Waraqu E Taza Online
Nanded Urdu News Portal - ناندیڑ اردو نیوز پورٹل

کوویڈ کی وجہ سے امسال دس افراد پر مشتمل علامتی جلوس نکالا جائے گا- حضرت معین میاں۔ ممبرا کے چند افراد کے ذریعے جلوس نہ نکالنے کا لیٹر پولیس اسٹیشن میں دیے جانے سے عوام میں شدید ناراضگی

تھانے (آفتاب شیخ)
ممبرا میں ہر سال کی طرح امسال وقت مقررہ پر ہی جلوس عید میلاد النبی ﷺ نکلے گا لیکن امسال حکومت کی جانب سے جاری کردہ گائیڈ لائن کے مطابق محض 10 افراد ہی جلوس میں شامل ہوسکیں گے جلوس میں حکومت کی گائیڈ لاین و لاک ڈاؤن کی قوانین کی مکمل پاسداری کی جائے ۔ اس بات کا اعلان یہاں ممبرا میں جلوس کے متعلق مشاورتی میٹنگ کے بعد ایک پریس کانفرنس میں قائد جلوس شہزادہ شہید راہ مدینہ معین المشائخ الحاج مولانا سید معین الدین اشرف (معین میاں ) دامت برکاتہم العالیہ نے کی ۔
ممبرا میں گذشتہ کئی برسوں سے ہر سال عید میلاد النبی کے موقع پر جلوس عید میلاد النبی نکالا جاتا ہے جس میں تقریباً پورا شہر شامل ہوتا ہے اس جلوس کی قیادت ہمیشہ مولانا سید معین میاں فرماتے ہیں لیکن امسال کچھ لوگوں نے ذاتی طور پر پولیس اسٹیشن میں جاکر ایک لیٹر دیکر اس سال جلوس نہ نکالنے کا فیصلہ کرلیا تھا جسے شہریوں نے سرے سے مسترد کرتے ہوئے حکومت کی جانب سے ملنے والی گائیڈ لائین کے مطابق جلوس نکالنے کا تہیہ کیا اور اسی سلسلہ میں مولانا سید معین اشرف کی صدارت میں ایک مشاورتی میٹنگ دارالعلوم غریب نواز اشرفیہ میں منعقد کی گئی جہاں شہر بھر سے علمائے اہلسنت، ائمہ مساجد، دارالعلوم کے ناظمین، مذہبی و سماجی تنظیموں کے رضاکاران، کارپوریٹر حضرات، سماجی وسیاسی اراکین، رضا اکیڈمی کے روحِ رواں الحاج سعید نوری و دیگر افراد شامل ہوئے جہاں فیصلہ کیا گیا کہ جلوس نہ نکالنے کی بات کو سرے سے خارج کیا جاتا ہے اور ہر سال کی طرح امسال بھی دارلعلوم غریب نواز اشرفیہ کے پاس کے گراونڈ سے جلوس روانہ ہوگا جس میں قائد جلوس کے ہمراہ صرف 10 افراد شامل ہوں گے اور یہ جلوس اپنی روایات اور اپنے سابقہ روٹ سے گذرتا ہوا امرت نگر بابا سید فخر الدین شاہ ؒ کی درگاہ پر اختتام پذیر ہوگا اسی طرح سے اس کے علاوہ شیل ڈائیگھر کے جلوس کے متعلق بھی بات ہوئی جہاں یہ طئے پایا کہ وہ مقامی پولیس اسٹیشن سے پرمیشن لیکر ہر سال کی طرح شیل پھاٹا دارالعلوم مخدوم سمنانی سے امرت نگر درگاہ کے لئے روانہ ہوں گے۔ میٹنگ میں اس اہم فیصلہ پر سبھی رائے کے بعد مولانا معین میاں نے اس کا پریس کانفرنس میں بھی اعلان کیا اور میڈیا سے بات کرتے ہوئے عوام سے اپیل کی کہ وہ روز کی طرح اس دن بھی باہر نہ نکلیں سڑکوں پر بھیڑ نہ کریں بلکہ نبی کریم ﷺ کی ولادت سے منسوب کا رخیر انجام دیں اس کے لئے 12 نکاتی پروگرام پر منحصر ایک پرچہ تقسیم کیا گیا جس میں بتایا گیا ہے کہ عید میلاد پر مساجد کے ائمہ، موذن و خدام کی تنخواہ کا اہتمام کیا جائے انکی تنخواہ ادا کریں ،ضروت مندوں تک راشن پہنچائیں ،جو بیمار ہیں انکی مالی مدد کریں انکے علاج میں تعاون کرائیں، اسپتالوں میں جاکر مریضوں کی عیادت کریں پھل تقسیم کریں، مقروض کسانوں کی مدد کریں، اجتماعی شادیوں کا اہتمام کرائیں، مستحق طلبہ کے تعلیمی اخراجات میں حصہ لیں، لنگر عام کا اہتمام کیا جائے، یتیم بچوں کی مدد کریں کپڑے و تحائف دیں، میڈیکل کیمپ لگوائیں، برادران وطن کے درمیان مٹھائیاں تقسیم کرکے انھیں عید میلاد کی مبارکباد دیں۔ نبی کریم کا پیغام ان تک پہنچائیں، گھروں و محلوں کو چراغاں کریں، حکومت کی گائیڈ لائنس کی پاسداری کریں وغیرہ۔


error: Content is protected !!