ماسکو / کیف: یوکرین کے ساتھ جنگ کے درمیان روس نے بڑا دعویٰ کیا ہے۔ دعوے کے مطابق یوکرین نے کیف، چرنیہیو، سومی، خارکیف اور ماریوپول شہروں سے ملکی اور غیر ملکی شہریوں کو نکالنے کے لیے ماسکو سے 10 کوریڈور کھولے ہیں، جن میں ہر شہر سے ایک کوریڈور شامل ہے۔ دوسری جانب روس نے یہ الزام لگایا ہے کہ یوکرین نے مختلف ممالک کے 7 ہزار کے قریب افراد کو یرغمال بنا رکھا ہے جب کہ 70 بحری جہاز بندرگاہوں پر پھنسے ہوئے ہیں۔

روس نے ایک بیان میں دعویٰ کیا کہ پولینڈ، مالڈووا اور رومانیہ کے مغرب میں کیف حکام کے زیر کنٹرول علاقوں میں ایک راہداری بنائی جا رہی ہے۔ روسی سفارت خانے نے کہا کہ "ہم نے جن دس راستوں کی تجویز پیش کی ہے، ان میں سے یوکرین کے باشندوں نے صرف دو پر اتفاق کیا ہے، جن میں کیف اور ماریوپول شامل ہیں”۔

کیف میں حکام نے مزید چار شہروں ازیم، اینرگوڈار، ولوناخا اور زائیٹومیر کی سمتوں میں چار راستوں کو کھولنے کا اعلان کیا ہے۔ روس کے بیان میں مزید کہا گیا ہے کہ ’’صرف گزشتہ 24 گھنٹوں کے دوران مزید 23,127 افراد نے روس میں پناہ لی ہے اور ان میں سے 26,19,026 پہلے ہی یوکرین کی تقریباً 2,000 بستیوں میں رہ رہے ہیں۔‘‘

رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ ’’3,562 بچوں سمیت 34,555 لوگوں کو یوکرین کے مختلف علاقوں کے ساتھ ساتھ لوگانسک اور ڈونسک کی جانب سے، یوکرین کی شراکت داری کے بغیر 2،23،000 سے زیادہ لوگوں کو فوجی کارروائی کے بعد سے نکالا گیا ہے۔ جن میں سے 50,258 بچے شامل تھے۔‘‘