yosufممبئی:(یواین آئی) ۱۹۹۳ء سلسلہ وار بم دھماکوں کے سزا یافتہ مجرم اور مفرور ملزم ٹائیگر میمن کے چھوٹے بھائی یوسف میمن کی آج ناسک سینٹرل جیل میں حرکت قلب بند ہونے کی وجہ سے موت واقع ہوگئی۔یوسف میمن نفسیاتی مرض میں مبتلا تھا اور سیزوفیرنیا نامی بیماری اسے لا حق ہوئی تھی ممبئی کی ٹاڈا عدالت میں اسے عمر قید کی سزا سنائی تھی جس کے بعد وہ ناسک جیل میں مقید تھا۔

گذشتہ برس سپریم کورٹ نے اسے طبی بنیاد پر چند ماہ کی ضمانت دی تھی جس کے خاتمے کے بعد اسے دوبارہ جیل میں حاضر ہونا پڑا تھا ممبئی میں مقیم میمن خاندان کی پیروی کرنے والی وکیل فرحانہ شاہ نے بتایا کہ یوسف میمن پر ٹاڈا عدالت نے بم دھماکوں کی سازش میں حصہ لینا اور دیگر الزامات کے تحت عمر قید کی سزا سنائی تھی۔ناسک نے پولس کمشنر وسواش ناگرے پاٹل نے یوسف میمن کی موت کی تصدیق کی ہے اور کہا ہے کہ اس کی لاش کو دھولیہ میں پوسٹ مارٹم کیلئے روانہ کیا جائے گا تاکہ موت کا پتہ لگ سکے۔

یوسف میمن کے ایک بڑے بھائی  عقوب    میمن کو ۲۰۱۵ میں پھانسی کی سزا دی گئی تھی اور ناگپور سنٹرل جیل میں تختہ دار پر لٹکانے کے بعد ان کی تدفین ممبئی کے مرین لائن قبرستان میں عمل میں آئی تھی۔
ذرائع کا کہنا ہے کہ یوسف میمن کی تدفین بھی اسی قبرستان میں عمل میں آئے گی اور اسکے لئے اس کے چند رشتہ دار ناسک جیل حکام سے رابطہ قائم کئے ہوئے ہے کہ کسی طرح سے پوسٹ مارٹم کے بعد اس کی لاش کو ممبئی لایا جائے تاکہ ممبئی میں تدفین عمل میں آسکے۔
واضح رہے کہ بابری مسجد کی شہادت اور اسکے بعد ممبئی میں ہوئے فرقہ وارانہ فسادات کے بعد ۱۲ مارچ ۱۹۹۳ کو ممبئی پورے ۱۲ مقامات پر سلسلہ وار بم دھماکے ہوئے تھے جس میں ۳۱۵؍ افراد ہلاک ہوئے تھے اس سینکڑوں افراد زخمی ہوئے تھے جبکہ کروڑوں کی جائدادتیں تباہ ہوئی تھیں۔ممبئی کے اسٹاک ایکسچینج ، پاسپورٹ آفس ، سیوشینا بھون کے قریب پیٹرول پمپ ، زویری بازار، سی راک ہوٹل باندرہ اور دیگر میں ہوئے ان دھماکوں کی سازش دبئی میں رچی گئی تھی اور اس وقت یہ دنیا کا سب سے بڑا دہشت گردانہ حملہ تھا۔یو۔ این۔ آئی ۔الف۔الف۔الف


4 thoughts on “  ۱۹۹۳ بم دھماکوں کا سزایافتہ مجرم یوسف میمن کی ناسک جیل میں موت”

Comments are closed.