ہجوم نے جانوروں کی چوری کے شک میں 55سالہ کابل کوپیٹ پیٹ کر مار ڈالا

0 14

پٹنہ ، 3 جنوری. (پی ایس آئی) بہار کے ارریہ ضلع میں ایک بزرگ کو پیٹ پیٹ کر قتل کر دینے کا معاملہ سامنے آیا ہے . ارریہ (اراریہ) ضلع کے سکٹی تھانہ علاقہ کے سمربنی گاو¿ں میں ہفتہ یہ واقعہ ہوا. جہاں رات میں تقریباً 300 لوگوں کی بھیڑ نے جانوروں چوری کے شک میں 55 سال کے بزرگ کابل کو پیٹ پیٹ کر قتل کر دیا. شکار کابل پاس کے ہی گاو¿ں کا رہنے والا تھا. بھیڑ کی طرف سے کابل کو مارے جانے کا ویڈیو بھی وائرل ہوا ہے. اس میں کابل بھیڑ سے جان کی بھیک مانگ رہا ہے. لیکن بھیڑ میں سے کسی کا بھی دل نہیں پسیجا. بھیڑ اس وقت تک مارتی رہی، جب تک اس کی جان نہیں چلی گئی. ویڈیو میں دیکھا جا سکتا ہے کہ بھیڑ اس کے چہرے پر ڈنڈوں سے وار کر رہا ہے اور چور کہہ رہے ہیں.

حملہ آوروں کی قیادت کر رہا مسلم میاں نام کا نوجوان ہنستا بھیڑ کو حملے کے لئے اکسا رہا ہے. بھیڑ نے بزرگ کی پتلون بھی نکال دی تھی. ویڈیو میں بہت حملہ آوروں کے چہرے صاف نظر آ رہے ہیں، لیکن پولیس نے ان میں سے ابھی تک کسی کو گرفتار نہیں کیا ہے. گاو¿ں کے سابق وزیر کابل ٹوٹی ہوئی آواز میں بھیڑ کو کہہ رہا ہے کہ اس نے جانوروں چوری نہیں کی ہے، لیکن اس کی کوئی بات نہیں سنی گئی. مسلم میاں نے پہلے بھی کابل کے خلاف جانوروں چوری کا معاملہ درج کروایا تھا. پولیس کو معاملے کی معلومات دو دن بعد تب ملی، جب ویڈیو وائرل ہو گئے. ارریہ کے ایس ڈی پی او کے پی سنگھ نے کہا کہ حملہ آور مقتول کے جانکار تھے اور یہ سب ایک ہی کمیونٹی سے تعلق رکھنے والے تھے. نامعلوم افراد کے خلاف ایف آئی آر درج کر لی گئی ہے اور اہم ملزم کی تلاش کی جا رہی ہے. ایونٹ کا ویڈیو وائرل ہونے کے بعد پورے علاقے میں کشیدگی کا ماحول ہے، لوگوں میں غصہ ہے. ساتھ ہی ارریہ ایس ڈی پی او نے بتایا کہ واقعہ کی ویڈیو پولیس کو بھی ملی ہے، پولیس ویڈیوز کی تحقیقات کر رہی ہے. پولیس ہر نقطہ سے معاملے کی تحقیقات کر رہی ہے. ساتھ ہی بتایا کہ مرحوم کابل مجرم رجحان کا تھا، اس کے گھر سے پولیس نے گزشتہ ماہ ہی نیپال سے لوٹی ہوئی رائفل برآمد کی بہار میں موب لچنگ کے واقعات کو لے کر سابق نائب وزیر اعلی اور آر جے ڈی لیڈر تیجسوی یادو نے نتیش کمار کی حکومت پر نشانہ لگایا ہے. انہوں نے حکومت پر نشانہ لگاتے ہوئے ٹویٹ کیا ہے. بتا دیں، حال ہی میں بہار کے سیتامڑھی میں 82 سالہ بزرگ کو بھیڑ کی طرف سے قتل (موب لچنگ) کرنے کا معاملہ سامنے آیا تھا. جس کو لے کر اپوزیشن جماعتوں نے نتیش کمار کی حکومت کو نشانے پر لیا تھا. سیتامڑھی تشدد میں انمادی بھیڑ نے پہلے بزرگ زینل انصاری کا گلا رےتا اور اس کے بعد چوک پر زندہ جلا دیا تھا.

خاندان کو اس واقعہ کا پتہ تین دن بعد چل پایا. دراصل، تشدد کے دوران سیتامڑھی میں انٹرنیٹ سروس بند کر دی گئی تھی، لیکن قتل کے تین دن بعد جب ایک گھنٹے کے لئے انٹرنیٹ سروس بحال کی گئی تب زینل انصاری کے اہل خانہ کو ایک وائرل فوٹو ملا، جو ان کے قتل کا تھا. انتظامیہ کے دباو¿ کی وجہ سے زینل انصاری کے اہل خانہ کو ان کی لاش آبائی گاو¿ں سے 75 کلومیٹر دور مظفرپور میں تدفین کرناپڑی تھی.

ارریہ (اراریہ) ضلع کے سکٹی تھانہ علاقہ کے سمربنی گاو¿ں میں ہفتہ یہ واقعہ ہوا. جہاں رات میں تقریباً 300 لوگوں کی بھیڑ نے جانوروں چوری کے شک میں 55 سال کے بزرگ کابل کو پیٹ پیٹ کر قتل کر دیا. شکار کابل پاس کے ہی گاو¿ں کا رہنے والا تھا. بھیڑ کی طرف سے کابل کو مارے جانے کا ویڈیو بھی وائرل ہوا ہے. اس میں کابل بھیڑ سے جان کی بھیک مانگ رہا ہے. لیکن بھیڑ میں سے کسی کا بھی دل نہیں پسیجا. بھیڑ اس وقت تک مارتی رہی، جب تک اس کی جان نہیں چلی گئی. ویڈیو میں دیکھا جا سکتا ہے کہ بھیڑ اس کے چہرے پر ڈنڈوں سے وار کر رہا ہے اور چور کہہ رہے ہیں.

حملہ آوروں کی قیادت کر رہا مسلم میاں نام کا نوجوان ہنستا بھیڑ کو حملے کے لئے اکسا رہا ہے. بھیڑ نے بزرگ کی پتلون بھی نکال دی تھی. ویڈیو میں بہت حملہ آوروں کے چہرے صاف نظر آ رہے ہیں، لیکن پولیس نے ان میں سے ابھی تک کسی کو گرفتار نہیں کیا ہے. گاو¿ں کے سابق وزیر کابل ٹوٹی ہوئی آواز میں بھیڑ کو کہہ رہا ہے کہ اس نے جانوروں چوری نہیں کی ہے، لیکن اس کی کوئی بات نہیں سنی گئی. مسلم میاں نے پہلے بھی کابل کے خلاف جانوروں چوری کا معاملہ درج کروایا تھا. پولیس کو معاملے کی معلومات دو دن بعد تب ملی، جب ویڈیو وائرل ہو گئے. ارریہ کے ایس ڈی پی او کے پی سنگھ نے کہا کہ حملہ آور مقتول کے جانکار تھے اور یہ سب ایک ہی کمیونٹی سے تعلق رکھنے والے تھے. نامعلوم افراد کے خلاف ایف آئی آر درج کر لی گئی ہے اور اہم ملزم کی تلاش کی جا رہی ہے. ایونٹ کا ویڈیو وائرل ہونے کے بعد پورے علاقے میں کشیدگی کا ماحول ہے، لوگوں میں غصہ ہے. ساتھ ہی ارریہ ایس ڈی پی او نے بتایا کہ واقعہ کی ویڈیو پولیس کو بھی ملی ہے، پولیس ویڈیوز کی تحقیقات کر رہی ہے. پولیس ہر نقطہ سے معاملے کی تحقیقات کر رہی ہے. ساتھ ہی بتایا کہ مرحوم کابل مجرم رجحان کا تھا، اس کے گھر سے پولیس نے گزشتہ ماہ ہی نیپال سے لوٹی ہوئی رائفل برآمد کی بہار میں موب لچنگ کے واقعات کو لے کر سابق نائب وزیر اعلی اور آر جے ڈی لیڈر تیجسوی یادو نے نتیش کمار کی حکومت پر نشانہ لگایا ہے. انہوں نے حکومت پر نشانہ لگاتے ہوئے ٹویٹ کیا ہے. بتا دیں، حال ہی میں بہار کے سیتامڑھی میں 82 سالہ بزرگ کو بھیڑ کی طرف سے قتل (موب لچنگ) کرنے کا معاملہ سامنے آیا تھا. جس کو لے کر اپوزیشن جماعتوں نے نتیش کمار کی حکومت کو نشانے پر لیا تھا. سیتامڑھی تشدد میں انمادی بھیڑ نے پہلے بزرگ زینل انصاری کا گلا رےتا اور اس کے بعد چوک پر زندہ جلا دیا تھا.

خاندان کو اس واقعہ کا پتہ تین دن بعد چل پایا. دراصل، تشدد کے دوران سیتامڑھی میں انٹرنیٹ سروس بند کر دی گئی تھی، لیکن قتل کے تین دن بعد جب ایک گھنٹے کے لئے انٹرنیٹ سروس بحال کی گئی تب زینل انصاری کے اہل خانہ کو ایک وائرل فوٹو ملا، جو ان کے قتل کا تھا. انتظامیہ کے دباو¿ کی وجہ سے زینل انصاری کے اہل خانہ کو ان کی لاش آبائی گاو¿ں سے 75 کلومیٹر دور مظفرپور میں تدفین کرناپڑی تھی.