ہندوستانی خاتون ٹیم نے سری لنکا کو ہرا کر لگایا جیت کا چوکا

0 6

میلبورن: سیمی فائنل میں پہنچ چکی ہندوستانی خاتون ٹیم نے اپنا شاندار مظاہرہ جاری رکھتے ہوئے لیفٹ آرم اسپنر رادھا یادو (23 رن پر چار وکٹ) کی خطرناک گیند بازی اور نوجوان اوپنر شیفالی ورما (47) کی دھماکہ خیز اننگز کی بدولت سری لنکا کو ہفتہ کو سات وکٹ سے ہرا کر آئی سی سی خواتین ٹی -20 ورلڈ کپ میں جیت کا چوکا لگا دیا۔ رادھا یادو کی خطرناک گیند بازی سے ہندوستان نے سری لنکا کو 20 اوور میں نو وکٹ پر 113 رن پر روک دیا۔ ہندوستان نے 14.4 اوور میں تین وکٹ پر 116 رنز بنا کر یکطرفہ کامیابی حاصل کر لی۔ رادھا کو پلیئر آف دی میچ کا ایوارڈ ملا۔

16 سال کی نوجوان اوپنر شیفالی ورما نے ایک اور دھماکہ خیز اننگز کھیلتے ہوئے صرف 34 گیندوں پر سات چوكوں اور ایک چھکے کی مدد سے شاندار 47 رن بنائے اور ہندوستان نے 32 گیند باقی رہتے میچ ختم کر دیا۔ ہندوستان نے اس سے پہلے گزشتہ چمپئن آسٹریلیا، بنگلہ دیش اور نیوزی لینڈ کو شکست دی تھی۔ہندوستان کی یہ مسلسل چوتھی جیت رہی اور وہ آٹھ پوائنٹس کے ساتھ گروپ اے میں سب سے اوپر مقام پر ہے۔ ہندوستان کا سیمی فائنل میں گروپ بی کی دوسرے نمبر کی ٹیم کے ساتھ مقابلہ ہوگا۔ ہندوستان کے گروپ اے میں دوسرے نمبر کی ٹیم کے لئے آسٹریلیا اور نیوزی لینڈ کے درمیان مقابلہ ہے۔ دونوں کے تین تین میچوں سے 4-4 پوائنٹس ہیں۔

دن کے دوسرے میچ میں نیوزی لینڈ نے بنگلہ دیش کو 17 رنز سے شکست دے کر اپنی سیمی فائنل توقعات کو برقرار رکھا۔ بنگلہ دیش مسلسل تیسری شکست کے ساتھ جلدی باہر ہو گیا۔ اس گروپ سے سری لنکا کی ٹیم بھی مسلسل تین میچ ہار کر دوڑ سے باہر ہو چکی ہے۔ 16 سال کی شیفالی نے اس ورلڈ کپ میں چار میچوں میں اب تک 29، 39، 46 اور 47 رن بنائے ہیں۔ اس نوجوان بلے باز کی بلے بازی کا عالم یہ ہے کہ وہ شروع میں اتنی تیز بلے بازی کرتی ہیں کہ بعد کی بلے بازوں کے لئے بھی کام آسان ہو جاتا ہے۔ اس میچ میں بھی انہوں نے اپنے 47 رنز میں 34 رن باؤنڈری سے نکالے جو خواتین کرکٹ میں بہت کم دیکھنے میں آتا ہے۔

شیفالی نے سمرتی مندھانا کے ساتھ پہلے وکٹ کے لئے 34 رن کی ساجھیداری کی جس میں مندھانا کی شراکت 17 رنز تھی۔ مندھانا نے 12 گیندوں میں تین چوکے لگائے۔ شیفالی نے پھر کپتان هرمنپريت کور کے ساتھ دوسرے وکٹ کے لئے 47 رن جوڑے۔ کپتان هرمنپريت کی خراب فارم اس میچ میں بھی جاری رہی اور 14 گیندوں میں دو چوکوں اور ایک چھکے کی مدد سے 15 رنز بنا کر آؤٹ ہو گئیں۔ ہرمن کا وکٹ 81 اور شیفالی کا وکٹ 88 کے اسکور پر گرا۔ جمیمہ روڈرگس نے 15 گیندوں پر ناٹ آوٹ 15 اور دپتی شرما نے 13 گیندوں میں ناٹ آؤٹ 15 رنز بنا کر ہندوستان کو جیت کی منزل پر پہنچا دیا۔

اس سے پہلے رادھا یادو نے چار اوور میں 23 رن پر چار وکٹ اور راجیشوری گايكواڈ نے 18 رن پر دو وکٹ لے کر سری لنکا کو 113 رن پر ہی روک دیا۔ دپتی شرما، شکھا پانڈے اور پونم یادو کو ایک ایک وکٹ ملا۔ سری لنکا کی جانب سے اوپنر اور کپتان چامری اٹاپٹو نے 24 گیندوں میں 33 اور كوشا دلهاری نے 16 گیندوں میں ناٹ آوٹ 25 رن بنائے۔

نیوزی لینڈ کی امیدیں قائم:
میلبورن میں نیوزی لینڈ نے بنگلہ دیش کو چھوٹے اسکور والے میچ میں 17 رنز سے شکست دے کر سیمی فائنل کی اپنی توقعات کو برقرار رکھا۔ نیوزی لینڈ کی ٹیم اگرچہ 18.2 میں 91 رن پر سمٹ گئی گئی لیکن اس نے بنگلہ دیش کو 19.5 اوور میں محض 74 رنز پر ڈھیر کر دیا۔ نیوزی لینڈ کی اننگز میں اوپنر راہیل پريسٹ نے 32 گیندوں پر 25 رن، سوجی بیٹس نے 15، کپتان سوفی ڈیوائین نے 12 اور میڈی گرین نے 11 رن بنائے۔ نیوزی لینڈ نے اپنے آخری آٹھ وکٹ صرف 25 رن جوڑ کر گنوائے۔

بنگلہ دیش کی جانب سے ریتو مونی نے 18 رن پر چار وکٹ اور کپتان سلمی خاتون نے سات رن پر تین وکٹ لئے۔ بنگلہ دیش کی اننگز میں نگار سلطانہ نے سب سے زیادہ 21 رن بنائے جبکہ مرشدہ خاتون 11 اور ریتو مونی 10 دھائی کے ہند سے میں پہنچنے والی دو دیگر بلے باز رہیں۔ نیوزی لینڈ کی جانب سے لیگ كیسپیریك نے 23 رن پر تین وکٹ اور ہیلی جینسن نے 11 رن پر تین وکٹ لئے۔ جینسن کے لیے پلیئر آف دی میچ کا ایوارڈ ملا۔

یہ ایک سینڈیکیٹیڈ فیڈ ہے ادارہ نے اس میں کوئی ترمیم نہیں کی ہے. – بشکریہ قومی آواز بیورو