گجرات انتخابات 2022۔مسلم امیدوار کامیاب ہوں گے؟کانگریس اور عام آدمی پارٹی نے امیدوار کھڑے کئے

500

نئی دہلی:19/نومبر۔(ورق تازہ نیوز) ہندوتوا کی تجربہ گاہ کہے جانے والے گجرات میں بی جے پی نے دیگر جماعتوں کے ساتھ مل کر اسمبلی انتخابات کے لیے اقلیتی امیدواروں کی نامزدگی کو لے کر محتاط رویہ اختیار کیا ہے۔

بی جے پی نے ایک بار پھر 182 امیدواروں میں سے کوئی مسلم امیدوار کھڑا نہیں کیا، جبکہ کانگریس نے چھ مسلم امیدوار کھڑے کئے۔ AAP، جو کئی ریاستوں میں کانگریس کی جگہ لینے کی سیاست کر رہی ہے، نے صرف دو مسلمانوں کو ٹکٹ دیا ہے ۔

گجرات میں 9 فیصد مسلم آبادی ہے۔ لیکن موجودہ اسمبلی میں صرف دو مسلم ایم ایل اے ہیں۔ یعنی ایم ایل اے کی کل تعداد کا تقریباً ایک فیصد۔ 20 سال پہلے گجرات کی قانون ساز اسمبلی میں 17 مسلم ایم ایل اے تھے۔

تقریباً 25 سال پہلے بی جے پی نے ایک مسلم امیدوار کو نامزد کیا تھا۔ اب ہر اسمبلی الیکشن میں مسلم ایم ایل ایز کی تعداد کم ہوتی جارہی ہے۔ اس سال مسلم امیدوار کم ہیں۔ اس لیے امکان ہے کہ گزشتہ انتخابات کے مقابلے اس سال مسلم ایم ایل اے کم ہوں گے۔ اویسی کی پارٹی نے بھی 14 سیٹوں پر امیدواروں کا اعلان کیا ہے جن میں سے تین ہندو ہیں۔