25 نومبر سے پہلے سیکورٹی دیں نہیں تو چھوڑ دیں گے ایودھیا: اقبال انصاری

0 17

ایودھیا ،۱۴ نومبر(پی ایس آئی)ایودھیا میں رام مندر کو لے کر بڑھتی ہوئی ہلچل اور ہندو تنظیموں کے ممکنہ پروگراموں نے بابری مسجد کے مدعی اقبال انصاری کی تشویش بڑھا دی ہیں. انصاری نے 1992 کو یاد کرتے ہوئے کہا ہے کہ اگر 25 نومبر سے پہلے تحفظ نہیں بڑھائی گئی تو وہ ایودھیا سے چلے جائیں گے. انصاری نے 25 نومبر سے پہلے ایودھیا سے جانے کا انتباہ دیتے ہوئے تشویش ظاہر کی ہے. بتا دیں کہ اقبال انصاری بابری مسجد کے مدعی ہیں. انصاری نے بھیڑ کو دیکھتے ہوئے سیکورٹی نہ بڑھانے پر دی انتباہ دی ہے. انہوں نے کہا، ‘1992 میں بھی ایسے ہی بھیڑ بڑھی تھی. کئی مسجدیں توڑ گئی تھیں اور مکان جلائے گئے تھے. ‘ سیکورٹی کا مطالبہ کرتے ہوئے انصاری نے کہا، ‘اگر ایودھیا میں بھیڑ بڑھ رہی ہے تو ہماری اور مسلمانوں کی حفاظت بڑھائی جائے. تحفظ نہیں بڑھائی گئی تو ہم 25 تاریخ سے پہلے ایودھیا چھوڑ دیں گے. غور طلب ہے کہ 25 نومبر کو شوسینا اور وشو ہندو پریشد کے پروگرام میں لاکھوں لوگوں کی بھیڑ جٹنے امکان ظاہر کیا جارہا ہے. اسی کے چلتے اقبال انصاری نے انتظامیہ سے تحفظ کا مطالبہ کیا ہے. آپ کو یہ بھی بتا دیں کہ رام مندر کے معاملے پر سنتوں سے بحث کے لئے شیوسینا چیف ادھو ٹھاکرے بھی ایودھیا پہنچنے والے ہیں. ٹھیک اسی دن وشو ہندو پریشد نے بھی اپنے پروگرام میں لاکھوں کے جٹنے کا دعویٰ کیا ہے.