کیرالا سے ناندیڑ پہنچنے والے کورونا کے مشتبہ مریض کی رپورٹ کا انتظار

ناندیڑ: 15 اپریل: (ورق تازہ نیوز) ریاست کیرالہ کے کوچی شہر میں قیام پذیر نوجوان لاک ڈاون کی وجہہ سے پھنس گیا تھا لیکن وہ کسی طرح کنوٹ تعلقہ کے اپنے آبائی گاوں شیونی پہنچ گیا نوجوان میں کورونا کی علامات جیسے سردی ‘ خشک کھانسی پائی گئی ہیں اسلئے اسے مزید علاج تشخیص کے لئے ناندیڑ کے سرکاری دواخانہ منتقل کردیا گیا ہے ۔ تفصیلات کے مطابق کنوٹ تعلقہ کے موضع شیونی کے ساکان شیوشنکر بابوراو اننت وار عمر 32 سال حیدر آباد سے کوچی سفر کرتے ہوئے ایک پرائیوٹ ٹراویل کمپنی کے کا م کے سلسلے میں گیاتھا.

جب وہ کیرالا کے کوچی شہر میں قیام پذیر تھااس وقت 22 مارچ کو سارے ملک میں لاک ڈاون نافذ کیا گیا اور وہ کوچی میں پھنس گیا ۔ 13 اپریل 2020 کو دوپہر تین بجے نوجوان کنوٹ تعلقہ کے موضع شیونی میں پہنچ گیا۔

جس کی اطلاع سرپنچ پولس پاٹل و دیہاتیوں کو ملتے ہی انھوں نے ابتدائی طبی مرکز شیونی کے میڈیکل آفیسر کاشی ناتھ منڈے سے ربط قائم کیا۔فی الفور نوجوان کی طبی جانچ کی گئی اوراس میں سردی ‘ بخار ‘خشک کھانسی کی علامات پائی گئیں اسلئے میڈیکل آفیسر ڈاکٹر منڈے نے اسے کورونا کا مشتبہ مریض بتاتے ہوئے فی الفور ایمبولنس میں سوار کرکے ناندیڑ کے ڈاکٹرشنکر راوچوہان دیہی اسپتال وشنو پوری منتقل کردیا ۔

اس موقع پر اسلاپور پولس اسٹیشن کے پی ایس آئی سشانت کنگے و پولس ملازمین نے نوجوان سے پوچھ تاچھ کی جس پراس نے کہا کہ وہ حیدر آباد کوچی اس خانگی کمپنی میں کا م کرتاتھا 22 مارچ کو سارے ملک میں جنتا کرفیو اور پھر لاک ڈاون کااعلان کئے جانے کے بعد وہ کوچی (کیرالہ) میں پھنس گیا۔

گھر واپسی کےلئے اس نے کوچی ‘کوئمبتور ‘ حیدر آباد تا ناگپورسفر کرکے قومی شاہراہ نرمل تا شیونی کاسفر کرکے 13اپریل کو دوپہر تین بجے اپنے گاوں پہنچا ۔مشتبہ مریض کے ربط میں آئے گھر کے فرد اوردیگر افراد کو قرنطینہ کیاگیا ہے اور انھیں گھر سے باہر نہ نکلنے کی ہدایت دی گئی ہے ۔اس واقعہ کے بعد شیونی گرام پنچایت کی جانب سے جراثیم کش دوا کاچھڑکاو کیا گیا ہے ۔اس موقع پر کرشی اتپن بازارسمیتی کے نائب چیرمین بالاجی آلیوار ‘صحافی بھوج راج دیشمکھ ‘ گرام ویکاس آفیسر ایس بی پھلاری ‘گاوں کے سرپنچ پولس پاٹل و گرام پنچایت ملازمین بھی موجود تھے ۔