?خری اووروں میں وہ بلے بازوں کو ایک ایک رن کیلئے ترسادیتے ہیں۔ جس طرح سے وہ دھیمی گیندوں کا استعمال کرتے ہیں ، اس سے بلے باز حیران رہ جاتا ہے۔ ٹیم انڈیا کو حسن علی کے خلاف زیادہ ہی احتیاط برتنے کی ضرورت ہوگی۔
یہ بھی پڑھیں : سرفراز احمد کی عدم موجودگی میں یہ بڑا کھلاڑی سنبھال سکتا ہے پاکستانی ٹیم کی قیادت !۔
شعیب ملک:موجودہ پاکستانی ٹیم میں شعیب ملک سب سے تجربہ کار کھلاڑی ہیں۔ وہیں ہندوستان کے خلاف ان کا ریکارڈ بھی کافی اچھا رہا ہے۔ پاکستانی ٹیم سے محمد حفیظ کے باہر جانے کے بعد ٹیم میں تجربہ کی کمی کافی نظر ا?رہی ہے۔ ایسے میں شعیب ملک کے کندھوں پر زیادہ ہی بوجھ ہوگا۔ شعیب ملک کا ہندوستان کے خلاف اوسط 47.75 کا ہے ، جو ان کے کیرئیر اوسط سے کافی زیادہ ہے۔
سرفراز احمد:پاکستانی ٹیم کے کپتان سرفراز احمد دباو میں اچھی بلے بازی کرتے ہیں۔ ساتھ ہی ساتھ وہ ایک چالاک کپتان بھی ہیں۔ ایسے میں روہت شرما کو سرفراز کی حکمت عملی سے بچ کر رہنا ہوگا۔ ساتھ ہی ساتھ انہیںبلے بازی کے دوران بھی ہندوستانی گیند بازوں کو نشانہ بنانا ہوگا۔ سرفراز ابھی تک 90 میچوں میں 34.27 کی اوسط سے 1748 رن بناچکے ہیں۔