نئی دہلی : مرکزی وزیر برائے اقلیتی امور مختار عباس نقوی نے جمعہ کے روز کہا کہ ‘ہنر ہاٹ’ ہنر کی شناخت سودیشی کی شان کا پرفیکٹ اورمقبول عام پلیٹ فارم ہے ۔ملک بھر میں ہنرمندوں کے 28 ویں ہنر ہاٹ کا انعقاد 26 مارچ سے 4 اپریل تک کلا اکیڈمی ، کیمپل ، پنجی (گوا) میں کیا جارہا ہے ۔اس‘ہنر ہاٹ’ کا باضابطہ افتتاح کل 27 مارچ کو اقلیتی امور کے مرکزی وزیر مختار عباس نقوی اور گوا کے وزیراعلی ڈاکٹرپرمود ساونت کے ہاتھوں کلا اکیڈمی، کیمپل، پنجی میں ہوگا۔اس موقع پر مرکزی وزیر شریپڈ نائک ، راجیہ سبھا کے رکن ونئے دینو تندولکر ، رکن پارلیمنٹ فرانسسکو سرڈنھا ، گوا کے نائب وزیر اعلی چندرکانت کاؤلیکر ، اقلیتی امور کی وزارت کے سکریٹری پی کے ۔ داس ، سینئر ایڈیشنل سکریٹری ایس کے کے دیو برمن ، چیئرمین پی کے ٹھاکر اور دیگر معززین شریک ہوں گے ۔مرکزی وزارت اقلیتی امور کے زیراہتمام 4 اپریل تک ‘ووکل فار لوکل’ تھیم کے ساتھ پنجی میں منعقد اس ‘ہنر ہاٹ’ میں 30 سے زائد ریاستوں کے 500 سے زائد کاریگر ، مجسمہ ساز، دستکار اور فنکار اپنے شاندار دیسی ساختہ مصنوعات کی نمائش اور اسے فروخت کرنے کے لئے آئے ہیں۔یہ کاریگراور فنکار اپنے پنجی،گوا کے پنر ہاٹ میں آندھرا پردیش ، آسام ، بہار ، چنڈی گڑھ ، دہلی ، گوا ، گجرات ، جھارکھنڈ ، کرناٹک ، مدھیہ پردیش ، مہاراشٹر ، منی پور ، میگھالیہ ، ناگالینڈ ، اوڈیشہ ، پڈوچیری ، پنجاب ، راجستھان ، سکم ، تمل ناڈو ، تری پورہ ،اترپردیش، اتراکھنڈ ،مغربی بنگال وغیرہ سے پنجی کے اس ‘ہنر ہاٹ’ میں شامل ہوئے ہیں ۔ یہ کاریگر ، دستکار ، مجسمہ ساز اور فن کار اپنے ساتھ قلمکاری ، بیدری ویئر ، ادیے گری، ووڈن کٹلری ، بینت – بانس-جوٹ سے تیار مصنوعات ، مدھوبانی پینٹنگ ، مونگا ریشم ، تسار سلک ، چرمی مصنوعات ، سنگ مرمر کی مصنوعات ، چندن کی لکڑی کی مصنوعات ،ایمبرائیڈری ، چندیری ساڑی ، بلیک پاٹری ، کندن کے گہنے ، شیشے سے تیار مصنوعات ، لکڑی ،مٹی سے تیار کھلونے ، پیتل کی مصنوعات ، ٹیراکوٹا پاٹری ، ہینڈلوم وغیرہ کے شاندار سودیشی مصنوعات لیکر آئے ہیں۔


اپنی رائے یہاں لکھیں