• 425
    Shares

سرکار دوعالم صلی اللہ تعالی علیہ وسلم کو ختم المرسلین نہ ماننے والا کھلا ہوا کافر و مرتد ہے. (محمد سعید نوری)

ممبئی: (بذریعہ ای میل) / یکم ستمبر 2021ء کو رضا اکیڈمی کے دفتر میں محافظِ ناموسِ رسالت، حضرت مولانا الحاج محمد سعید نوری، بانیِ رضا اکیڈمی کی قیادت میں "ہفتہء تحفظِ ختم نبوت” کا آغاز کردیا گیا ہے، اس موقع پر قائدِ اہلسنت، الحاج محمد سعید نوری نے کہا کہ ہمارے اکابرین کے علاوہ بھی تمام مکاتب فکر کے علماء نے مرزا غلام احمدقادیانی کو اس کے غیر اسلامی نظریات کی بنا پر اس کی زندگی میں ہی اسے کافر و مرتد قرار دے دیا تھا، چونکہ اسلام و قرآن کا مسلّمہ اعلان ہے کہ پیغمبرِ اسلام حضرت محمد صلی اللہ علیہ وسلم ،اللہ کے آخری نبی اور رسول ہیں اور آپ کے بعد کوئی نبی نہیں آنے والا، اور آپ کے بعد اگر کوئی بھی شخص کسی کو نبی مانے یا خود نبوت کا اعلان کرے تو ایسا شخص دائرہء اسلام سے خارج ہوجاتا ہے.

مرزا غلام احمد قادیانی ایک ایسا ہی بدبخت شخص تھا جس نے مسلّم اسلامی اعلان اور قرآنی فرمان کے باوجود نبوت کا دعوٰی کیا اور کافر و مرتد قرار پایا. اسی لیے علمائے اسلام اور مسلمانانِ عالم نے اس مردود کے غیر اسلامی دعوے سے مسلمانوں کے دین و ایمان کو بچانے کے جتن کئے. علمائے اسلام اور مسلمانان عالم کی انہی کوششوں کے سبب مرزا غلام احمد قادیانی اور اس کے ماننے والوں کو 7 ستمبر 1974ء کو باضابطہ طور پر حکومتی سطح پر "غیر مسلم” قرار دیا گیا تھا.

مرزا غلام احمد قادیانی اور اس کے ماننے والوں کو دنیاوی سطح پر بھی غیر مسلم قرار دئے جانے کی اس تحریک سے متعلق، بانیِ رضا اکیڈمی الحاج محمد سعید نوری نے مزید بتایا کہ ہمارے بزرگوں نے بڑی قربانیاں دے کر اس قانون کو آج سے 47 سال پہلے منظور کروایا تھا، اسی لیے رضا اکیڈمی نے اعلام کیا ہے کہ ایک ستمبر سے سات ستمبر تک ہفتہ "تحفظِ ختمِ نبوت ہفتہ” منایا جائے. جس کا باقاعدہ آغاز یکم ستمبر کو قائدِ اہلسنت، الحاج محمد سعید نوری نے کرکے پوری دنیا کے عاشقانِ تحفظِ ختمِ نبوت کو پیغام دیا ہے کہ اس ایک ہفتے کے دوران ہندوستان سمیت دنیا بھر کے مسلمان مسلسل "تحفظِ ختم نبوت” کے عنوان سے محافل و اجلاس اور مختلف پروگراموں کا انعقاد کریں. اپنے اداروں، انجمنوں، مدرسوں اور مسجدوں اس طرح کی تقریبات کا انعقاد کرکے قادیانیت کے غیر اسلامی ہونے اور اس سے اپنے آپ کو، اپنی اہل و عیال کو بچانے کا جتن کریں. مسلمان بچے بچے کے ذہن میں اس بات کو پختہ کریں کہ قادیانیوں کو جو مسلمان مانے وہ بھی انہیں کی طرح کافر و مرتد ہوکر دین سے نکل جاتا ہے اور جو کوئی حضور کے آخری نبی ہونے کا کسی بھی طرح انکار کرے یا آخری نبی ہونے پر ذرہ برابر شک و شبہ کرے وہ بھی انہیں کے زمرے میں قرار دیا جائے گا.
اس ضمن میں "تحفظِ ختمِ نبوت ہفتہ” کے تحت رضا اکیڈمی کے ممبئی دفتر میں افتتاحی مجلس میں مولانا امان اللہ رضا (خطیب وامام قبا مسجد مدنپورہ ممبئی) نے تفصیل کے ساتھ فلسفہء تحفظِ ختمِ نبوت و رسالتﷺ پر گفتگو کرتے ہوے کہا کہ ہمارے نبی کریم صلی اللہ علیہ وسلم سراپا معجزہ ہیں مگر سرکارکے معجزاتِ میں سے ایک معجزہ خاتم النبیین ہونا بھی ہے، جس کا ذکر اللہ جل شانہ نے قرآن مقدس میں بہت واضح طور پر فرمایا ہے اور اس ضمن میں رسول مکرم صلی اللہ علیہ وسلم کے متعدد فرمودات بھی موجود ہیں. مولانا خلیل الرحمن نوری نے کہا کہ زمانہء رسالت سے ہی کذّاب اور جھوٹے نبوت کے دعوے دار پیدا ہوتے رہے ہیں اور آگے بھی پیدا ہوتے رہیں گے. ہر دور میں ان کی سرکوبی ہوتی رہی ہے اور آگے بھی ہوتی رہے گی. رضا اکیڈمی نے عالم اسلام سے "ہفتہء تحفظِ ختمِ نبوت” منانے کا اعلان کیا ہے. چودھویں صدی کے مجدد اعظم، سیدنا اعلی حضرت فاضل بریلوی اور حضرت سید پیر جماعت علی شاہ محدث علی پوری اور دیگر علماے اہلسنت نے مرتد مرزا غلام احمد قادیانی کی رد میں متعدد رسالے تحریر فرمائے ہیں. امام احمد رضا خان فاضلِ بریلوی نے واضح انداز میں فرمایا ہے ~

ورق تازہ نیوز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں  https://t.me/waraquetazaonlineاور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔