گلبرگہ خصوصی عدالت کا بڑا فیصلہ ۵؍ علماء کرام باعزت بری

جمعیۃ علماء مہا راشٹر کی کا میاب پیروی ،یہ صداقت اور سچائی کی جیت ہے : مولانا ندیم صدیقی

ممبئی۔ ۹؍ اکتوبر.(ورق تازہ نیوز ) انسانی بلی دینے کے الزام میں گلبرگہ واطراف سے اگست ۲۰۱۴ میں گرفتار کئے گئے ۵؍علماء کرام کو آج گلبرگہ کی خصوصی سیشن عدالت نے اس وقت تمام الزامات سے با عزت بری کر دیا جب کر ناٹک پولیس ان کے خلاف عدالت میں جرم ثابت کر نے میں ناکام رہی ۔گلبرگہ خصوصی عدالت کے ذریعہ باعزت رہائی کا فیصلہ آنے کے بعد ان پانچوں علما ءکرام اور انکے اہل خانہ نے راحت کی سانس لی اور خدائے وحدہ لا شریک کا شکر ادا کیا کہ انہیں اذیت ناک سزاء سے نجات ملی۔
مولانا ندیم صدیقی صدر جمعیۃ علماء مہا راشٹر نے عدالت کے فیصلے پر اطمینان کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ یہ صداقت اور سچائی کی جیت ہے انشاء اللہ اسی طرح دیگرمقدمات میں گرفتار نو جوان بھی عدالت سے با عزت بری ہو نگے ۔ واضح رہے کہ اگست ۲۰۱۴ میں گلبرگہ ودیگر مقامات سے پولیس نے ۶  ؍ لوگوں کو توہم پرستی مخالف قانون کے تحت گرفتارکیا تھا اور ان پر خزانے کے لئے ایک بچی کی بلی دینے کا الزام عائد کیا تھا ان گرفتار شدگان میں ۴ علما کرام، ایک مفتی اور ایک دیگر شہری تھے۔اہم بات یہ ہے کہ ان گرفتار شدگان میں اس بچی کے والد بھی تھے جس کی بلی دی گئی تھی۔ ۲۱؍اگست۲۰۱۴ میں ایک بچی کا اغواء ہوا تھا جس کی گمشدگی کی رپورٹ اس کے والد نے اسی روزشہر کے فرحت آباد پولیس اسٹیشن میں درج کرادی تھی۔
اس واقعے کے ۵روز بعد یعنی ۲۶؍اگست کو اس بچی کی مسخ شدہ لاش اس کے ہی گھر کے عقب میں ملی تھی اور والد نے اس کی فوری رپورٹ پولیس میں درج کرادی تھی۔ اس کے بعد پولیس نے بجائے بچی کے اغواء کنندگان یا اسے قتل کرنے والوں کو گرفتار کرنے کے اپنے طور پر اسے بلی دینے کا معاملہ قرار دیتے ہوئے بچی کے والد سمیت گلبرگہ ودیگر مقامات کے ۶ علماء کرام کو گرفتار کرلیاتھا۔دفتر جمعیۃ علماء مہاراشٹر سے میڈیا کے لئے جاری اپنے بیان میں ایڈو کیٹ پٹھان تہور خان نے بتایا کہ جن ۶ علماء کرام کو گرفتار کیا گیا تھا، انہیں ابتداء میں غیرقانونی حراست میںرکھا گیا تھااور اس دوران پولیس کی تشدد سے ایک ملزم کی موت واقع ہوگئی تھی۔ اس کے بعد اس ڈر سے کہ بقیہ ملزمین کو اگررہا کردیا گیا تو پولیس حراست میں ہوئی موت کا راز فاش ہوجائے گا، پولیس نے ان تمام پر تعزیراتِ ہند کی مختلف دفعات کے تحت مقدمہ درج کرتے ہوئے ان پر انسانی جان کی بلی دینے کا الزام عائد کردیا۔ لیکن جب یہ معاملہ عدالت پہونچا تو عدالت نے یہ محسوس کرتے ہوئے کہ پولیس کی جانب سے پیش کئے جانے والے ثبوت وشواہد ناکافی ہیں، ملزمین کو ضمانت پر رہا کرنے کا حکم دیدیاتھا۔ اس کے بعد ہماری لیگل ٹیم نے پوری مستعدی کے ساتھ کیس چلایا تمام گواہوں اور ثبوتوں کے مکمل ہونے کی بعد آج عدالت نے ان پانچوں علما کرام کی باعزت رہائی کا فیصلہ سنایا جو کہ ہماری لیگل ٹیم کی بڑی کامیابی ہے ،عدالت میں اس کیس کی پیروی جمعیۃ لیگل ٹیم کے سر براہ ایڈوکیٹ پٹھان تہور خان کی نگرانی میں گلبرگہ کے سینر لائر ایڈوکیٹ موہن دیسائی نے کی ہے۔ گلبرگہ عدالت کی جا نب سے ۵ ؍علما کرام کو با عزت بری کئے جا نے پرجمعیۃ علماء مہا راشٹر کے صدر مولانا حافظ محمد ندیم صدیقی نے کہا کہ فیصلہ میںتا خیر سہی لیکن  ان مظلوموں کو انصاف ملا ہے ،یہ علما انتہائی غریب گھرانے سے تعلق رکھتے ہیں، انکے اہل خانہ کسمپرسی کے عالم میں جمعیۃ علماء مہاراشٹر سے رجوع ہو کراس مقدمہ کے پیروی کی درخواست کی تھی ،جمعیۃ لیگل ٹیم اسی وقت۲۰۱۴  سے اس مقدمہ کی پیروی کر رہی تھی، کرناٹک پولیس اور استغاثہ کےٹال مٹول کی وجہ سے مقدمہ کا فیصلہ آنے میں کافی تاخیر ہوئی ہے،عدالت کے اس فیصلہ پر امیر الہند حضرت مولانا قاری سید محمد عثمان صاحب منصور پور ی صدر جمعیۃ علماء ہند اور قائد ملت حضرت مولانا سید محمود اسعد مدنی صاحب ناظم عمومی جمعیۃ علما ہند نے مسرت کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ اس سے یہ ثابت ہو تا ہے کہ تحقیقاتی ایجنسیاں اپنی نا کا میوں کو چھپانے کے لئے محض شک اور مسلم دشمنی کی بنیاد پر نو جوانوں کو گر فتار کرکے ان کی زندگیاںتباہ کرتی ہیں ایسے آفیسران کے خلاف سخت کاروائی کی ضرورت ہے تاکہ مزید نوجوانوں کی زندگیاں تباہی سے بچ سکیں۔

Coming Soon
Who Will Win Bhokar Assembly Constituency?
Indian National Congress
BJP
Coming Soon
Who Will Win Nanded North MLA Seat
D.P Sawant Congress
Feroz Lala AIMIM
VBA
Shiv Sena
Coming Soon
Who will Win Nanded South MLA Seat
Indian National Congress
ShiveSena
AIMIM
Vanchit Bahujan Aghadi
Dilip Kundkurte Independent

chrome_5UcEeDOjV2
आरटीसी हड़ताल। हुज़ूर नगर उपचुनाव में समर्थन पर जल्दी ग़ौर करने सीपीआईएम की चेतावनी
हैदराबाद में ज़बरदस्त बारिश और बिजली गिरने की उम्मीद।शहरी घरों से बाहर ना निकलें

WARAQU-E-TAZA ONLINE

I am Editor of Urdu Daily Waraqu-E-Taza Nanded Maharashtra Having Experience of more than 20 years in journalism and news reporting. You can contact me via e-mail waraquetazadaily@yahoo.co.in or use facebook button to follow me