ممبئی: کورونا وائرس کے دور میں ہولی کا تہوار ملک بھر میں جوش و خروش کے ساتھ منایا جا رہا ہے۔ وبا کے موقع پر حکومت کی طرف سے لوگوں سے اپیل کی گئی تھی کہ وہ تمام احتیاطی تدابیر کی پیروی کرتے ہوئے تہوار منائیں۔ اس موقع پر اکشے کمار نے بھی لوگوں سے ایک اپیل کی تھی، تاہم اس پر انہیں سوشل میڈیا پر ٹرول کیا جا رہا ہے، یہاں تک کہ ان کے خلاف ’بائیکاٹ اکشے کمار‘ کا ہیش ٹیگ تک استعمال کیا جا رہا ہے۔

دراصل اکشے کمار نے ہندووں کے بڑے تہواروں میں سے ایک ہولی کے تعلق سے ٹوئٹ کر کے لوگوں سے اپیل کی تھی کہ وہ اس مرتبہ ہولی اپنے گھر پر ہی کھیلیں۔ اس کے بعد انہوں نے اپنی بیٹی کے ساتھ ہولی مناتے ہوئے تصویر ٹوئٹر پر شیئر کر دی۔ بس پھر کیا تھا، سوشل میڈیا پر ان کے خلاف چہار سو سے حملے کیے جانے لگے۔

اکشے کمار نے ٹوئٹر پر لکھا، ’’مجھ پر ایک احسان کریں، چلیے اس مرتبہ ہولی نہیں کھیلتے! اپنی حفاظت اور اپنے پیاروں کی حفاظت کے لئے اس تہوار کر گھر پر ہی منائیں۔ ہاتھ جوڑ کر آپ سب کو ہولی مبارک۔‘‘

اس ٹوئٹ کے بعد اکشے کمار نے ایک اور ٹوئٹ میں اپنی بیٹی نیتارا کے ساتھ ایک تصویر شیئر کی۔ اس تصویر میں دونوں کے چہرے رنگوں میں شرابور نظر آ رہے ہیں۔ اکشے کمار نے اس ٹوئٹ میں لکھا، ’’آپ ان لوگوں کے ساتھ منائے گئے جشن سے زیادہ لطف اندوز اور کہیں نہیں ہو سکتے، جو آپ کی زندگی کا حصہ ہیں۔‘‘ ایک طرف جہاں کچھ مداحوں نے اکشے کمار کو ہولی کی مبارک باد پیش کی، وہیں سوشل میڈیا پر ایک گروپ نے انہیں ٹرول کرنا شروع کر دیا۔