کیا اشوک راو چوہان کانگریس چھوڑدیں گے؟سیاسی بحث پر خود وضاحت کی

2,049

ناندیڑ۔یکم ۔اگست (ورق تازہ نیوز)گزشتہ ایک ماہ میں ریاست کے سیاسی ماحول میں کئی بڑی تبدیلیاں دیکھنے میں آئی ہیں۔ شیوسینا لیڈر ایکناتھ شندے نے 50 ایم ایل ایز کے ساتھ مہا وکاس اگھاڑی حکومت سے اپنی حمایت واپس لے لی اور ادھو ٹھاکرے کی حکومت گر گئی۔ شندے کے حامی ایم ایل اے نے الزام لگایا کہ این سی پی نے مہاویکاس حکومت میں ہمیں مسلسل دبانے کی کوشش کی۔ اب ایک اور بحث نے سیاسی میدان میں ہلچل مچادی ہے۔ یہ بحث چل رہی ہے کہ کانگریس لیڈر اور سابق وزیر اعلی اشوک چوان کانگریس چھوڑ دیں گے۔

ناندیڑ میں کانگریس کارکنوں میں یہ بحث چل رہی ہے۔ اشوک چوہان نے اب اس بحث کے بارے میں انکشاف کیا ہے۔ درحقیقت، قانون ساز اسمبلی میں اکثریتی جانچ کی قرارداد کے دوران کانگریس کے 11 ایم ایل ایز غیر حاضر تھے۔ اس میں اشوک چوان، وجے وڈیٹیوار، پرنیتی شندے اور دیگر ایم ایل اے شامل تھے۔ یہ بات سامنے آ رہی ہے کہ ان غیر حاضر ایم ایل اے کے خلاف کارروائی کی جائے گی۔ اسی دوران یہ بحث تھی کہ اشوک چوان کانگریس چھوڑ دیں گے۔ صحافیوں کے سوال کا جواب دیتے ہوئے چوہان نے کہا کہ میں نے کانگریس چھوڑنے کا کوئی فیصلہ نہیں کیا ہے۔ انہوں نے واضح کیا کہ اس بحث کی کوئی اہمیت نہیں ہے۔

https://fb.watch/eDBcHltyr3/

اشوک چوہان کو بی جے پی کی پیشکش :ناندیڑ کے ایم پی پرتاپراؤ چکھلیکر نے چوہان کو بی جے پی میں شامل ہونے کی پیشکش کی۔ اشوک چوہان نے ایک طرح سے خود کو اکثریتی امتحان سے غیر حاضر کرکے بی جے پی کی مدد کی ہے۔ اس کے علاوہ، اشوک چوہان نےا س وقت اپنے حامی 4 ایم ایل ایز کواکثریت کے وقت غیر حاضر رکھا۔ اس لیے ان کا شکریہ ادا کرنا میرا کام ہے۔ پرتاپ راؤ چکھلی کر نے کہا کہ اگر اشوک چوہان بی جے پی میں آتے ہیں تو ان کا استقبال کیا جائے گا۔