Waraqu E Taza Online
Nanded Urdu News Portal - ناندیڑ اردو نیوز پورٹل
Browsing Category

VIRAL TRUTH URDU NEWS

کیا تبلیغی جماعت کے امیر مولانا سعد کاندھلوی نے وزیر اعظم ریلیف فنڈ میں ایک کروڑ روپے کی امداد دی؟ جانیے وائرل پیغام کی سچائی

ایک پوسٹ کے ذریعہ سوشل میڈیا پر یہ دعویٰ کیا گیا ہے کہ مولانا سعد صاحب نے وزیر اعظم کے قومی ریلیف فنڈ میں ₹ 1 کروڑ کا عطیہ کیا ہے۔ پیغام WhatsApp اور دیگر سوشل میڈیا پلیٹ فارمس پر گردش کر رہا ہے جس میں نیوز لیٹر نامی ایک اخبار کی ایک تصویر ہے، اور اس کے پہلے صفحے پر معروف خبریں، شہ سرخی میں لکھا ہے "28 مارچ کو ، مولانا سعد نے 1 کروڑ کی رقم بطور…
Read More...

فیکٹ چیک: وائرل خبر "امیت شاہ کورونا وائرس کیلئے مثبت پائے گئے ؟” لیکن کیا ہے سچائی؟

لوجیکل انڈین فیکٹ چیک ٹیم نے اس دعوے کی جانچ کی کہ کیا واقعی امیت شاہ COVID-19 ٹیسٹ کیلئے مثبت آئے ہیں. وزیر داخلہ امت شاہ کے بارے میں سوشل میڈیا میں وائرل آج تک ٹی وی کے ایک اسکرین شاٹس میں یہ دعوی کیا جارہا ہے کہ "وہ حال ہی میں اٹلی کے دورے پر گئے تھے واپسی پر COVID-19 کے لئے مثبت پائے گئے۔ اس تصویر میں ہندی نیوز چینل آج تک کا لوگو بھی ہے۔ ذیل…
Read More...

حقائق کی جانچ پڑتال: کیا جنوبی افریقی میں چرچ کے پادری نے ‘کورونا وائرس کا علاج کرنے’ کے لئے لوگوں کو Dettol پلایا؟

کینیا ٹوڈے میں شائع ہونے والی ایک رپورٹ کے مطابق ، ماکگوڈو میں واقع ایک روحانی کرسچن چرچ کے جنوبی افریقی پادری روفس پھلا ، لیمپوپوماڈ نے اپنے چرچ کے دوران کورونا وائرس سے بچاؤ کے لئے ایک احتیاطی اقدام کے طور پر ، ان کے وفادار پیروکاروں کو مبینہ طور پر گھریلو جراثیم کش ادویات پینے کے لئے کہا۔ مضمون میں کہا گیا ہے کہ ڈیٹول کے استعمال کے بعد تقریبا…
Read More...

کورونا وائرس: انڈیا میں گائے کے پیشاب سے وائرس کے علاج کے دعووں کی سچائی کیا ہے؟

ریئلیٹی چیک ٹیمبی بی سی نیوز انڈیا میں کورونا وائرس کے تصدیق شدہ کیسز کی تعداد دوسرے ممالک کی بہ نسبت کم ہے مگر اس سے نمٹنے کے لیے دیے جانے والے گمراہ کن مشوروں کی بھرمار ہے۔بی بی سی نیوز نے ایسے چند مشہور مشوروں کی حقیقت پرکھی ہے۔گائے کا پیشاب اور گوبر:ایک زمانے سے انڈیا میں گائے کے پیشاب اور گوبر کو مختلف بیماریوں کے روایتی علاج کے طور پر فروغ…
Read More...

کورونا وائرس اور ہومیوپیتھی: انڈیا کی وزارت کی جانب سے ’کورونا وائرس کے ہومیوپیتھک علاج کے دعوے‘ پر وضاحت

انڈیا میں متبادل طریقۂ علاج کے فروغ کی وزارت ’آیوش‘ نے کہا ہے کہ اس نے کبھی بھی یہ دعویٰ نہیں کیا کہ کورونا وائرس کا ہومیوپیتھی میں علاج ممکن ہے۔ لیکن اس کے باوجود انٹرنیٹ پر اس طرح کے پیغام پھیلائے جا رہے ہیں کہ متبادل طریقۂ علاج سے کورونا وائرس سے نمٹا جا سکتا ہے۔آیوش کی وزارت میں آیوروید، یوگا، نیچروپیتھی، یونانی، سدھ، سووا رگپا اور ہومیوپیتھی…
Read More...