یمن کے صوبے تعز میں ایک دولہا کو شادی کی پہلی رات جیل میں گزارنا پڑی۔ مذکورہ شخص نے اپنی دلہن کو غسل خانے میں بند کر دیا تھا جس پر اس نے چیخ پکار شروع کر دی۔ سکیورٹی اہل کاروں نے اُس ہوٹل پر چھاپا مارا جہاں یہ جوڑا مقیم تھا اور دولہا کو پکڑ کر تھانے لے گئے۔ یہ واقعہ التربہ کے علاقے میں پیش آیا۔

رہائی کے بعد یمنی شہری سکیورٹی اہل کاروں کے خلاف مقدمہ دائر کر دیا ہے جنہوں نے ہوٹل کے کمرے کا دروازہ توڑا اور اندر داخل ہو گئے۔ یمنی شہری کے مطابق اہل کار اس کا بیگ چھین کر لے گئے جس میں 19 ہزار یمنی ریال موجود تھے۔

تفصیلات کے مطابق یمنی شہری کی یہ دوسری بیگم ہے جس کے ساتھ وہ ہنی مون کے لیے مذکورہ ہوٹل میں مقیم تھا۔ سیکورٹی اہل کار جب ہوٹل کے کمرے میں داخل ہوئے تو یمنی شہری گہری نیند میں سویا پڑا تھا جب کہ غسل خانے میں بند اس کی بیوی مدد کے واسطے چلّا رہی تھی۔

عینی شاہدین کے مطابق پولیس انسپکٹر نے ہوٹل کے کمرے کی تلاشی لی تو دولہا کی الماری سے شراب کی ایک بوتل برآمد ہوئی۔

دولہا اور دلہن کو استغاثہ کے سامنے پیش کیا گیا جس نے قانونی کارروائی کے لیے مطلوب مجرمانہ مقدمے کی بنیاد نہ ہونے پر دونوں افراد کو رہا کر دیا۔