نئی دہلی ، 15 جنوری (یو این آئی) حکومت اس سال یکم اکتوبر کے بعد تیار کی جانے والی آٹھ سیٹوں والی گاڑیوں میں حفاظت کے لیے مناسب جگہوں پر مناسب تعداد میں ایئر بیگز لگانے کو لازمی بنانا چاہتی ہے ۔اس حوالے سے جاری کردہ نوٹیفکیشن کے مسودے کے مطابق ایم 1زمرے کی گاڑیوں میں ٹو سائیڈ/ ٹو سائیڈ ٹورسو ایئر بیگ اور ٹو سائیڈ کارٹن/ ٹیوب ایئر بیگ لگانا ضروری ہو گا ۔

روڈ ٹرانسپورٹ اورہائی ویزکی وزارت نے ایم1 زمرے کی گاڑیوں میں ڈرائیور ایئر بیگ ڈرائیوروں کی حفاظت کے لئے لازمی قرار دیا گیا ہے۔ جو گاڑیاں یکم جولائی 2019 کو اور اس کے بعد تیار کی گئی ہیں ۔ ایئربیگ حادثہ ہونے کی صورت میں ڈرائیور اور گاڑی کے سامنے والے حصے کے درمیان غبارے کی طرح پھول کر ڈرائیور کو شدید طور پر زخمی ہونے سے بچاتا ہے۔
اس کے بعد وزارت نے 1 زمرے کی گاڑیوں میں کو ڈرائیور سیٹ کی سواری کی حفاظت کے لئے فرنٹ ایئر بیگ لگوانے کا حکم یکم جنوری 2022 سے نا فذ ہوگا ۔

گاڑی میں سوار افراد کی خوفناک ٹکر سے بچاؤ کے لیے سینٹرل موٹر وہیکل رولز 1989 میں ترمیم کرکے اس میں دی گئی حفاظتی شرائط میں اضافہ کرنے کا فیصلہ لیا گیا ہے ۔جمعہ کو جاری کردہ تازہ ترین نوٹیفکیشن کے مسودے کے مطابق ایم 1 زمرے کی گاڑیوں کے لئے یہ لازمی قرار دیا گیا ہے کہ یکم اکتوبر 2022 کے بعد تیار کی جانے والی تمام مسافر گاڑیوں میں دو سائیڈ/ سائٹ ٹورسو ایئر بیگ اور دو سائیڈ کارٹن/ٹیوب ایئر بیگ لگائے جائیں ۔ اس طرح آگے اور پچھلے دونوں کمپارٹمنٹس میں بیٹھے لوگوں کے آگے اور پیچھے سے ہونی والی ٹکر کے اثرات کو کم کیا جائے گا۔

ورق تازہ نیوز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں  https://t.me/waraquetazaonlineاور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔ 


اپنی رائے یہاں لکھیں